تازہ ترین

Marquee xml rss feed

مشیرِوزیراعظم کا اختیارات سے تجاوز؛ اہل خانہ کا رعایتی ٹکٹوں پرمختلف ممالک کا مفت سفر-ہیواوے نے نیا چار کیمروں والا انتہائی سستا اسمارٹ فون متعارف کرا دیا-دوسری شادی کرنیوالے شوہر کو6ماہ قید و ایک لاکھ جرمانے کی سزا-گوجرخان، وارڈ نمبر 14صندل روڈ پر قتل کی واردات ، 36سالہ شخص کی لاش گھر سے بر آمد-گوجرخان، ہونہار طالب علم حسیب بٹ کا اعزاز-گوجرخان، گورنمنٹ امجد عنایت جنجوعہ شہید ہائی سکول بھاٹہ کا اعزاز-گورنمنٹ بوائز ہا ئی سکول زرعی فارم راولپنڈی کے ہونہار طالب علم حیان علی خان کی مقابلہ حسن قرائت میں راولپنڈی ڈویژن میں پہلی پوزیشن-مرکزی قبرستان کی سڑک کی تعمیر کیلئے فنڈزفراہم کرنے پر آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی کے ممبر حافظ احمد رضا قادری ایڈووکیٹ کا شکریہ-ْلاہور کے احتجاجی جلسے میں عمران خان او رشیخ رشید نے جو پارلیمنٹ کیخلاف بازاری اور گھٹیا زبان استعمال کی،شدید مذمت کرتے ہیں،پارلیمنٹ پر لعنت بھیجنے وا لے اسی پارلیمنٹ ... مزید-سپریم کورٹ کے حکم پر میونسپل کارپوریشن مری نے آپریشن کیلئے تیاریوں کو حتمی شکل دے دی

GB News

وفاقی حکومت نے سوست ڈرائی پورٹ کی انتظامی امور این ایل سی کے حوالے کرنے کیلئے کوششیں تیزکردی

Share Button

اسلام آباد(شبیر حسین سے)وفاقی حکومت نے گلگت بلتستان میں پاک چین سرحد پر واقع سوست ڈرائی پورٹ کی انتظامی امور نیشنل لاجسٹکس سیل(این ایل سی)کے حوالے کرنے کیلئے کوششیں تیزکردی ہے۔وفاقی حکومت نے سوست ڈرائی پورٹ کی انتظامی امور این ایل سی کے حوالے کرنے سے متعلق حتمی فیصلہ کرنے کیلئے پرسوں 19 جولائی کو تمام سٹیک ہولڈرز کا اہم اجلاس طلب کیا ہے۔اجلاس میں حتمی فیصلہ کے بعد وزیر اعظم پاکستان کو باضابطہ سمری ارسال کی جائے گی جس میں سوست ڈرائی پورٹ کی انتظامی امور این ایل سی کے حوالے کرنے کی سفارش کی جائے گی۔باوثوق زرائع نے بتایا کہ پاک چین اقتصادی راہداری منصوبہ کے تحت دونوں ملکوں کے مابین تجارت میں اضافہ کے پیش نظر وفاقی حکومت نے گلگت بلتستان میں پاک چین سرحد پر واقع سوست ڈرائی پورٹ کو مزید توسیع دینے اور پہلے سے موجود انفراسٹرکچر کو مزید بہتر بنانے کا منصوبہ تیار کیا ہے۔جس کو عملی جامہ پہنانے کیلئے ڈرائی پورٹ کی انتظامی امور نیشنل لاجسٹکس سیل کے حوالے کیا جائے گا۔اس ضمن میں وفاقی حکومت نے تمام سٹیک ہولڈرز سے ابتدائی مشاورت کرلی ہے تاہم حتمی مشاورت کیلئے تمام سٹیک ہولڈرز کا اجلاس پرسوں19 جولائی کو طلب کیا گیا ہے اجلاس کی صدارت وفاقی وزیر برائے امورکشمیر و گلگت بلتستان کریں گے جبکہ اجلاس میں گلگت بلتستان حکومت ، وزارت خزانہ، این ایل سی سمیت دیگر سٹیک ہولڈرز کے نمائندے شرکت کریں گے ۔اجلاس میں حتمی فیصلہ کے بعد وزیر اعظم پاکستان کو باضابطہ سمری ارسال کی جائے گی جس میں سوست ڈرائی پورٹ کی انتظامی امور این ایل سی کے حوالے کرنے کی سفارش کی جائے گی۔ زرائع نے بتایا کہ منصوبہ کے تحت نیشنل لاجسٹکس سیل ( این ایل سی) ڈرائی پورٹ پورٹ پر مستقبل میں چائنہ پاکستان اقتصادی راہداری منصوبہ کے تحت دونوں ملکوں کے مابین تجارت میں اضافہ کو مد نظر رکھتے ہوئے نہ صرف سوست ڈرائی پورٹ کو مزید توسیع دی جائے گی بلکہ ڈرائی پورٹ پر تمام درکار سہولیات کی فراہمی کیلئے مزید انفراسٹرکچر بھی قائم کرے گی۔منصوبہ کے تحت ڈرائی پورٹ پر فیسیلیٹیشن سنٹر قائم کیا جائے گا جبکہ ایکسپورٹ ، ایمپورٹ شدہ سامان کی سٹوریج کی جگہ میں اضافہ سمیت سامان کو تولنے کیلئے جدید مشینری کی تنصیب، کارگو ہینڈلنگ مشینری کی تنصیب، دفاتر، سکیورٹی انتظامات، پانی و بجلی کی سہولیات کی فراہمی، سنٹرل ہیٹنگ سسٹم، سینیٹشن سسٹم سمیت دیگر انتظامات فراہم کئے جائیں گے۔واضح رہے کہ سوست ڈرائی کا انتظام 2004 میں جوائنٹ ونچرز کے تحت چائنہ کی سینگ جیانگ سینو ٹرانز کمپنی اور پاکستان کی سلک روٹ ڈرائی پورٹ ٹرسٹ پر مشتمل پاک چین سوست پورٹ کمپنی کو حوالے کیا گیا تھا جس میں چینی کمپنی کو ہولڈنگ شیئر 60فیصد جبکہ پاکستانی کمپنی کا ہولڈنگ شیئر 40 فیصد مقرر کیا گیا تھا۔کمپنی کو ابتدائی طور پر10 سال کیلئے پورٹ کی منیجمنٹ کی زمہ داری تھی بعد ازاں 2014میں مزید سات سال کی توسیع کی گئی تھی تاہم دونوں کمپنیوں میں اختلافات کے بعد معاملہ عدالتوں میں جانے کے بعد پورٹ کے انتظام و انصرام 2014 میں گلگت بلتستان حکومت نے لیا تھا ۔

 

Facebook Comments
Share Button