تازہ ترین

Marquee xml rss feed

عید کے موقع پر پولیس ش�داء کے ا�لخان� کو یاد رکھا جائے، صوبائی وزیر داخل� سندھ-پاکستانی نوجوان با صلاحیت اور اعلیٰ درج� کی ذ�انت کے حامل �یں، گورنر سندھ-پاسبان لیاری زون کے تحت �زاروں مستحق بچوں میں عید کے لباس تقسیم-لا�ور : اے ایس ای� کی کاروائی مسا�ر کے استقبال کے لئے آنے والے ش�ری کے قبضے سے ایک پسٹل، 2 میگزین اور 5 گولیاں برآمد-لا�ور :ایس پی سول لائن علی رضا کی سربرا�ی میں سکیورٹی خدشات کے باعث پی سی �وٹل میں �نگامی مشقیں کی گئی-لا�ور :عید ال�طر کے قریب آتے �ی گوشت، پھلوں اور شبزیوں کی قیمتوں میںاضا�� �و گیا-لا�ور : صوبائی دارلحکومت میں لگائے گئے رمضان بازار ایک روز قبل �ی ختم کر دئیے گئے جس کے باعث ش�ری م�نگے داموں اشیاء ضروریات خریدنے پر مجبور �و گئے �یں، مختل� علاقوں میں ... مزید-لا�ور : تھان� �یکٹری ایریا کی حدود میں موٹر سائیکل سوار شخص کی �ائرنگ 2 لڑکیوں پلوش� اور مشعل کر زخمی کر دیا-لا�ور : پولیس کی کاروائی منشیات �روش گر�تار ، اس کے قبضے سے 200 لٹر شراب برآمد-لا�ور :صوبائی دارلحکومت لا�ور میں علاق� غیر سے آنے والی گاڑی سے بڑی تعداد میں بارودی مواد برآمد کر کے 2 ملزمان کو گر�تار

GB News

اوم پوری کی وفات پر بھارتیوں کا ان کیساتھ ایسا سلوک جس کے بارے میں سوچا بھی نہیں جا سکتا

ممبئی : بالی و وڈ کے معروف اداکار اوم پوری کے اچانک انتقال پر دنیا بھر کی انٹرٹینمنٹ انڈسٹری سے تعلق رکھنے والے غم ذدہ ہیں، تاہم ایسے موقع پر کچھ لوگ ایسے بھی ہیں جنہیں اداکار کی موت کی خوشی ہے۔ہندوستان سے تعلق رکھنے والے کئی افراد نے سوشل میڈیا پر اوم پوری کے انتقال کی خوشی منائی، ایک صاحب نے گالی دیتے ہوئے کہا کہ ‘کیا میں وہ واحد شخص ہوں جسے اوم پوری کے انتقال کی خوشی ہے’۔جبکہ ایک صارف نے کہا کہ ‘ اوم پوری کے انتقال کی بےحد خوشی ہے، ایسی گندگی ہندوستان میں دوبارہ پیدا نہیں ہونی چاہیے’۔

اور ایسے کئی پیغامات معروف اداکار کے انتقال کے بعد سوشل میڈیا پر شیئر کیے گئے۔اس موقع پر بولی وڈ اداکارہ سوارا بھاسکر نے ان تمام لوگوں کو کرارا جواب دیتے ہوئے کہا کہ ‘جو خود پر دیش بھگت کا نقاب چڑھائے رکھتے ہیں، آج ان لوگوں کی گندگی نظر آ گئی، جن میں نہ ہی انسانیت ہے اور نہ ہی شرافت، اوم پوری وہ انسان ہیں جنہوں نے ہندوستان کو تم سے بہت زیادہ عزت دلوائی’۔سوارا کا مزید کہنا تھا کہ ‘آج کل حب الوطنی کے نام پر سراسر گندگی دکھائی جارہی ہے، اوم پوری نے ہندوستان کے لیے ان تمام لوگوں سے بہت زیادہ کیا، جتنا انسانی شکل میں یہ گندگیاں کبھی سوچ بھی سکیں’۔

واضح رہے کہ گزشتہ سال اوم پوری نے اوڑی حملے پر پڑوسی ملک سے کشیدگی کے دوران پاکستانی فنکاروں پر پابندی لگانے کے خلاف آواز اٹھائی تھی، جس کے بعد ان پر مقدمہ بھی درج کیا گیا تھا۔ایک لائیو شو میں انٹرویو دیتے ہوئے اوم پوری نے کہا تھا کہ ’جب حکومت کوئی ایکشن لے، تو ہم سب کو خاموش رہنا چاہیے، میں 6 مرتبہ پاکستان کا دورہ کرچکا ہوں، مجھے وہاں سے ہمیشہ پیار ہی ملا ہے، اگر پاکستانی اداکار ہندوستان میں کام چھوڑ کر چلے جائیں تو ہندوستان کا بھی نقصان ہوگا‘۔اس بیان کے بعد انہیں شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

Share Button