تازہ ترین

Marquee xml rss feed

انسداد دہشت گردی پولیس سے مقابلے میں بدنام زمانہ کالعدم لشکر جھنگوی کا سربراہ آصف چھوٹو مارا گیا-فیصل آباد، مسلح موٹر سائیکل سوار وںنے فائرنگ کرکے نوجوان کوقتل کردیا-فیصل آباد،بھٹہ انڈسٹری ہزاروں افراد کو روزگار فراہم کر رہی ہے،رانا ثنا ء اللہ بھٹہ انڈسٹری کو درپیش مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کئے جائیں گے ،صوبائی وزیر قانون-بہاولپور، صوبائی وزیر اور ایم ڈی چولستان درمیان اختلافات ، ایم ڈی کی خدمات واپس ،چولستان کی ترقی سیاست کی بھینٹ چڑھ گی-ملائیشیاء سے ڈی پورٹ ساٹھ افراد کا لاہور ائیرپورٹ پر احتجاج-کراچی،ایف آئی اے نے خاتون کو بلیک میل کرنیوالے ملزم کو حراست میں لے لیا-رضا ربانی، ایاز صادق، خورشید شاہ ، مولانا فضل الرحمان ودیگر کے بینک اکاؤنٹس میں جعلی ٹرانزیکشن کا انکشاف ایف آئی اے اور سٹیٹ بنک کو تحقیقات کی ہدایت-سینٹ ، قومی احتساب ترمیمی آرڈیننس2017ء کو کثرت رائے سے منظور اپوزیشن کی جانب سے پیش کی جانے والی قرارداد پر اسے شکست کا سامنا کرنا پڑا، حق میں 33، مخالفت میں 21ووٹ پڑے رضاکارانہ ... مزید-پی اے سی کی ذیلی کمیٹی کا اجلاس چیئرمین ایف بی آر کی ریٹائرمنٹ کے باعث ملتوی-خبیب فائو نڈیشن کا ترک رفاہی تنظیم آئی ایچ ایچ کے ساتھ شامی پناہ گزینوں کی امداد کا معاہدہ

GB News

بجلی دینے کادعویٰ کرنیوالوں نے بجلی ہی غائب کردی،راجہ جلال

raja-jalal

سکردو (چیف رپورٹر ) تحریک انصاف کے چیف آرگنائزر اجہ جلال حسین مقپون اور سکردو کے ڈپٹی آرگنائزر غلام حیدر نے کہاہے کہ سکردو میں 72,72گھنٹے بجلی غائب رہتی ہے لیکن صوبائی وزیر پانی وبجلی جھوٹ پر جھوٹ بول رہے ہیں ہمیں پانی وبجلی کے وزیر کے اوپر بہت ترس آتا ہے کیونکہ وزیر اعلیٰ انہیں لفٹ ہی نہیں دے رہے ہیں حفیط الرحمن کو چاہئے کہ وہ وزیر پانی وبجلی کی بات سنیں اور سکردو میں بجلی کے مسئلے کو حل کرائیں حکومت نے سو دنوں میں بجلی کی لود شیدنگ ختم کرنے کاوعدہ کیا تھا مگر ڈیڑھ سال کے عرصے میں بجلی ہی غائب کر دی صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ سکردو شہر کو لاوارث چھوڑدیا گیاہے واپڈا کے تمام بجلی گھر خراب ہو چکے ہیں لیکن بجلی گھروں کی مرمت کیلئے حکومت ایک پیسہ فراہم نہیں کر رہی ہے اور جھوٹ کا سہارا لے رہی ہے بجلی کے طویل ترین بریک ڈاؤن کے باعث تجارتی مراکز بند ہو رہے ہیں تاجر دیوالیہ ہو رہے ہیں گھریلو مشکلات خطرناک حد تک بڑھ گئی ہیں ایسا لگتا ہے کہ صوبائی حکومت نے سکردو شہر اور مضافاتی علاقوں کو لاوارث چھوڑ دیا ہے انہوں نے کہاکہ سی پیک میں گلگت بلتستان کو نظرانداز کیا جارہاہے ان باتوں میں کوئی حقیقت نہیں ہے کہ ہمارے چار منصوبوں کو سی پیک میں شامل کیا گیا ہے وزیر اعلیٰ بتائیں کہ انہیں چین جا کر سکردو روڈ اور شغرتھنگ پاور پراجیکٹ کو سی پیک میں شامل کرنے کا خیال کیوں نہیںآیا ؟انہوں نے کہاکہ منظم سازش کے تحت بلتستان کو ترقیاتی میدان میں پیچھے دھکیلا جارہاہے منتخب نمائندے پر کشش تنخواہیں اور ٹی اے ڈی اے لے کر مزے کر رہے ہیں ان کے اندر وزیر اعلیٰ حفیظ الرحمن کے سامنے احتجاج کرنے کی کوئی جرأت اور ہمت نہیں ہے بلتستان کے اراکین اسمبلی اور کونسل کی مجرمانہ خاموشی اور بے غیرتی کی وجہ سے ہمارے مسائل سنگین ہو رہے ہیں وفاق میں ایک سال بعد مسلم لیگ ن کی حکومت ختم ہو رہی ہے وفاقی حکومت کے خاتمے کے بعد صوبائی حکومت کو گھاس ڈالنے والا کوئی نہیں ہوگا بلتستان کے منتخب نمائندے وفاق میں مسلم لیگ ن کی حکومت کے خاتمے سے قبل سکردو روڈ کی تعمیر کیلئے حکومت پر دباؤ بڑھائیں ورنہ وفاقی حکومت کے خاتمے کے بعد کچھ نہیں ہوگا پھر افسوس کرنے کا کوئی فائدہ نہیں ہے روڈ کی تعمیر ایک سال کے اندر شروع نہ ہوئی تو سمجھو کہ بلتستان کے عوام کیلئے روڈ خواب بن جائے گا انہوں نے کہاکہ آئینی حیثیت کے تعین کیلئے لیت ولعل سے کام لیا جارہاہے اس مقصد کیلئے جو کمیٹی بنائی گئی تھی وہ کمیٹی غیر فعال ہو گئی ہے عوام آئینی حیثیت کے بارے میں بالکل ناامید ہو گئے ہیں انہوں نے کہاکہ ہر طرف مسائل ہی مسائل ہیں ان کے حل کیلئے حکومت کچھ نہیں کر رہی ہیتحریک انصاف آئینی حقوق کے حصول سکردو روڈ کی تعمیر اور بجلی کے مسئلے کے حل کیلئے بھر پور احتجاجی تحریک شروع کرے گی عوام شرکت کو یقینی بنائیں۔

Share Button