تازہ ترین

Marquee xml rss feed

نیب نے اسحاق ڈار کے تمام اثاثے منجمد کرنے کی درخواست کر دی-میکسیکو میں 7عشارئیہ1 شدت کا زلزلہ۔-محرم الحرام میں امن قائم رکھنا سب کی ذمہ داری ہے،چوہدری سرفراز افضل-کو آپریٹو ہاوسنگ سوسائٹز کی انتظامیہ ڈینگی کے سدباب کیلئے کوئی دقیقہ فروگذاشت نہ کرے،رجسٹرارکوآپریٹوز پنجاب مرزا محمود الحسن کا سیمینار سے خطاب-نیب نے کرپشن کے مختلف مقدمات میں ملوث 10اشتہاریوں کی فہرست جاری کر دی-راولپنڈی،ریس کو رس کے علاقے پپلز کالونی میںفائرنگ سے خاتون قتل، شوہر شدید زخمی-حکومت بر ما میں مسلمانوں کی نسل کشی اور انسانیت سوز مظالم کا معاملہ اقوام متحدہ ،اوآئی سی میں اُٹھائیں،جماعت اسلامی بلوچستان-میثاق جمہوریت کے نام پرمک مکاکرنے والے آصف زرداری اورنوازشریف ملک کے دشمن ہیں،عمران خان بلاول نے کیاکمال کیاکہ پارٹی کاچیئرمین بن گیا،بھٹوکی طرح ہاتھ ہلانے سے کوئی ... مزید-بیگم کلثوم نواز(کل)تیسری سرجری کیلئے ہسپتال میں داخل ہونگی-عمران خان کی حیدر آباد میں جلسے کے دوران پیپلزپارٹی پر تنقید کے بعد پیپلزپارٹی کا ردعمل سامنے آگیا

GB News

بھارت انتہائی خطرناک ایٹمی منصوبہ تیار کررہا ہے، غیر ملکی جریدہ

Share Button

بھارت کا انتہائی خطرناک ایٹمی منصوبہ بے نقاب ہو گیا،بھارت نے پاکستان کیساتھ ساتھ چین کو خطرے سے دوچار کرنے والے جدید ترین میزائل کی تیاری شروع کردی ۔ غیر ملکی جریدے میں چھپنے والے ایک آرٹیکل میں دعوی کیا گیا ہے کہ بھارت اب ایک ایسے خطرناک میزائل کی تیاری میں کوشاں ہے جو چین کو نشانہ بنانے کی صلاحیت کا حامل ہو گا ۔امریکی ایٹمی ماہرین نے دعوی کیا ہے کہ اپنے ایٹمی ہتھیاروں کو تیزی سے وسعت دینے اور جدید کرنے والے بھارت نے اب پاکستان کی بجائے اپنی توجہ چین پر مرکوز کر لی ہیں ۔آرٹیکل میں مزید کہا گیاہے کہ بھارت نے ایٹمی ہتھیاروں کی تیاری کیلئے 150سے 200تک پلوٹونیم پیدا کرنے کا اندازہ لگا رکھا تھا مگر اس کے باوجود مودی حکومت 120سے 130پلوٹونیم تیار کر سکی ۔آرٹیکل لکھنے والے ہنس ایم کرسٹنسن اور رابرٹ ایس نورس کا کہنا ہے کہ روایتی طور پر پاکستان کیساتھ مقابلہ کرنے والی بھارت کی جانب سے اپنے ایٹمی ہتھیاروں کو وسعت دینے کی پالیسی اس بات کی جانب اشارہ کر تی ہے کہ یہ چین کے ساتھ اپنے آئندہ کے سٹریٹیجک تعلقات کو بڑھانے پر زور دے رہی ہے۔اس مقصد کیلئے بھارت اپنے ایٹمی ہتھیاروں کو جدید کرنے سمیت متعدد نئے نیو کلیئر ویپن سسٹمز کو ترقی دے رہی ہے ۔نئی دہلی اس وقت سات ایٹمی صلاحیت کے نظام چلا رہی ہے جن میں سے 2ایئر کرافٹ ، 4زمینی بلیسٹک میزائلز اور ایک بحری بلیسٹک میزائل سسٹم ہے۔

Facebook Comments
Share Button