تازہ ترین

Marquee xml rss feed

سیاسی محاذ پر پاکستان تحریک انصاف کو بہت بڑی کامیابی مل گئی پاکستان تحریک انصاف کے نواب صلاح الدین عباسی کے ساتھ معاملات طے پا گئے،بہاولپور نیشل پارٹی کا تحریک انصاف ... مزید-میری نااہلی کو ختم کرنا ہے تو دھڑا دھڑ ووٹ دینے ہیں،نوازشریف مسلم لیگ ( ن ) کو ووٹ دینا ہے،عہد کرو کہ ووٹ کو بے عزت نہیں ہونے دو گے میں عوام کی خدمت کر رہاتھا،میری ذات کا ... مزید-آج میاں صاحب نے بتادیا کہ انہیں کس نے اور کیوں نکالا، مریم نواز-پاکستان میں حکومتوں کی تبدیلی سے سرمایہ کاری پالیسی تبدیل نہیں ہو گی، تمام سیاسی جماعتوں کا اس بات پر اتفاق ہے کہ نجی شعبہ اقتصادی ترقی میں انجن کی حیثیت رکھتا ہے، بیرونی ... مزید-متحدہ مجلس عمل جب سے بحال ہوئی ہے تو سیکولراور لادین طبقات پر لرزہ طاری ہے،سینیٹر سراج الحق مجلس عمل کے کامیاب مستقبل کو دیکھ کراب کرپٹ ٹولے کو اپنا انجام دکھائی دینے ... مزید-پانچ سالہ دور حکومت میں پاکستان کو تعلیمی لحاظ سے ترقی کی راہ پر گامزن کردیاہے ، بلیغ الرحمن-لاہور، وزیراعظم ا غزہ میں اسرائیلی بربریت کی شفاف تحقیقات کا مطالبہ پاکستان آزاد فلسطینی ریاست کیلئے حمایت جاری رکھے گا،شاہد خاقان عباسی کا او آئی سی اجلاس سے خطاب-ہر ادارے کو آئین کے مطابق اپنا کردار ادا کرنا ہوگا ،شاہد خاقان عباسی عدالت اور نیب کے کام سے حکومت مفلوج اورملک کے بے پناہ نقصان ہوا ،ماضی کی غلطیوں سے سبق نہیں سیکھا ... مزید-دبائو ڈالتے ڈالتے نواز شریف خود دبائو میں آگئے،مولا بخش چانڈیو نواز شریف نے مجیب الرحمن بننے کی دھمکی دی اپنے بیٹوں سے بھی لاتعلقی اختیار کرلی نواز شریف خود چلے جاتے ... مزید-نواز شریف کے نزدیک ریاست اور اداروں کے بجائے صرف اپنی ذات کی اہمیت ہے،فو ادچوہدری نواز شریف منی ٹریل پر بات کرنے کے بجائے صرف جرنیلوں پر بات کرتے ہیں، کچھ عرصہ پہلے کتاب ... مزید

GB News

فوجی عدالتوں کی مدت میں توسیع کیلئے آئینی ترمیم کی جائے گی،وزیراعظم

Share Button

اسلام آباد(ایجنسیاں،مانیٹرنگ ڈیسک)وفاقی حکومت نے ملٹری کورٹس کی توسیع کے لئے آئینی ترمیم پر مشاورت شروع کر دی ہے۔وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کی زیر صدارت اعلی سطح اجلاس میں اتفاق کیا گیا کہ ملٹری کورٹس نے آپریشن ضرب عضب کے نتائج کو مستحکم کرنے میں اہم کردارادا کیا ہے۔وزیر اعظم نواز شریف کی زیر صدارت اہم امور پر اعلی سطح کا اجلاس ہوا، جس میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، ڈی جی آئی ایس آئی نوید مختار ،وفاقی وزرا اسحاق ڈار، چوہدری نثار، مشیر سلامتی ناصر جنجوعہ،سرتاج عزیز ،معاون خصوصی طارق فاطمی، سیکریٹری خارجہ اعزاز چوہدری اور دیگر حکام نے شرکت کی۔اجلاس کے شرکا نے اس بات پر اتفاق کیا کہ ملٹری کورٹس نے دہشت گردی کے انتہا پسندی کے خاتمے میں بہت اہم کردار ادا کیا ہے، فوجی عدالتوں نے آپریشن ضرب عضب کے نتائج کو مستحکم کرنے میں بھی اہم کردار ادا کیا۔اجلاس میں طے کیا گیا ہے کہ پارلیمنٹ میں موجود تمام سیاسی جماعتوں کے ساتھ ملٹری کورٹس کی مدت میں توسیع کے متعلق وسیع تر اتفاق پیدا کیا جائے گا۔اجلاس میں ملکی و علاقائی سلامتی کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا جبکہ دہشت گردی کے خلاف جاری آپریشن کے نتائج مستحکم بنانے کے امور کا جائزہ لیا گیا۔شرکا نے اس عزم کا اظہار کیا کہ دہشت گردی کے خلاف پاکستان کی پالیسی واضح طور پر زیرو ٹالرنس کی ہے، دہشت گردی اور انتہا پسندی کا خاتمہ ملکی امن کیلیے ضرورری ہے، قومی پالیسی کے اہداف کے حصول کیلیے کوششوں کو تیز کیا جائے گا۔اجلاس میں اتفاق کیا گیا کہ پاکستان خطے میں امن و استحکام کیلیے کوششیں جاری رکھے گا، اندرونی سلامتی اور امن کے استحکام کیلیے تمام کوششیں کی جائیں گی۔حکومت نے فوجی عدالتوں کی مدت میں توسیع کے لئے اپوزیشن جماعتوں سے مشاورت کا فیصلہ کر لیا ، وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی زیر قیادت حکومتی کمیٹی اپوزیشن جماعتوں سے رابطے کرکے معاملہ پر اتفاق رائے حاصل کرنے کی کوشش کرے گی اگر فوجی عدالتوں کی مدت میں توسیع پر سیاسی اتفاق رائے ہو سکا تو حکومت پارلیمنٹ سے منظوری لے گی ، حکومتی کمیٹی میں وزیر قانون زاہد حامد ، وزیر ریلوے سعد رفیق اور وزیر مملکت برائے انوشہ رحمان، وزیر برائے دفاعی پیداوار رانا تنویر شامل ہونگے ، کمیٹی تحریک انصاف ، پیپلز پارٹی ، جماعت اسلامی ، ق لیگ ، جے یو آئی ، ایم کیو ایم سمیت دیگر جماعتوں کے پارلیمانی قائدین سے ملاقاتیں کرکے فوجی عدالتوں میں توسیع پر تبادلہ خیال کرے گی اگر سیاسی جماعتوں نے فوجی عدالتوں کی توسیع پر اتفاق کیا تو پھر حکومت اس معاملے پر پارلیمنٹ کی منظوری لے گی ۔ اتفاق رائے کی صورت میں چھ ماہ یا ایک سال کے لئے فوجی عدالتوں میں توسیع کی جا سکتی ہے ۔ وزیر اعظم محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ فوجی عدالتوں کے قیام میں توسع کیلئے سیاسی جماعتوں سے مشاورت شروع کر دی ہے ، فوجی عدالتوں کی مدت میں توسیع کیلئے آئینی ترمیم کی جائے گی۔دہشتگردی اور انتہا پسندی کے خلاف پاکستان کی زیرو ٹالرنس پالیسی ہے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ وفاق نے فوجی عدالتوں کے قیام میں توسع کیلئے مشاورت شروع کر دی ہے فوجی عدالتوں کی مدت میں توسیع کیلئے آئینی ترمیم کی جائے گی انسداد دہشت گردی کی کارروائیوں کے ذریعے کی جانے والی کامیابیوں کو مضبوط بنایا جائے گا شرکا نے پاکستان کو اندرونی امن کے حصول کے لئے اپنی کوششوں کو جاری رکھنے اورامن کیلئے بھرپور کردار ادا کرنے پر اتفاق کیا۔

Facebook Comments
Share Button