تازہ ترین

Marquee xml rss feed

سابق وزیراعظم نوازشریف کل نیب میں تفتیش کے لیے پیش ہونگے، سینئر تجزیہ کار کادعویٰ-حکومت کے گزشتہ چار سال کے دوران موثر اقدامات کے تحت ریلوے کی آمدنی میں نمایاں اضافہ ہوا ہی,ریلوے اراضی کی 95 فیصد ڈیجیٹلائزیشن مکمل کرلی ہے‘ قبضہ مافیا کے خلاف کارروائی ... مزید-ایف آئی اے اور پی ٹی اے نے عائشہ گلالئی کے عمران خان پر الزامات کی فرانزک تحقیقات کو ناممکن قرار دے دیا-بدعنوانی کی روک تھام اور لوٹی گئی رقم کی وصولی نیب کی اولین ترجیح ہے، چیئرمین نیب قمر زمان چوہدری-معیشت مضبوط نہ ہو تو ایٹم بم بھی آزادی کی حفاظت نہیں کر سکتے، سیاسی استحکام معیشت کی مضبوطی کا واحد راستہ ہے دوسروں کی جنگیں لڑتے لڑتے ہم نے اپنے معاشرہ کو کھوکھلا ... مزید-مولانا فضل الرحمان کا آرٹیکل 62,63کو آئین سے نکالنے کی حمایت سے انکار صادق اور امین کی بنیادی شقوں کو نکالنا آئین سے مذاق ہے-احتساب عدالت ، سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف کے خلاف رینٹل پاور کرپشن کیس میں دلائل مکمل ، فیصلہ محفوظ-عمران خان کا خیبرپختونخواہ کے خوبصورت علاقے کوہستان کا دورہ تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل، تحریک انصاف کے سربراہ نے دنیا بھر کے سیاحوں کو پاکستان آنے کی دعوت دے دی-میاں صاحب اپنی عقلمندی کی وجہ سے آج یہ دن دیکھ رہے ہیں، خورشید شاہ ملک میں کوئی سیاسی بحران نہیں صرف ایک جماعت میں بحران ہے، چیئرمین نیب کی تقرری کیلئے بطور اپوزیشن لیڈر ... مزید-تاثردرست نہیں کہ فوج کے تمام سربراہوں کے ساتھ مخالفت رہی، محمد نوازشریف قانون کی حکمرانی پریقین رکھتاہوں،کبھی بھی اداروں کے ساتھ ٹکراؤ کی پالیسی نہیں اپنائی،سپریم ... مزید

GB News

انصاف کی فراہمی کے لئے بنچ اور بار کے درمیان مضبوط تعلق ضروری ہے، جسٹس رانا شمیم

Share Button

سپریم اپیلٹ کورٹ گلگت بلتستان کے چیف جج جسٹس رانا محمد شمیم خان نے کہا ہے کہ انصاف اور اچھائی کے لئے بنچ اور بار کا مضبوط تعلق ضرورت ہے ۔ ملک کے دوسرے حصوں کی نسبت گلگت بلتستان کے وکلاء محنت اور تیاری کے ساتھ عدالتوں میں پیش ہوتے ہیں جو کہ مثبت رجحان ہے ۔ نئے وکلاء سپریم اپیلٹ کورٹ کے رولز کا مطالعہ کریں ۔ عدالت عظمی میں نئے وکلاء کو لائسنس تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہو ئے معززچیف جج نے کہا کہ گلگت بلتستان کی 15 لاکھ آبادی میں 60 وکلاء کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ آپ سپریم اپیلٹ کورٹ کے وکیل ہیں آپ اچھی وکالت کرتے ہوئے اپنی سالمیت اور وقار کو قائم رکھیں تاکہ اچھے وکلاء کے طور پر آپ کا نام لیا جا سکے انہوں نے کہا کہ وکلا ء کا کام فیصلے کرنا نہیں ہے بلکہ انصاف کے لئے ججوں کی مدد کرنا ہے ۔ وکلا صاحبان اپنے سائلوں کو صحیح مشورے دیں غلط مشورہ دے کر کوئی بھی وعدہ نہ کریںتاکہ شرمندگی کا سامنا نہ ہو ۔ انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کے وکلاء زیادہ محنت اور تیاری کے ساتھ عدالتوں میں پیش ہوتے ہیں جو کہ یہاں کے وکلاء میں مثبت رجحان ہے جسٹس رانامحمد شمیم نے کہا کہ وکلاء کے مسائل سے آگاہ ہیں مختلف عدالتوں میں ایک ساتھ کیسز کی وجہ سے وکلا کو زیادہ بھاگ دوڈ کرنی پڑتی ہے ۔ ایسے میں ہماری کوشش ہے کہ وکلا ء کو ان کے کیسز کے بارے میں ایک ماہ قبل ہی پتہ چلے ایک ہفتہ قبل ان کے دفاتر اور گھروں کے پتہ پر لیٹرز بھجوا دیں اور ایک دن پہلے انہیں موبائل پیغام کے زریعے سے مطلع کیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ سپریم اپیلٹ کورٹ کے وکلاء تنظیموں اور ایڈو کیٹ جنرل کے لئے جگہ فراہم کر دی گئی ہے جبکہ گلگت اور سکردو میں وکلا ء کے لئے پلاٹس کی کوشش کر رہے ہیں ایسی زمینیں وکلاء کو الاٹ کی جائیں جو کہ کہ متنازعہ نہ ہو اس سلسلے میں حکومت نے یقین دہانی بھی کرائی ہے ۔ اس سے قبل سپریم اپیلٹ کورٹ کے جج جسٹس جاوید اقبال اور بار کونسل کے نائب چیئر مین منظور ایڈو کیٹ نے بھی خطاب کرتے ہوئے لائسنس حاصل کرنے والے وکلاء کو مبار کباد دی انہوں نے کہا کہ بار اور بنچ کا چولی دامن کا ساتھ ہے ۔ وکلاء محنت و لگن کے ساتھ کام کریں تقریب کے دوران سپریم اپیلٹ کورٹ کے چیف جج جسٹس رانا محمد شمیم نے 24 وکلاء میں لائسنس تقسیم کئے ۔جس سے سپریم اپیلٹ کورٹ کے لائسنس یافتہ وکلاء کی تعداد 58 ہو گئی ہے تقریب کے دوران سیکریٹری قانون رحیم گل سمیت وکلاء کی کثیر تعداد شریک تھی

Share Button