تازہ ترین

Marquee xml rss feed

نعیم الحق نے شہباز شریف کے پروڈکشن آرڈر ضبط کرنے کی دھمکی دے دی شہباز شریف اور اس کے چمچوں کی اتنی جرات کہ وہ قومی اسمبلی میں وزیر اعظم پر ذاتی حملے کریں۔کیا وہ جیل میں ... مزید-وزیراعظم کا سانحہ ساہیول پر وزراء متضاد بیانات پر سخت برہمی کا اظہار آئندہ بغیر تیاری میڈیا پر بیان بازی نہ کی جائے انسانی زندگیوں کا معاملہ ہے کسی قسم کی معافی کی گنجائش ... مزید-5 ارب روپے قرض حسنہ کیلئے مختص کرنا خوش آئند ہے، فنانس بل میں غریب آدمی کو صبر کا پیغام دیا گیا ہے امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق کی پارلیمنٹ ہائوس کے باہر میڈیا ... مزید-فنانس بل سے متوسط طبقہ کو ریلیف ملا ہے، عوام کا پیسہ عوام پر خرچ ہو گا، اپوزیشن کے پاس بات کرنے کو کچھ نہیں وفاقی وزیر آبی وسائل فیصل واوڈا کی پارلیمنٹ ہائوس کے باہر میڈیا ... مزید-صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی ایس94 کے ضمنی الیکشن کے موقع پر سیکورٹی کو غیرمعمولی بنایا جائے، آئی جی سندھ-وزیر خزانہ اسد عمر کی طرف سے قومی اسمبلی میں پیش کردہ ضمنی مالیاتی (دوسری ترمیم) بل 2019 کا مکمل متن-جنوری کو ہونے والے ضمنی انتخابات کراچی کی سیاست میں نئی راہیں متعین کرے گا،مصطفی کمال پی ایس پی کسی فرد یا گروہ کا نام نہیں ہے بلکہ ایک تحریک کا نام ہے جو مظلوم و محکوموں ... مزید-ملک کا اقتصادی مستقبل کراچی کی معاشی ترقی میں مضمر ہے۔گورنر سندھ-سی پیک پاکستان اور چین کے مابین تعلقات کو مزید گہرا کرنے کے لئے مستحکم بنیاد، خطے کو منسلک کرنے میں اہم کردارادا کر رہا ہے، سی پیک تمام خطے میں امن و استحکام لانے میں ... مزید-احتساب عدالت اسلام آباد میں اسحاق ڈار کیخلاف آمدن سے زائد اثاثوں کے مقدمے میں دو مزید گواہوں کے بیانات ریکارڈ

GB News

ہارڈ ایریا الائونس کی یکسانیت

Share Button

صوبائی محکمہ فنانس نے وفاقی فنانس ڈویژن سے گلگت بلتستان کے سرکاری ملازمین کو کو پچاس فیصد ہارڈ ایریا الائونس کی ادائیگی کیلئے تین ارب روپے مانگے ہیں یہ پچاس فیصد الائونس سرکاری ملازمین کو 2005 سے 2009 تک ادا کیا جائے گا ۔ درحقیقت وفاق سے گلگت بلتستان آکر خدمات سرانجام دینے والے سرکاری ملازمین کو ہارڈ ایر یا کی مد میں پچاس فیصد الائونس ملتا ہے جبکہ گلگت بلتستان کے سرکاری ملازمین کو ہارڈ ایریا الائونس کی مد میں صرف پچیس فیصد الائونس فراہم کیا جاتا ہے چنانچہ یکساں الائونس کی فراہمی کیلئے ملازمین نے سپریم اپیلٹ کورٹ میں اپیل دائر کی تھی ۔ جس پر سپریم اپیلٹ کورٹ کی طرف فیصلہ سناتے ہوئے محکمہ فنانس کو ہدایات جاری کی گئی تھیں کہ گلگت بلتستان کے ملازمین کو بھی ہارڈ ایریا الائونس کی مد میں پچاس فیصد الائونس فراہم کیا جائے ۔الائونس کی یکساں فراہمی اسلئے بھی ضروری ہے کہ اس امتیاز کے باعث ملازمین میں بے چینی و اضطراب لازمی امر ہے پھر جب سپریم اپیلٹ کورٹ اس ضمن میں فیصلہ دے چکی ہے تو اس حوالے سے تاخیر کا کوئی جواز نہیں ہے یہی وہ امتیاز ہے جس کے باعث ملازمین میں اپنی ذمہ داریوں سے راہ فرار اختیار کرنے کا چلن پرورش پاتا ہے جب وفاق سے آنے والے ملازمین کو پچاس فیصد الائونس دیا جا رہا ہے توگلگت بلتستان کے ملازمین کو پچیس فیصد کی ادائیگی ناقابل فہم ہے’ہم امید کرتے ہیں کہ مذکورہ رقم کی وفاق سے وصولی کے بعد گلگت بلتستان کے ملازمین کو پچاس فیصد کے حساب سے ادائیگی کی جائے گی اور آئندہ کے لیے بھی اس پہ عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے گا۔ سرکاری ملازمین پاکستان کا اثاثہ ہیں لیکن عمومی طور پہ یہ دیکھنے میں آیا ہے کہ ان کی جانب سے اپنے فرائض کی ادائیگی پہ توجہ کم اور تنخواہوں و الائونسز پہ زیادہ مرکوز رہتی ہے یہی وجہ ہے کہ ہمارے سرکاری اداروں کی حالت زار قابل رحم ہے بلکہ اکثر ادارے زوال و انحطاط کی گہرائیوں کو چھو رہے ہیں اس لیے ان کو چاہیے کہ جہاں وہ اپنے ساتھ ہونے والے امتیازی سلوک کے حوالے سے ہر در کھٹکھٹاتے ہیں وہاں انہیں اپنے فرائض کے سلسلے میں بھی کسی کوتاہی کا مظاہرہ نہیں کرنا چاہیے تاکہ سرکاری ادارے ترقی کی جانب گامزن ہو سکیں۔

Facebook Comments
Share Button