تازہ ترین

Marquee xml rss feed

وزیراعلیٰ پنجاب کا گجرات میں طالبات پر تیزاب پھینکنے کے واقعہ کا نوٹس،ملزمان کی گرفتاری کا حکم-وزیراعلیٰ پنجاب سے دانش سکولز سے فارغ التحصیل ہوکراعلی تعلیمی اداروں میںتعلیم حاصل کرنے والے طلباء و طالبات کی ملاقات دانش سکول پر تنقید کرنے والے سیاسی لیڈروںنے اپنے ... مزید-سپریم کورٹ کی سفارش پر قائم کمیٹی نے سندھ اور بلوچستان کے اکیس غیر معیاری نجی اور سرکاری لاء کالجز بند کرنے کی سفارش کر دی-چیف جسٹس نے پنجاب میں 600 سے زائد بچوں کے اغوا کی میڈیا رپورٹس کا نوٹس لے لیا-وزیراعلیٰ پنجاب کا پیپلز پارٹی کے رہنما جہانگیر بدر مرحوم کے بھائی کے انتقال پر اظہار تعزیت-وزیراعلیٰ پنجاب سے سندھ کے شیرازی برادران کی ملاقات شیرازی برادران کا عوام کی فلاح و بہبود اور ترقی کیلئے بے مثال اقدامات پر شہبازشریف کو خراج تحسین عوام کی خدمت کا ... مزید-فیس بک کے لوگو کا رنگ نیلا کیوں ہے،ایسا انکشاف جو آپ کے وہم و گمان میں بھی نہ ہو گا-لاہور، ملک کے وزیر اعظم عمران خان ہونگے،اعجازاحمد چوہدری نواز شریف اور زرداری ٹولہ نے اقتدار میں آ کر صرف عوام کا خون چونسا ہے اور اپنی جیبیں بھری ہے ملک کے تباہی کے ... مزید-پشاور، بس ریپڈٹرانزٹ منصوبے پر صوبائی کابینہ کو بریفننگ واحد منصوبہ ہے جو قلیل عرصے اور کم لاگت سے مکمل ہوگا،پرویز خٹک مجموعی لاگت میں بسوں کی خریداری، اراضی، کمرشل ... مزید-عوام کی عدم دلچسپی کے باعث سندھ گیمز کی افتتاحی تقریب نا کامی کا شکار ہوئی ہے ، سید صفدر حسین شاہ

GB News

بجلی دینے کادعویٰ کرنیوالوں نے بجلی ہی غائب کردی،راجہ جلال

Share Button

سکردو (چیف رپورٹر ) تحریک انصاف کے چیف آرگنائزر اجہ جلال حسین مقپون اور سکردو کے ڈپٹی آرگنائزر غلام حیدر نے کہاہے کہ سکردو میں 72,72گھنٹے بجلی غائب رہتی ہے لیکن صوبائی وزیر پانی وبجلی جھوٹ پر جھوٹ بول رہے ہیں ہمیں پانی وبجلی کے وزیر کے اوپر بہت ترس آتا ہے کیونکہ وزیر اعلیٰ انہیں لفٹ ہی نہیں دے رہے ہیں حفیط الرحمن کو چاہئے کہ وہ وزیر پانی وبجلی کی بات سنیں اور سکردو میں بجلی کے مسئلے کو حل کرائیں حکومت نے سو دنوں میں بجلی کی لود شیدنگ ختم کرنے کاوعدہ کیا تھا مگر ڈیڑھ سال کے عرصے میں بجلی ہی غائب کر دی صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ سکردو شہر کو لاوارث چھوڑدیا گیاہے واپڈا کے تمام بجلی گھر خراب ہو چکے ہیں لیکن بجلی گھروں کی مرمت کیلئے حکومت ایک پیسہ فراہم نہیں کر رہی ہے اور جھوٹ کا سہارا لے رہی ہے بجلی کے طویل ترین بریک ڈاؤن کے باعث تجارتی مراکز بند ہو رہے ہیں تاجر دیوالیہ ہو رہے ہیں گھریلو مشکلات خطرناک حد تک بڑھ گئی ہیں ایسا لگتا ہے کہ صوبائی حکومت نے سکردو شہر اور مضافاتی علاقوں کو لاوارث چھوڑ دیا ہے انہوں نے کہاکہ سی پیک میں گلگت بلتستان کو نظرانداز کیا جارہاہے ان باتوں میں کوئی حقیقت نہیں ہے کہ ہمارے چار منصوبوں کو سی پیک میں شامل کیا گیا ہے وزیر اعلیٰ بتائیں کہ انہیں چین جا کر سکردو روڈ اور شغرتھنگ پاور پراجیکٹ کو سی پیک میں شامل کرنے کا خیال کیوں نہیںآیا ؟انہوں نے کہاکہ منظم سازش کے تحت بلتستان کو ترقیاتی میدان میں پیچھے دھکیلا جارہاہے منتخب نمائندے پر کشش تنخواہیں اور ٹی اے ڈی اے لے کر مزے کر رہے ہیں ان کے اندر وزیر اعلیٰ حفیظ الرحمن کے سامنے احتجاج کرنے کی کوئی جرأت اور ہمت نہیں ہے بلتستان کے اراکین اسمبلی اور کونسل کی مجرمانہ خاموشی اور بے غیرتی کی وجہ سے ہمارے مسائل سنگین ہو رہے ہیں وفاق میں ایک سال بعد مسلم لیگ ن کی حکومت ختم ہو رہی ہے وفاقی حکومت کے خاتمے کے بعد صوبائی حکومت کو گھاس ڈالنے والا کوئی نہیں ہوگا بلتستان کے منتخب نمائندے وفاق میں مسلم لیگ ن کی حکومت کے خاتمے سے قبل سکردو روڈ کی تعمیر کیلئے حکومت پر دباؤ بڑھائیں ورنہ وفاقی حکومت کے خاتمے کے بعد کچھ نہیں ہوگا پھر افسوس کرنے کا کوئی فائدہ نہیں ہے روڈ کی تعمیر ایک سال کے اندر شروع نہ ہوئی تو سمجھو کہ بلتستان کے عوام کیلئے روڈ خواب بن جائے گا انہوں نے کہاکہ آئینی حیثیت کے تعین کیلئے لیت ولعل سے کام لیا جارہاہے اس مقصد کیلئے جو کمیٹی بنائی گئی تھی وہ کمیٹی غیر فعال ہو گئی ہے عوام آئینی حیثیت کے بارے میں بالکل ناامید ہو گئے ہیں انہوں نے کہاکہ ہر طرف مسائل ہی مسائل ہیں ان کے حل کیلئے حکومت کچھ نہیں کر رہی ہیتحریک انصاف آئینی حقوق کے حصول سکردو روڈ کی تعمیر اور بجلی کے مسئلے کے حل کیلئے بھر پور احتجاجی تحریک شروع کرے گی عوام شرکت کو یقینی بنائیں۔

Facebook Comments
Share Button