تازہ ترین

Marquee xml rss feed

جنرل (ر) اسد درانی کی کتاب پر نئے سوالات کھڑے ہو گئے جنرل (ر) اسد درانی کو نامناسب رویے پر 1993 میں ریٹائرڈ کر دیا گیا تھا ،ایک افسر اپنے ریٹائیرمنٹ کے 25 سال بعد وقوع پذیر ہونے ... مزید-ملالہ کو آکسفورڈ کالج میں ’سوشل سیکریٹری‘چن لیا گیا 20 سالہ ملالہ یوسفزئی آکسفورڈ کالج میں جماعتوں کو منصوبے بنانے میں مدد کریں گی-ْحکومت پنجاب نے محدود وسائل کے باوجودصحت کے شعبہ میں انقلابی اقدامات کئے ،ْخرم دستگیر خان ْعوام کو سرکاری ہسپتالوں میں مفت علاج معالجہ پنجاب حکومت کا تاریخی کارنامہ ... مزید-اسلام آباد کے نئیے ائیرپورٹ پر سہولیات کا پول کھل گیا،بیرون ملک سے آنے والی میتوں کے لیے ایمبولینس سروس نہ ہونے کے برابر مانچسٹر سے آنے والے شہری کا تابوت لفٹر کی بجائے ... مزید-امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق سے فرانس کے سفیر مارک باریٹی کی ملاقات-آئندہ کسی کو بھی پاکستان ریلویز کی طرف میلی آنکھ سے دیکھنے کی اجازت نہیں دیں گے ملک میں لڑائی جھگڑا کر کے راستہ بنانے کی کوشش درست طریقہ نہیں خواجہ سعد رفیق کا میو ... مزید-وزیر اعلی پنجاب کے خصوصی پروگرام کے تحت ای لون کے تحت رجسٹریشن کرانیوالے کسانوں کو سمارٹ فونز کی فراہمی کا آغاز-وزیر اعلیٰ پنجاب کی جانب سے ڈپٹی کمشنر گجرات کو بہترین کارکردگی پر تعریفی سند اور کیش پرائز-وفاقی حکومت کی جانب سے وفاقی ملازمین کیلئے 3 سے بھی زائد ماہ کی تنخواہوں کے اعزازیہ کا اعلان-وزیراعلیٰ کا میانوالی کے قریب ٹریفک حادثے میں ایک ہی خاندان کے 7افراد کے جاںبحق ہونے پر اظہار افسوس

GB News

پانامہ کیس کا فیصلہ اخلاقی طور پر نواز شریف کے خلاف آیا، خورشید شاہ

Share Button

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید احمد شاہ نے کہا ہے کہ پانامہ کیس کا فیصلہ اخلاقی طور پر نواز شریف کے خلاف ہی آیا ہے،تین ججز اپنے دو سینئر ساتھیوں سے سے انکاری نہیں ہوئے بس جے آئی ٹی کا کہا،(آج) جمعہ کو قومی اسمبلی و سینیٹ کی اپوزیشن جماعتوں کا مشترکہ اجلاس بلایا ہے جس میں پانامہ کیس فیصلے کا جائزہ لے کر پارلیمنٹ میں مشترکہ حکمت عملی پر غور کریں گے۔وہ جمعرات کو یہاں میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ میری نظر میں فیصلہ بڑا واضح ہے، دو ججز نے واضح کہا کہ نواز شریف کو ڈس کوالیفائی کیا جائے، تین ججز اپنے دو سینئر ساتھیوں سے سے انکاری نہیں ہوئے بس جے آئی ٹی کا کہا۔ خورشید شاہ نے کہا کہ ججز اس جے آئی ٹی کی بات کر رہے جن میں شامل ایف آئی اے نیب کو دوران سماعت خود برا بھلا، نا اہل کہا، جے آئی ٹی کے وزارت داخلہ یا خزانہ کے ماتحت افراد کیا تحقیقات کریں گے،نواز شریف کو اخلاقی طور پر اسٹیپ ڈائون ہو جانا چاہیئے۔تحریک انصاف کے ساتھ ہاتھ ملانے کے سوال پر انہوں نے کہا کہ سیاست میں کوئی آخری دوست یا آخری دشمن نہیں ہوتا،(آج) جمعہ کو قومی اسمبلی و سینیٹ کی اپوزیشن جماعتوں کا مشترکہ اجلاس بلایا ہے، پانامہ کیس فیصلے کا جائزہ لے کر پارلیمنٹ میں مشترکہ حکمت عملی پر غور کریں گے۔

Facebook Comments
Share Button