تازہ ترین

Marquee xml rss feed

عمران خان اور بشریٰ مانیکا کی شادی، ایک روز بعد ہی علیحدگی ہو جانے کی پیشن گوئی بھی کر دی گئی-چیئرمین چکوال پریس کلب خواجہ بابر سلیم کی سی آر شمسی کوقومی روز نامہ سماء اسلام آباد کا ریزیڈنٹ ایڈیٹر مقرر ہونے پر مبارکباد-سعداحسن قاضی اسلامی جمعیت طلبہ حیدرآباد کے ناظم منتخب-تحصیل ہیڈ کوارٹر حضرو میں ہفتہ صحت میلہ کے حوالے سے کیمپ لگایا گیا،افتتاح انجینئر اعظم خان اور احسن خان نے کیا-ایم فل ڈگری پروگرامز 2018ء کے تحت داخلے کے لیے ٹیسٹ میں کامیاب امیدواروں کے انٹرویوز 26 فروری کو ہوں گے-ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر عمر جہانگیر کا ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال چکوال کا اچانک معائنہ،مریضوں کے مسائل دریافت کیے-اپنا چکوال اور شان پروڈکشن کی مشترکہ پیش کش مزاحیہ ڈارمہ عقل وڈی کے مج مکمل فروری کی شب اپنا چکوال چینل پر پیش کیا جائیگا-مقدمات کی تفتیش کے مد میں 55 لاکھ روپے جاری کردیئے گئے-پٹرولنگ پولیس دلیل پور نے کار میں غیر قانونی اور غیر معیاری سی این جی سلنڈر نصب کرنے پر ڈرائیور کوگرفتار کر لِیا-ڈاکٹر خادم حسین قریشی کا ٹنڈو الہیار ، ٹنڈو جام ، شاہ بھٹائی اسپتال لطیف آباد ، تعلقہ اسپتال قاسم آباد ، نوابشاہ اور ہالا میں ہیپاٹائٹس سینٹر ز کا دورہ

GB News

بھارت انتہائی خطرناک ایٹمی منصوبہ تیار کررہا ہے، غیر ملکی جریدہ

Share Button

بھارت کا انتہائی خطرناک ایٹمی منصوبہ بے نقاب ہو گیا،بھارت نے پاکستان کیساتھ ساتھ چین کو خطرے سے دوچار کرنے والے جدید ترین میزائل کی تیاری شروع کردی ۔ غیر ملکی جریدے میں چھپنے والے ایک آرٹیکل میں دعوی کیا گیا ہے کہ بھارت اب ایک ایسے خطرناک میزائل کی تیاری میں کوشاں ہے جو چین کو نشانہ بنانے کی صلاحیت کا حامل ہو گا ۔امریکی ایٹمی ماہرین نے دعوی کیا ہے کہ اپنے ایٹمی ہتھیاروں کو تیزی سے وسعت دینے اور جدید کرنے والے بھارت نے اب پاکستان کی بجائے اپنی توجہ چین پر مرکوز کر لی ہیں ۔آرٹیکل میں مزید کہا گیاہے کہ بھارت نے ایٹمی ہتھیاروں کی تیاری کیلئے 150سے 200تک پلوٹونیم پیدا کرنے کا اندازہ لگا رکھا تھا مگر اس کے باوجود مودی حکومت 120سے 130پلوٹونیم تیار کر سکی ۔آرٹیکل لکھنے والے ہنس ایم کرسٹنسن اور رابرٹ ایس نورس کا کہنا ہے کہ روایتی طور پر پاکستان کیساتھ مقابلہ کرنے والی بھارت کی جانب سے اپنے ایٹمی ہتھیاروں کو وسعت دینے کی پالیسی اس بات کی جانب اشارہ کر تی ہے کہ یہ چین کے ساتھ اپنے آئندہ کے سٹریٹیجک تعلقات کو بڑھانے پر زور دے رہی ہے۔اس مقصد کیلئے بھارت اپنے ایٹمی ہتھیاروں کو جدید کرنے سمیت متعدد نئے نیو کلیئر ویپن سسٹمز کو ترقی دے رہی ہے ۔نئی دہلی اس وقت سات ایٹمی صلاحیت کے نظام چلا رہی ہے جن میں سے 2ایئر کرافٹ ، 4زمینی بلیسٹک میزائلز اور ایک بحری بلیسٹک میزائل سسٹم ہے۔

Facebook Comments
Share Button