تازہ ترین

Marquee xml rss feed

پاک افغان سرحدی علاقے میں ایک اور امریکی ڈرون حملہ، 2 خطرناک دہشت گردوں کو ہلاک کر دیے جانے کی اطلاعات-مستونگ کے مرکزی بازارمیں دھماکے کی اطلاع-آرمی چیف کا آرمی میڈیکل سنٹرایبٹ آباد کا دورہ،ڈاکٹرزاورمیڈیکل سٹاف کی تعریف یاد گارشہداء پرحاضری اور پھول بھی چڑھائے،دہشتگردکی جنگ میں آرمی میڈیکل کورنے قیمتی جانیں ... مزید-طارق فضل چوہدری کی طرف سے وفاقی دارالحکومت میں ایمبیسی روڈ پر درختوں کی کٹائی کا نوٹس لینے پر سی ڈی اے نے رپورٹ پیش کر دی-عمران خان سیاست میں اناڑی ہیں، انہیں آرام کی ضرورت ہے ،ْ دانیال عزیز فرد جرم عائد ہونے کے بعد نیب ٹیم کون سے ثبوت تلاش کرنے کے لئے لندن گئی ہوئی ہے ،ْ میڈیا سے گفتگو ... مزید-وزیر اعظم کی قندھار میں افغان سکیورٹی اہلکاروں پر ہونے والے دہشت گردوں کے حملہ کی سخت مذمت-ایف آئی اے کی جدید بنیادوں پر تنظیم کی جائے،نئی ٹیکنالوجی سے جرائم پر قابو پانے کی صلاحیت حاصل کی جائے، انسانی اسمگلنگ کی روک تھام کیلئے موثر اور عملی اقدامات اٹھائے ... مزید-وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف نے نیب کو کرپٹ ترین ادارہ قراردے دیا نیب کرپشن ختم کرنے کی بجائے کرپشن کا گڑھ بن چکا،مشرف اور بعد کے ادوارمیں نیب کو سیاسی مقاصدکیلئے استعمال ... مزید-سیکرٹری وزارتِ انسداد منشیات اقبال محمود کا اے این ایف ہیڈکوارٹر راولپنڈی کا دورہ-ن لیگ خیبرپختونخواہ دوست محمد خان نے پیپلزپارٹی میں شمولیت کا اعلان کردیا

GB News

کل بھوشن کے معاملے پر پاکستان کے جواب کے منتظر ہیں، بھارت

Share Button

بھارت نے کہا ہے کہ وہ کلبھوشن کے معاملے میں پاکستان سے دو مطالبات کے باضابطہ جواب کا منتظر ہے،ہمیں کلبھوشن کی صحت اور پاکستان میں ٹھکانے کے بارے میں فکر مندلاحق ہے۔ جمعرات کو بھارتی میڈیا کے مطابق وزارت خارجہ کے ترجمان گوپال بگلے کا کہنا ہے کہ15مرتبہ کلبھوشن یادو تک قونصلر رسائی کی کوشش کی گئی ۔کلبھوشن کی صحت اور پاکستان میں ٹھکانے کے بارے میں فکر مند ہیں۔بھارت نے کلبھوشن کے خلاف مقدمے کی سماعت کی کاروائی کے ساتھ ساتھ کیس میں اپیل کے عمل کیلئے پاکستان سے تفصیلات مانگی ہیں۔گوپال بگلے کا کہنا ہے کہ بھارت پاکستان سے دو مطالبات کے باضابطہ جواب کا منتظر ہے جن میں ایک قونصلر رسائی اور دوسرا کلبھوشن کے خلاف مقدمے کی سماعت کی کاروائی کی تفصیلات ہے ۔واضح رہے کہ فوجی عدالت نے بھارتی جاسوس کلبھوشن یادو کو سزائے موت سنائی تھی ۔

Facebook Comments
Share Button