تازہ ترین

Marquee xml rss feed

بلاول، بختاور اور آصفہ کی یادگارِ شہدائے کارساز پر حاضری جائے حادثہ پر دن بھر رہنماں اور کارکنوں کی آمد جاری رہی، سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے-سپیکر اور ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی کی دیوالی کے تہوار پر ہندو برادری کو مبارک باد-پاکستان میں بلیو وہیل جیسی ایک اور خطرناک گیم تیار کر لی گئی، کئی نوجوانوں کو نشانہ بنا دیے جانے کا انکشاف, امریکی ایجنسی کی اطلاع پر ایف آئی اے نے جوہر ٹاون سے نوجونواں ... مزید-وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ سے پی سی بی کے چیئرمین نجم سیٹھی کی ملاقات آئندہ فروری میں کراچی میں پی ایس ایل کے 4 میچ کرانے پر اتفاق-ناگہانی صورتحال پر قابو پانے کیلئے بروقت ردعمل فیصلہ کن ہوتا ہے، شیخ انصر عزیز-اسلامی جمعیت طلبہ پاکستان کے تحت آؤبدلیں پاکستان مہم کے دوسرے مرحلے تعلیم سے تعمیر پاکستان کے سلسلے میں (کل) تعلیمی ریفرنڈم ہوگا-امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق ہفتہ 26اکتوبر کو صوابی گرائونڈ میں شمولیتی اجتماع سے خطاب کریں-مشال خان قتل کیس کا مرکزی گواہ اپنے بیان سے منحرف ہو گیا اگلی سماعت 25اکتوبر تک ملتوی گواہوں پر دبائو ڈالا جا رہا ہے وکیل کا الزام،معاملہ جلد ہائی کورٹ میں لے کر جائیں ... مزید-محنت کشوں کیلئے پاکستان پیپلز پارٹی کے منشور کے مطابق اقدامات کررہے ہیں، صوبائی وزیر محنت سید ناصر حسین شاہ-پاکستان پیپلز پارٹی نے میڈیا کو ہمیشہ اہمیت دی اور صحافیوں کے مسائل حل کئے ہیں،وزیر اطلاعات سید ناصر حسین شاہ

GB News

قائد اعظم کی ولولہ انگیز قیادت کے بعد پاکستان کاقیام ممکن ہوا ،سید راحت حسین الحسینی

Share Button

گلگت ( سٹاف رپورٹر)مرکزی جامع امامیہ مسجد گلگت کے امام جمعہ والجماعت سید راحت حسین الحسینی نے کہا ہے کہ بہت سی قربانیوں کے بعد ملک عزیز پاکستان معرض وجود میں آیا ہے ۔زندہ و تابندہ قوموں کی طرح یوم آزادی کے دن کو شایان شان انداز میں منا یا جائے تاکہ وطن کی طرف میلی آنکھ سے دیکھنے والوں کے مذموم مقاصد خاک میں مل سکیں نماز جمعہ کے اجتما ع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قائد اعظم کی ولولہ انگیز قیادت کے بعد پاکستان کاقیام ممکن ہوا ہے ۔جہاں پر تمام مسلمان مذہبی آزادی کے ساتھ اپنی زندگی بسر کر رہے ہیں انہوں نے کہاکہ یو م آزادی پاکستان کو جوش و خروش کے ساتھ منا یا جائے اور گھروں و گاڑیوں پر پاکستان کے جھنڈے لگا کر وطن سے محبت کا ثبوت دیتے ہوئے زندہ قوم ہونے کا ثبوت دیں سید راحت حسین الحسینی نے کہاکہ پاک چین بارڈر سے ملک میں سب سے زیادہ زر مبادلہ حاصل ہو رہا ہے اربوں روپے آمدنی دینے والے پاک چین سرحد کی حالت زار قابل رحم ہے خنجراب میں پاکستان کی طرف نہ تو کوئی گیٹ ہے اور نہ ہی سیاحوں کے لئے کسی قسم کی سہولت مہیا ہے حتی کہ سیاحوں کے بیٹھنے کے لئے آرام گاہ اور ٹوائلٹ تک کی سہولت دستیاب نہیں ہے ایک فر سودہ سی عمارت ہے جہاں پر سرحد ی محافظوں کے وقت گزارنے کے لئے عارضی سی جگہ ہے ۔محافظوں کے لئے بھی کوئی خاص جگہ نہیں ہے ۔ سردی گر می میں محافظین بے آسرا زندگی گزار تے ہیں نہ تو آکسیجن ہے اور نہ ہی فرسٹ ایڈ کی سہولت دستیاب ہے آغا راحت نے انتہائی افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اربوں روپے ٹیکس کی صورت میں آمدنی فراہم کرنے والے سرحد خنجراب میںنازک حالت ہے وہا ں پر قائم چوکی کے باہر در وازے پر پاکستان کا صرف ایک جھنڈا لگا ہوا ہے جو کہ دور سے نظر بھی نہیں آتا ہے قریب جانے پر جھنڈا لگا ہوا نظر آتا ہے ۔ جبکہ دوسری جانب کا منظر قابل رشک ہے ۔ سرحد کے ساتھ ہی چین نے بڑی سی عمارت تعمیر کی ہے جس پر چین کا بہت بڑا جھنڈا لگا ہوا ہے جوکہ کوسوں دور سے ہی نظر آتا ہے ۔ چینی سرحد پر باڈ لگا ہوا ہے جہاں قدم قدم پر چین کے جھنڈے لگے ہوئے ہیں سرحد پر تعینات ہشاش بشاش چینی محافظین کا یونیفارم اور انہیں دستیاب وسائل دیکھ کر رشک آتا ہے ۔ انہیں جدید گاڑیوں کے ساتھ بہترین سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں سرحد پر موجود عمارت میں فرسٹ ایڈ کی سہولیات کے ساتھ ساتھ آکسیجن تک موجود ہے ۔ آغاراحت حسین الحسینی نے فورس کمانڈر ‘ چیف سیکریٹری اور آئی جی پی سے اپیل کی ہے کہ پاک چین سرحد خنجراب میں پاکستان کا الگ گیٹ نصب کیا جائے جدیدسہولیات سے مذین بڑی عمارت تعمیر کی جائے جہاں پر سیاحوں کو ہر قسم کی سہولیات دستیاب ہو سکیں اور خنجراب سرحد پر تعینات سرحدی محافظین کو چین کے سیکیورٹی گارڈز کے عین مطابق مراعات و سہولیات فراہم کی جائیں تاکہ وہ اپنے فرائض مذید بہتر انداز میں تندہی کے ساتھ سرانجام دے سکیں آغا راحت نے کہا کہ اگر حکومت پاک چین سرحد پرسیاحوں کی سہولت کے لئے عمارت تعمیر نہیں کر سکتی ہے تو ہمیں موقع دیا جائے چینی سرحد میںباب پاکستان تعمیر کر کے ملک عظیم پاکستان کا جھنڈا لہرائیں گے تاکہ ملکی سیاحوں کے ساتھ ساتھ چین کی طرف سے سرحد پر آنے والے سیاحوں کو معلوم ہو سکے کہ پاکستانی بھی اپنے وطن سے بے پناہ محبت کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ پاکستان سے جو بھی اشیاء چین جاتی ہیں تو نہ صرف انسانوں کی سکیننگ ہوتی ہے بلکہ پوری گاڑی کا بھی کمپیوٹرائز معائنہ کیاجاتا ہے ایک ایک چیز چیک کی جاتی ہے منشیات کو روکنے کے لئے جس طرح سے فول پروف کام کر رہے ہیں وہ قابل تعریف ہے چین میں اگر کسی فرد سے منشیات بر آمد ہوئے جائے تو پھانسی دی جاتی ہے بلکل اسی طرح سے پاکستان کی طرف بھی چیکنگ کا جدید ترین نظام قائم کیا جائے اور چین سے لائی جانے والی منشیات خصوصا شراب سمیت ممنوعہ چیزوں کی در آمد پر سختی سے پابندی عائد کی جائے کیونکہ شراب کی لعنت سے ہی معاشرتی مسائل بڑھ رہے ہیں آغا راحت نے وزیر اعلی کے پریس کانفرنس کے حوالے سے کہا کہ ملک کے مقتدر اداروں کے حوالے سے نازیبا الفاظ استعمال کئے جو کہ قابل مذمت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی سالمیت اور بقاء کے لئے ہر فرد کو اپنا انفرادی اور اجتماعی کر دار ادا کرنا ہے تاکہ کوئی بھی اس ملک کی طرف میلی آنکھ سے نہ دیکھ سکے ۔

 

Facebook Comments
Share Button