تازہ ترین

Marquee xml rss feed

مشیرِوزیراعظم کا اختیارات سے تجاوز؛ اہل خانہ کا رعایتی ٹکٹوں پرمختلف ممالک کا مفت سفر-ہیواوے نے نیا چار کیمروں والا انتہائی سستا اسمارٹ فون متعارف کرا دیا-دوسری شادی کرنیوالے شوہر کو6ماہ قید و ایک لاکھ جرمانے کی سزا-گوجرخان، وارڈ نمبر 14صندل روڈ پر قتل کی واردات ، 36سالہ شخص کی لاش گھر سے بر آمد-گوجرخان، ہونہار طالب علم حسیب بٹ کا اعزاز-گوجرخان، گورنمنٹ امجد عنایت جنجوعہ شہید ہائی سکول بھاٹہ کا اعزاز-گورنمنٹ بوائز ہا ئی سکول زرعی فارم راولپنڈی کے ہونہار طالب علم حیان علی خان کی مقابلہ حسن قرائت میں راولپنڈی ڈویژن میں پہلی پوزیشن-مرکزی قبرستان کی سڑک کی تعمیر کیلئے فنڈزفراہم کرنے پر آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی کے ممبر حافظ احمد رضا قادری ایڈووکیٹ کا شکریہ-ْلاہور کے احتجاجی جلسے میں عمران خان او رشیخ رشید نے جو پارلیمنٹ کیخلاف بازاری اور گھٹیا زبان استعمال کی،شدید مذمت کرتے ہیں،پارلیمنٹ پر لعنت بھیجنے وا لے اسی پارلیمنٹ ... مزید-سپریم کورٹ کے حکم پر میونسپل کارپوریشن مری نے آپریشن کیلئے تیاریوں کو حتمی شکل دے دی

GB News

وفاقی حکومت نے گلگت بلتستان میں کینسر ہسپتال کی تعمیر کیلئے17کروڑ روپے جاری کردیا

Share Button

اسلام آباد(شبیر حسین سے) وفاقی حکومت نے گلگت بلتستان میںکینسر ہسپتال کی تعمیر کیلئے17کروڑ روپے جاری کردیا ہے۔کینسر ہسپتال کو تعمیر کا کام تین برسوں کے دوران مکمل کیا جائے گا جس پر کل 2 ارب34کروڑ28لاکھ روپے لاگت آئیگی۔دستاویز کے مطابق وفاقی حکومت نے پاکستان اٹامک انرجی کمشین کے انتظام گلگت بلتستان میں تعمیر ہونے والے کینسر ہسپتال کے منصوبہ پر تعمیراتی کام شروع کرانے کیلئے17کروڑ روپے کی ابتدائی قسط جاری کردی ہے۔گلگت بلتستان میں بننے والا گلگت انسٹی ٹیوٹ آف نیوکلیئر میڈیسن، آنکولوجی اینڈ ریڈیو تھراپی کی تعمیرکے منصوبے پر کل2ارب34کروڑ28 لاکھ روپے لاگت آئے گی۔ مذکورہ منصوبہ کیلئے وفاقی حکومت نے رواں مالی سال کے وفاقی بجٹ میں85کروڑ روپے مختص کررکھی ہے جس میں گذشتہ ہفتے پلاننگ کمیشن نے اس منصوبہ کیلئے 17کروڑ روپے کی ابتدائی قسط جاری کردی ہے۔زرائع کے مطابق رواں سال 24 جولائی کو ہونے والی سنٹرل ڈویلپمنٹ ورکنگ پارٹی اجلاس نے بھی اس منصوبہ کیلئے2 ارب30کروڑ روپے کی منظوری دیدی تھی۔ واضح رہے کہ پاکستان اٹامک انرجی کمیشن کے زیر انتظام گلگت میں بننے والی مذکورہ کینسر ہسپتال گلگت بلتستان میں اس نوعیت کا پہلاہسپتال ہے،اس سے قبل گلگت بلتستان میںکینسر کا کوئی ہسپتال تعمیر نہ ہوسکا ہے جس کے باعث کینسر کے مرض میں مبتلاء مریض اسلام آباد سمیت ملک کے دیگر علاقوں میں منتقل کئے جاتے تھے تاہم اس منصوبہ کی تکمیل سے گلگت بلتستان میں کینسر کے مرض میں مبتلاء مریضوں کو گھر کی دہلیز پر علاج و معالج کی سہولت دستیاب ہو گی اور کم خرچ اور کم وقت میں ان کا باآسانی علاج ممکن ہو سکے گا۔

Facebook Comments
Share Button