تازہ ترین

Marquee xml rss feed

عمران خان اور بشریٰ مانیکا کی شادی، ایک روز بعد ہی علیحدگی ہو جانے کی پیشن گوئی بھی کر دی گئی-چیئرمین چکوال پریس کلب خواجہ بابر سلیم کی سی آر شمسی کوقومی روز نامہ سماء اسلام آباد کا ریزیڈنٹ ایڈیٹر مقرر ہونے پر مبارکباد-سعداحسن قاضی اسلامی جمعیت طلبہ حیدرآباد کے ناظم منتخب-تحصیل ہیڈ کوارٹر حضرو میں ہفتہ صحت میلہ کے حوالے سے کیمپ لگایا گیا،افتتاح انجینئر اعظم خان اور احسن خان نے کیا-ایم فل ڈگری پروگرامز 2018ء کے تحت داخلے کے لیے ٹیسٹ میں کامیاب امیدواروں کے انٹرویوز 26 فروری کو ہوں گے-ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر عمر جہانگیر کا ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال چکوال کا اچانک معائنہ،مریضوں کے مسائل دریافت کیے-اپنا چکوال اور شان پروڈکشن کی مشترکہ پیش کش مزاحیہ ڈارمہ عقل وڈی کے مج مکمل فروری کی شب اپنا چکوال چینل پر پیش کیا جائیگا-مقدمات کی تفتیش کے مد میں 55 لاکھ روپے جاری کردیئے گئے-پٹرولنگ پولیس دلیل پور نے کار میں غیر قانونی اور غیر معیاری سی این جی سلنڈر نصب کرنے پر ڈرائیور کوگرفتار کر لِیا-ڈاکٹر خادم حسین قریشی کا ٹنڈو الہیار ، ٹنڈو جام ، شاہ بھٹائی اسپتال لطیف آباد ، تعلقہ اسپتال قاسم آباد ، نوابشاہ اور ہالا میں ہیپاٹائٹس سینٹر ز کا دورہ

GB News

تعلیمی مسائل اجاگر کرنے کیلئے سیمینار ز کا انعقاد ضروری ہے، گورنر

Share Button

قر اقرم انٹرنیشنل یونیورسٹی میں دوسری قومی کانفرنس بعنوان “علم تدریس میں معیار کا مسئلہ” کے موضوع پر شروع ہوگئی ہے۔ جس میں ملک بھر سے نامور سکالرز نے شرکت کی۔کانفرنس کی افتتاحی تقریب کے مہمان خصوصی گورنر گلگت بلتستان میر غضنفر علی خان تھے۔کانفرس سے خطاب کرتے ہوئے گورنر گلگت بلتستان میر غضنفر علی خان نے کہا کہ اساتذہ اس نئی نسل کے لیے مشعل راہ ہیں،جو ملک کو ایکسویںصدی کی ترقی یافتہ قوموں میں شامل کرنے کی ضمانت ہے۔دنیابھرمیں جن ممالک اور سلطنتوں نے فتوحات اور کامیابیاں حاصل کی ہیں ان کے پیچھے تعلیم ہے تعلیمی میدان میں آگے جاکر ہی کامیابی اور ترقی ممکن ہے ۔قوم کی ترقی کے لیے اساتذہ کا کردار ضروری ہے ۔اساتذہ اپنی اہمیت کا احساس کرتے ہوئے تعلیم کے فروغ کے لیے مزید جہدو جہد کرے۔انہوںنے کہاکہ استاد اور طالب علم لازم و ملزوم ہیں،بغیر استاد کے طالب علم کو حصول علم میں مشکلات کا سامناکرناپڑتاہے،۔انہوںنے کہاکہ مجھے امید ہے کہ یہ کانفرس تعلیمی میدان میں درپیش مسائل کے حل کا زریعہ بنے گی ۔اس وقت پوری دنیاکی طرح ہمارے ملک میں بھی تعلیمی مسائل پائے جارہے ہیں مگر امید ہے اساتذہ کی مدد سے ان مسائل کو ختم کیاجائے گا۔اس قسم کے سیمنارز اور ورکشاپس کروانا وقت کی ضرورت ہے جن کے زریعے تعلمی مسائل کوختم کیاجاسکتاہے ۔ انہوںنے کہاکہ اس سیمنار سے سے جہاں تعلیمی مسائل جو اساتذہ کو درپیش ہیں نہ صرف ان کے حل میں آسانی ہوگی بلکہ اس پر ریسرچ بھی کروا سکیں گے ۔ تاکہ مستقبل میں ان مسائل سے نکلنے میں ہمیں آسانی ہوگی۔انہوںنے کہاکہ ملک و قوم کی ترقی کی ضامن اساتذہ ہیں جن کے بغیر تعمیرو ترقی کا خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہوسکتاہے۔تعلیم حاصل کرنا لازمی ہے ۔ہمارے نبی ۖ اورقرآن پاک میں تعلیم حاصل کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔اس سے قبل کانفرس سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر قراقرم انٹر نیشنل یونیورسٹی پروفیسرڈاکٹر محمد آصف خان نے کہاکہ یہ ہماری خوش قسمتی ہے کہ پاکستان کی مشہور جامعات کے مشہور ماہریں تعلیم اور دانشور اساتذہ اس خطے میں تشریف لائے ہیں ۔اس سیمنارسے جامعہ قراقرم کے اساتذہ سمیت طلبہ درس وتدریس و تحقیق کی راہ میں رہنمائی ملے گی۔انہوںنے کہاکہ تعلیمی نظام میں بنیادی ضرورت کو محسوس کرنے سے قاصر ہیں جن پر خصوسی دھیان دینے کی ضرورت ہے ۔

Facebook Comments
Share Button