تازہ ترین

Marquee xml rss feed

وزیراعلیٰ پنجاب ش�بازشری� کا سابق و�اقی وزیر میر نواز خان مروت کے انتقال پر اظ�ار تعزیت-وزیراعلیٰ کی ورکنگ بائونڈری پر بھارتی ا�واج کی بلااشتعال �ائرنگ سے ش�ید �ونیوالے ش�ریوں کے لواحقین کیلئے مالی امداد کا اعلان ش�داء کے لواحقین کو 5لاکھ �ی کس کے حساب ... مزید-وزیراعلیٰ پنجاب ش�بازشری� کا سعودی عرب کے قومی دن کے موقع پر پیغام-وزیراعلیٰ کی زیرصدارت اجلاس، پاک میڈیکل �یلتھ نمائش کے انعقاد کے انتظامات کا جائز� نمائش ما� رواں کے آخر میں منعقد �وگی،ترک وزارت صحت کے اعلیٰ حکام، ترک اور پاکستانی ... مزید-محرم الحرام ، عوام کے جان و مال کے تح�ظ اورامن و امان کے قیام کیلئے سکیورٹی کے �ول پرو� انتظامات کیے جائیں‘ش�بازشری� گزشت� برسوں سے بڑھ کر سکیورٹی انتظامات کئے جائیں ... مزید-وزیراعلیٰ پنجاب کی سیالکوٹ ورکنگ بائونڈری پر بھارتی �وج کی �ائرنگ و گول� باری کی شدید مذمت قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع پر اظ�ار ا�سوس، ش�داء کے لواحقین سے دلی �مدردی ... مزید-آئند� مالی سال کے بجٹ میں شعب� تعلیم میں مجموعی طور پر 345ارب روپے کی رقم مختص کی گئی �ے،رانا مش�ود احمد-چیئر مین سینیٹ کا ایوان بالا اجلاس میں وزیر مملکت داخل� کی عدم حاضری پر شدید اظ�اربر�می وزارت داخل� سے متعلق 33 سوالات �یں، وزیر مملکت داخل� ابھی تک ن�یں آئے، ی� سینیٹ ... مزید-پی آئی اے میں مالی بحران کے باعث کیبن کریو کو دو ما� کی ادائیگی ن�یں کی جاسکی ، جون 2017ء تک 3.2 ملین روپے �لائنگ الائونس کی مد میں دیئے گئے، دو ما� کے بقایا جات آئند� ایک ... مزید-پرویز مشر� کا بیان پیپلزپارٹی کے خلا� ساز ش �ے ،این اے 120 الیکشن میں ایک خاص �ضا بنائی گئی ،عوام بلاول بھٹو کے ساتھ �ے،جو ایم این اے بننے کا ا�ل ن�یں و� پارٹی صدارت کا بھی ... مزید

GB News

اپنے خطے کو مزید کسی کی چراگاہ نہیں بننے دیں گے،امجدحسین

Share Button

غذر( بیورورپورٹ) پی پی پی گلگت بلتستان کے صوبائی صدرامجدحسین ایڈوکیٹ نے کہا ہے کہ پاکستان ایک جم غفیر بن گیا ہے جہاں ہمارے 28ہزار مربع میل پر محیط خطے کا قومی سوال گم ہو چکا ہے ہم 68سالوں سے اپنی پہچان کی بات کر رہے ہیں مگر حکمرانوں نے ہر دور میں ہمیں نظر اندازکررکھا ہے ہمارے بزرگوں نے خطے کو اپنے بزور طاقت آزاد کرایا اورپاکستان کے ساتھ الحاق کیا تھا بدقسمتی سے ہماری محبت ، خلوص اور نیک نیتی کا جواب بے وفائی کی صورت میں مل رہا ہے گاہکوچ بالا میں پی پی پی کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کے لوگ تیار ہوجائیں اب قومی سوال کے ایشو پر حکمرانوں کے گریبان پکڑنے کا وقت آچکا ہے اپنے خطے کو مزید کسی کی چراگاہ نہیں بننے دیں گے انہوں نے کہا کہ آج گلگت بلتستان میں جو اصلاحات نظر آرہی ہیں وہ سب شہید بھٹو کی مرہون منت ہے مسلم لیگ ن کو تین مرتبہ حکومت ملی مگر آج تک گلگت بلتستان کے لیے ایک پائی کا کا م نہیں کیا اس سے بہتر تو ڈکٹیٹر مشرف ہیں جنہوں نے ایک یونیورسٹی کا تحفہ کم از کم خطے کو دے دیا اس کے برعکس نوازشریف نے گلگت بلتستان کو حفیظ الرحمن ، اکبرتابان اور اقبال حسن جیسے کرپٹ لوگوں کی شکل میں تحفہ دے دیا ہے نوازشریف کو خطے کے عوام کی بدعا لگ گئی تھی اسی وجہ سے سپریم کورٹ نے انہیں چور کا سند تھمادیا جو لوگ سلطان مدد جیسے دیرینہ اور نظریاتی کارکنوں کا براحال کرسکتے ہیں وہ اس خطے میں کچھ نہیں کرسکتے بلکہ وزیر اعلیٰ ضلع غذر کے ساتھ سلطان مدد سے بھی برا سلوک کرنا چاہتا ہے امجد ایڈوکیٹ نے کہا کہ گلگت بلتستان میں حالت یہ ہے کہ پراجیکٹس پی پی پی کے ہوتے ہیں مگر ٹھیکیدار ی کی خدمات وزیر اعلیٰ اور ان کے پارٹنر انجام دے رہے ہیں عوام نے وزیر اعلیٰ کو عوام کی نمائندگی کے لیے منتخب کیا تھا مگر موصوف تو سب کچھ چھوڑ کر ٹھیکیدار بن چکے ہیں گزشتہ دو سالہ دور میں ہم نے دیکھا ہے کہ وزیر اعلیٰ سے کسی علاقے کا نمائندہ وفد نہیں ملا مگر کالعدم جماعتوں کے لوگ ضرور ملتے ہیں رات کے اندھیرے میں کن کن کالعدم جماعتوں کے لوگوں کو بلا کر فائدے دیے جاتے ہیں فہرستیں جاری کریں گے تو وزیر اعلیٰ منہ دکھانے کے قابل نہیں رہیں گے وزیر اعلیٰ کالعدم جماعتوں سے تعلق رکھنے والے لوگوں کے فتوئوں سے ہی اقتدار میں آئے ہیں اگر فورتھ شیڈول کالعدم جماعتوں کے لیے بنا ہے تو سب سے پہلے حفیظ الرحمن پر لگایا جائے پی پی پی کے رہنماء ظفر محمد شادم خیل کے خلاف شیڈول فور کو نہیں مانتے اور اس جلسے میں جان بوجھ کر ہم نے تقریر کرائی ہے کسی میں ہمت ہے تو میرے خلاف مقدمہ درج کرے ان کا کہنا تھا نگر کے ضمنی الیکشن کے دوران وزیر اعلیٰ نے کالعدم جماعتوں کے ساتھ مل کر ہمارے خلاف الیکشن لڑا پھر بھی وہ شکست کھاگئے اصل شیڈول فور کے حقدار تو وزیر اعلیٰ اور ڈپٹی سپیکر جیسے لوگ ہیں مگر نیشنل ایکشن پلان کو ہمارے خلاف استعمال کرنے کی پوری تیاری کی گئی ہے ظفر محمد نے ایک دن پہلے پی پی پی جوائن کیا تو اگلے روز ان کے خلاف شیڈول فور لگایا گیا جسکی بنیادی وجہ یہ تھی ایک سابق ڈی سی کو ان کی شکل پسند نہیں تھی سیاسی انتقام کے ایسے حربوں کو کبھی تسلیم نہیں کریں گے ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعلیٰ نے دو سالوں میں جن لوگوں کو کروڑ پتی اور ارب پتی بنایا ہے ان کی فہرستیں بھی جاری کریں گے پی ڈبلیوڈی میں اوپر سے نیچے تک سب چور ہیں حکومت ڈرامے بند کرے ان کے سربراہ کو چور کا سند مل چکا ہے بہت جلد وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان کو بھی یہ اعزاز ملنے والا ہے حق حاکمیت اور حق ملکیت کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ضلع غذر اور گلگت بلتستان میں ایک انچ زمین بھی خالصہ سرکار نہیں اگر کسی کو زمین کی ضرورت ہے تو معاوضہ ادا کرے پھر حاصل کی جائے ورنہ پی پی پی راستے کا دیوار بن جائے گی زمین ہماری ماں ہے اور اس کی ہر حال میں حفاظت کریں گے امجد ایڈوکیٹ نے گلگت ، سکردو کے بعد یکم نومبر کے دن گاہکوچ میں حق حاکمیت اور حق ملکیت کے لیے جلسے کا اعلان کردیا اور کہا کہ ہم دنیا کو باور کرائیں گے کہ اور پاکستان کی آئین کے اس شق کو پڑھائیں گے جس کے تحت خالصہ سرکار وہی زمین بن سکتی ہے جو فوج نے جنگ کے ذریعے حاصل کی ہو یا پھر معاوضہ دے کر زمین لی جاتی ہے خو د اسلام آباد میں وزیر اعظم ہائوس کی زمین خرید کر عمارت بنائی گئی ہم چاہتے ہیں کہ یہاں اگر ڈی سی کا دفتر بنتا ہے تو پہلے زمین کا معاوضہ دیا جائے پھر بلڈنگ بنائی جائے ہمارے خطے کو ہمارے بزرگوں نے اپنے بزور طاقت آزاد کرایا کسی فوج نے جنگ کے ذریعے زمین فراہم نہیں کی یہی وجہ ہے کہ یہاں کے لوگ پہاڑ کے دامن سے لے کر لب دریا تک زمینوں اور وسائل کے مالک ہیں ہم کسی کو زبردستی زمین ہتھیانے کی اجازت نہیں دیں گے ۔ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے سابق ڈپٹی سپیکر و نائب صدر جمیل احمد نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان کی ہم نے شروع روز سے مخالفت کی ہے گلگت بلتستان میں اس قانون کو سیاسی انتقام کے طور پر لاگوء کیا جارہا ہے شیڈول فور کے اصل حقدار حفیظ الرحمن ہیں جب تک ان کے خلاف شیڈول فور نہیں لگایا جاتا ہم کسی سیاسی ورکر کے خلاف لگائے گئے اس قانون کو نہیں مانتے وزیر اعلیٰ خود کالعدم جماعتوں کے سہولت کار ہیں اور ان کی سرپرستی کررہے ہیں یہ بات ریکارڈ پر موجود ہے کہ حفیظ الرحمن نے ضلع غذر کی 90فیصد آبادی کے خلاف فتواء جاری کردیا تھا انہوں نے کہا کہ ہم ثابت کریں گے کہ غذر میں تمام پائور ہائوسز اور آرسی سی پل پی پی پی کے دور میں بنے پی ڈبلیوڈی کا وزیر کہہ رہا ہے کہ ادارے کے تمام چھوٹے ملازمین چور ہیں اسسکے بائوجود نیب کا ادارہ خاموش تماشائی بنا ہوا ہے ایسے نام نہاد ادارے کو فوری کردیا جائے جو کرپشن کو روکنے میں مکمل ناکام ہوچکا ہے جمیل احمد نے کہا کہ گلگت بلتستان میں گندم سبسڈی وزیر اعلیٰ کے مشورے سے ختم کی جارہی ہے وزیر اعلیٰ کونسل کے ایک رکن کے ساتھ مل کر کروڑوں کی کرپشن کررہے ہیں جس کے خلاف تحقیقات کی جائے ۔ سابق وزیر تعمیرات و نائب صدر پی پی پی بشیر احمد نے کہا کہ وزیر اعلیٰ کے دفتر میں آج بھی شیڈول فور میں شامل لوگ بیٹھے ہوئے ہیں وزیر اعلیٰ کو یادرکھناچاہیے کہ انہیں کامیابی صرف کالعدم جماعتوں کی حمایت اور شیڈول فورمیں شامل لوگوں کے فتوئوں سے ملی ہے ن لیگ ہمارے کارکنوں کے خلاف انتقامی کاروائی کے طور پر شیڈول فور کا ہتھیار استعمال کرے گی تو ہم کبھی خاموش نہیں بیٹھیں گے ظفر محمد شادم خیل کے خلاف کوئی بھی اقدام اٹھایا گیا تو احتجاج سب سے پہلے دیامر سے شروع ہوگا انہوں نے کہا کہ جب میں پی ڈبلیوڈ ی کا وزیر تھا تو میر ے دور میں ہی شیر قلعہ اور سلپی آرسی سی پل منصوبے کے ٹینڈر ہوئے ن لیگ ہمارے منصوبوں پر تختیاں لگاکر لوگوں کو بے وقوف بنارہی ہے پی پی پی کو جب بھی اقتدار ملا ضلع غذر کو حکومت میں بھرپور نمائندگی دی ہمیں خوشی اس بات کی ہے کہ ضلع غذر سے پی پی پی کو ایک بھی نشست نہیں ملی مگر ن لیگ کو بھی کچھ نہیں ملا اس کا مطلب ہے کہ ن لیگ ضلع غذر کے لوگوں کو قابل قبول جماعت نہیں غذر کے لوگ پی پی پی کے شیدائی ہیں کارکنوں سے غلطیاں ہوسکتی ہیں مگر پارٹی سے ہرگز نہیں عوام اپنے حقوق پی پی پی کے ہاتھ مضبوط کریں ۔ پی پی پی ضلع غذر کے سینئر نائب صد ظفر محمد شادم خیل نے جلسے سے خطاب کے دوران کہا کہ غذر میں بااثر اور غریب لوگوں کے لیے الگ الگ قانو ن بنائے گئے ہیں میں نے جب غریب عوام کے حقوق کی بات کی تو مجھے شیڈول فور میں ڈالا گیا عوام نے میر ے حق میں پانچ ہزار ووٹ دیا حکومت نے ان لوگوں کے مینڈیٹ کی توہین کی ہے ہماری وفاداری کو مشکوک نہ سمجھا جائے میں جانتا ہوں کہ میری تقریر کے بعد پولیس مجھے گرفتار کرسکتی ہے تاہم ذلت کی زندگی سے موت بہتر ہے ہمیں عوام کی خاطر قید و بند کی سزائیں منظور ہیں پی پی پی کے جیالے کبھی جیلوں سے نہیں ڈرتے۔ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے پارٹی کے رہنماء نزیر احمد ایڈوکیٹ نے کہا کہ گلگت بلتستان میں سب سے پہلا یونٹ پارٹی کا گاہکوچ بالا میں قائم ہوا اس گائوں کے بزرگ پی پی پی کے بانیان میں شامل ہوتے ہیں پی پی پی کے سابق دور حکومت میں ایک ار ب روپے اس ضلعے میں خرچ ہوئے جبکہ ن لیگ سمیت کسی وفاقی جماعت نہ ایک پائی کا کام غذر میں نہیں کیا پی پی پی کے ہر دور حکومت میں ضلع غذر کو بھرپور نمائندگی ملی ہے جب آج ضلع غذر میں مسلم لیگ ن کا کوئی وجود نظر نہیں آیا پی پی پی کو کمزور سمجھنے والوں کو معلوم ہونا چاہیے کہ عوام کے دلوں سے بھٹو اور پی پی پی کی محبت کو کوئی طاقت ختم نہیں کرسکتی مسلم لیگ ن کے گزشتہ دوسالہ دور میں چار لوگوں کو ملازمت نہیں ملی ن لیگ و الے آج بھی ہمارے پراجیکٹس پر تختیاں لگارہے ہیں نیشنل ایکشن پلان کا سیاسی مقاصد کے لیے استعمال کیا جارہا ہے گاہکوچ بالاکے تین معصوم نوجوانوں کو بھی شیڈول فور میں ڈالا گیا ہے جن کا کئی قصور نہیں تھا جسکی ہم بھرپور مذمت کرتے ہیں۔

Facebook Comments
Share Button