تازہ ترین

Marquee xml rss feed

انسداد دہشت گردی پولیس سے مقابلے میں بدنام زمانہ کالعدم لشکر جھنگوی کا سربراہ آصف چھوٹو مارا گیا-فیصل آباد، مسلح موٹر سائیکل سوار وںنے فائرنگ کرکے نوجوان کوقتل کردیا-فیصل آباد،بھٹہ انڈسٹری ہزاروں افراد کو روزگار فراہم کر رہی ہے،رانا ثنا ء اللہ بھٹہ انڈسٹری کو درپیش مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کئے جائیں گے ،صوبائی وزیر قانون-بہاولپور، صوبائی وزیر اور ایم ڈی چولستان درمیان اختلافات ، ایم ڈی کی خدمات واپس ،چولستان کی ترقی سیاست کی بھینٹ چڑھ گی-ملائیشیاء سے ڈی پورٹ ساٹھ افراد کا لاہور ائیرپورٹ پر احتجاج-کراچی،ایف آئی اے نے خاتون کو بلیک میل کرنیوالے ملزم کو حراست میں لے لیا-رضا ربانی، ایاز صادق، خورشید شاہ ، مولانا فضل الرحمان ودیگر کے بینک اکاؤنٹس میں جعلی ٹرانزیکشن کا انکشاف ایف آئی اے اور سٹیٹ بنک کو تحقیقات کی ہدایت-سینٹ ، قومی احتساب ترمیمی آرڈیننس2017ء کو کثرت رائے سے منظور اپوزیشن کی جانب سے پیش کی جانے والی قرارداد پر اسے شکست کا سامنا کرنا پڑا، حق میں 33، مخالفت میں 21ووٹ پڑے رضاکارانہ ... مزید-پی اے سی کی ذیلی کمیٹی کا اجلاس چیئرمین ایف بی آر کی ریٹائرمنٹ کے باعث ملتوی-خبیب فائو نڈیشن کا ترک رفاہی تنظیم آئی ایچ ایچ کے ساتھ شامی پناہ گزینوں کی امداد کا معاہدہ

GB News

سینٹ،اپوزیشن جماعتوں کاوزیرداخلہ کے ریمارکس پرواک آئوٹ

parliment

اسلام آباد(آئی این پی ) اپوزیشن جماعتیں دہشت گردی اور فرقہ وارایت کے بارے میں وزیرداخلہ چودھری نثار علی خان کے مبینہ قابل اعتراض ریمارکس کے خلاف سینٹ سے واک آئوٹ کر گئیں۔ منگل کو ایوان بالا میں وزیرداخلہ چودھری نثار علی خان پر ان کے تفصیلی بیان کے بعد اپوزیشن لیڈر چودھری اعتزاز احسن نے ان پر بلاواسطہ طور پر فرقہ وارانہ و کالعدم تنظیموں سے واسطہ تعلق کا الزام عائد کیا جس پر نکتہ وضاحت پر چودھری نثار علی خان نے کہا کہ ان کے کہنے سے کوئی بات سچ تو نہیں ہو سکتی، ان کی عادت ہے کہ یہ ہر چیز کو حکومت کے گلے میں ڈالنے کی کوشش کرتے ہیں ،اپوزیشن سچ بھی بولے جہاں تک کالعدم تنظیمو ں کا معاملہ ہے تو دہشت گردی اور فرقہ واریت کو الگ الگ دیکھا جائے۔ انہوں نے کہا کہ میں نے کہا تھا کہ ضرب عضب آپریشن کی کامیابی سب کی کامیابی ہے اور اس حوالے سے ریکاردڈ ایوان میں پیش کیا تھا ۔اگر حقائق کے منافی ہوا تو میں ایوان میں آکر معذرت کر لوں گا اور اگر یہ غلط ثابت ہوں اور معذرت نہ کر سکیں تو کم ازکم دل ہی دل میں شرمندگی محسوس کریں۔ جب تو کوئی اعتراض نہیں کیا گیا۔ وزیرداخلہ کے اس بیان کے بعد چیئرمین سینٹ نماز مغرب کے لئے وقفے کا اعلان کرنے لگے تو اپوزیشن لیڈر چودھری اعتزاز احسن نے وزیرداخلہ کے بعض ریمارکس پر اعتراض کیا اورواک آئوٹ کا اعلان کیا جس پر اپوزیشن اراکین ایوان سے باہر چلے گئے ۔ چیئرمین سینٹ نے قائد ایوان کو ہدایت کی کہ وہ انہیں منا کر لے آئیں۔

Share Button