تازہ ترین

Marquee xml rss feed

پاکستان میں فحش ویب سائٹس دیکھنے کی رجحان میں کمی واقع پاکستان میں فحش مواد اپ لوڈ ہونے کے شواہد نہیں ملے، جبکہ انٹرنیٹ پر فحش مواد دیکھنے کے رجحان میں بھی واضح کمی ہوئی ... مزید-علیم خان پھر سے پنجاب کی کابینہ میں واپسی کیلئے تیار تحریک انصاف کے سینئر رہنما کو جلد پنجاب کی کابینہ میں شامل کر لیا جائے گا، ممکنہ طور پر سینئر وزیر کی وزارت ہی سونپی ... مزید-مجھے اپنی عزت کا بھی خیال ہے، میرا مزاج ایس نہیں ہے کہ زیادہ شور شرابا کر سکوں اب جو وزارت سونپی گئی ہے اس کیلئے مشاورت نہیں کی گئی، تاہم وزیراعظم کا فیصلہ قبول کرتا ہوں: ... مزید-نامور وکیل کی مشرف کے خلاف غداری کیس میں پیش ہونے سے معذرت-مریم صفدر کے ہوتے ہوئے شر یف فیملی کو کسی د شمن کی ضرور ت نہیں‘ شہباز شریف ساتھی کی گرفتاری پربو کھلاہٹ کا شکار ہو کر بیان بازی کرر ہے ہیں ، غلام محی الدین دیوان-وزیر اعظم قوم کو بتائیں کہ وہ کیا ایجنڈا لیکر امریکہ جارہے ہیں،سینیٹرسراج الحق ایجنڈا افغانستان سے امریکی افواج کی بحفاظت واپسی کا ہے یا قوم کی مظلوم بیٹی ڈاکٹر عافیہ ... مزید-عوام سے جینے کا حق چھیننے کے بعد اب کفن اور قبر پر ٹیکس لگا کر موت بھی مہنگی کر دی گئی ہے ، سینیٹر سراج الحق اس وقت میں ملک میں جھوٹوں کی حکومت ہے ،جماعت اسلامی اقتدار ... مزید-ریکوڈک کیس میں 6 ارب ڈالرز جرمانے کا معاملہ، اب پریشان ہونے کی ضرورت نہیں، چین پاکستان کی مدد کیلئے میدان میں آگیا چین ریکوڈک منصوبے کا کنٹرول خود سنبھال کر چلی اور کینیڈا ... مزید-رینجرز کی شہر کے مختلف علاقوں میں کارروائیاں، 5 ملزمان گرفتار-دائودی بوہرہ جماعت کے سربراہ ڈاکٹر سیدنا مفدل سیف الدین کراچی پہنچ گئے

GB News

غذر میں دہشت گردی کے خدشات

Share Button

صوبائی وزیر سیاحت فدا محمد خان نے کہا ہے کہ گلگت سے غذر جانے والی گاڑیوں کی خصوصی چیکنگ ہونی چاہیے’شاہراہ غذر ہی وہ واحد راستہ ہے جہاں سے دہشت گرد داخل ہو سکتے ہیں۔دہشت گردی نے پورے ملک کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے اگرچہ آپریشن ضرب عضب کے بعد دہشت گردوں کی کمر توڑ دی گئی ہے اور وہ چوہوں کی طرح کونے کھدروں میں چھپے ہوئے ملک دشمنوں کی ایما پہ وقتا فوقتا دہشت گردانہ کارروائیوں کے ذریعے بے گناہوں کا خون بہا کر اپنی موجودگی کا ثبوت دینے کی کوشش کرتے ہیں لیکن یہ باقی ماندہ دہشت گرد بھی جلد کیفر کردار کو پہنچنے والے ہیں۔گلگت بلتستان میں دہشت گردوں کی جانب سے دی جانے والی دھمکیاں نظر انداز کرنے کے قابل نہیں ہیں ان دہشت گردوں کو جنہوں نے مبینہ طور پہ یہ دھمکیاں دی ہیں انہیں کیفر کردار تک پہنچانے کا لائحہ عمل متعین کیا جانا چاہیے ۔اگر شاہراہ غذر کے ذریعے دہشت گردوں کے داخلے کے امکانات ہیں تو اس شاہراہ پہ سیکیورٹی کے فول پروف انتظامات کرنے چاہیں تاکہ دہشت گرد کسی بھی صورت علاقے میں داخل نہ ہو سکیں۔سابق ممبر قانون ساز اسمبلی ایوب شاہ نے بھی یہ مطالبہ کیا ہے کہ غذر کے داخلی راستوں پہ پاک فوج کے دستے تعینات کیے جائیں ان کا کہناہے شندور ‘اشکومن اور درکور کے بارڈر سے دہشت گردوں کے گھسنے کے خدشات ہیں توضرورت اس بات کی ہے کہ ان علاقوں پہ سیکیورٹی اور انٹیلی جنس کوزیادہ مربوط و منظم بنایا جائے اور ضرورت کے مطابق پاک فوج کے دستوں کی تعیناتی پہ بھی غور کیا جائے۔

Facebook Comments
Share Button