تازہ ترین

Marquee xml rss feed

سابق وزیراعظم نوازشریف کل نیب میں تفتیش کے لیے پیش ہونگے، سینئر تجزیہ کار کادعویٰ-حکومت کے گزشتہ چار سال کے دوران موثر اقدامات کے تحت ریلوے کی آمدنی میں نمایاں اضافہ ہوا ہی,ریلوے اراضی کی 95 فیصد ڈیجیٹلائزیشن مکمل کرلی ہے‘ قبضہ مافیا کے خلاف کارروائی ... مزید-ایف آئی اے اور پی ٹی اے نے عائشہ گلالئی کے عمران خان پر الزامات کی فرانزک تحقیقات کو ناممکن قرار دے دیا-بدعنوانی کی روک تھام اور لوٹی گئی رقم کی وصولی نیب کی اولین ترجیح ہے، چیئرمین نیب قمر زمان چوہدری-معیشت مضبوط نہ ہو تو ایٹم بم بھی آزادی کی حفاظت نہیں کر سکتے، سیاسی استحکام معیشت کی مضبوطی کا واحد راستہ ہے دوسروں کی جنگیں لڑتے لڑتے ہم نے اپنے معاشرہ کو کھوکھلا ... مزید-مولانا فضل الرحمان کا آرٹیکل 62,63کو آئین سے نکالنے کی حمایت سے انکار صادق اور امین کی بنیادی شقوں کو نکالنا آئین سے مذاق ہے-احتساب عدالت ، سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف کے خلاف رینٹل پاور کرپشن کیس میں دلائل مکمل ، فیصلہ محفوظ-عمران خان کا خیبرپختونخواہ کے خوبصورت علاقے کوہستان کا دورہ تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل، تحریک انصاف کے سربراہ نے دنیا بھر کے سیاحوں کو پاکستان آنے کی دعوت دے دی-میاں صاحب اپنی عقلمندی کی وجہ سے آج یہ دن دیکھ رہے ہیں، خورشید شاہ ملک میں کوئی سیاسی بحران نہیں صرف ایک جماعت میں بحران ہے، چیئرمین نیب کی تقرری کیلئے بطور اپوزیشن لیڈر ... مزید-تاثردرست نہیں کہ فوج کے تمام سربراہوں کے ساتھ مخالفت رہی، محمد نوازشریف قانون کی حکمرانی پریقین رکھتاہوں،کبھی بھی اداروں کے ساتھ ٹکراؤ کی پالیسی نہیں اپنائی،سپریم ... مزید

GB News

جمہوریت آگے بڑھ رہی ہے اچھی بات ہے،جنرل قمر جاوید باجوہ

Share Button

اسلام آباد (آئی این پی ) چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نو منتخب وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی تقریب حلف برداری میں شرکت کے موقع پر مہمانوں میں گل مل گئے اور خوب حال احوال بانٹے، مولانا فضل الرحمان سے گلے مل لیا ، سینیٹر مشاہد اللہ کے ساتھ بھی زمانہ طالبعلمی کی یادیں تازہ کیں ، ایک صحافی کے سوال پر کہا کہ جمہوریت آگے بڑھ رہی ہے اچھی بات ہے ۔ تفصیلات کے مطابق منگل کو یہاں ایوان صدر میں نو منتخب وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی تقریب حلف برداری میں دیگر شخصیات کے علاوہ آرمی چیف جنرل قمر جاوبد باجوہ نے بھی شرکت کی ۔ اس دوران وہ مہمانوں میں گل مل گئے ۔ایک موقع پر ایک صحافی نے آرمی چیف سے سوال کیا کہ آپ جمہوری عمل کو کیسے دیکھتے ہیں ؟ آرمی چیف نے دلچسپ جواب دیا کہ جیسے دوسرے دیکھ رہے ہیں تاہم انہوں نے کہا کہ جمہوریت آگے بڑھ رہی ہے یہ اچھی بات ہے ۔ اس دوران مولانا فضل الرحمن نظر آئے تو آرمی چیف نے برجستہ اور دلچسپ جملوں میں کہا کہ مولانا فضل الرحمان سے ملنے دیں ورنہ فتویٰ جاری ہو جائے گا ۔ تقریب کے بعد چائے کی دعوت کی گئی اس دوران آرمی چیف نے صدر ، وزیر اعظم اور دیگرشرکاء سے مصافحہ بھی کیا جب کہ مولانا فضل الرحمان سے گلے ملے ۔ آرمی چیف کچھ دیر تر مسلم لیگ ( ن) کے رہنما سینیٹر مشاہد اللہ خان کے ساتھ بھی رہے اور راولپنڈی میں اپنے زمانہ طالبعلمی کی یادیں تازہ کیں اور کہا کہ میرے ایک بھائی پی آئی اے میں رہے اور میں آپ کو جانتا ہوں ہمارے گھر میں آپ کا تذکرہ ہوتا رہتا ہے ۔ اس دوران سینیٹر مشاہد اللہ نے کہا کہ مجھے جہاں تک یاد ہے میں شائد سکول میں آپ سے تین چار سال سینئر تھا ، دونوں نے کسی خاص کلاس فیلو کو بھی یاد کیا ۔ اس دوران آرمی چیف سے راولپنڈی کینٹ سے منتخب رکن قومی اسمبلی ملک ابرار بھی ملے اور اپنا تعارف بھی کرایا ۔ وزیر اعظم کی تقریب حلف برداری میں شاہد خاقان عباسی کے قریبی عزیزوں اور اہل علاقہ نے بڑی تعداد میں شرکت کی ۔

 

Share Button