تازہ ترین

Marquee xml rss feed

اسفند یار ولی نے بھی عمران خان کے اگلے وزیر اعظم ہونے کی پیش گوئی کر دی عمران خان جیتیں گے یا جتوائیں گے لیکن عمران خان اگلا وزیر اعظم ہے،سربراہ اے این پی-آئی جی پنجاب کا نواب سراج رئیسانی ، ہارون بشیر بلور سمیت دیگر افراد کی شہادت پر گہرے رنج و غم کا اظہار-رحیم یار خان پولیس کے سپیشل آپریشن یونٹ کی کچے کے علاقے میں کارروائی، آپریشن میںڈاکو نادر سکھانی مارا گیا ڈاکوئوں کی قید سے گیارہ مغوی بیوپاریوں کو بحفاظت بازیاب ... مزید-شفاف الیکشن کیلئے ضابطہ اخلاق پر عمل کرنا ہر کسی کیلئے یکساں لازم ہے، خلاف ورزی کی صورت میں بلاتفریق کارروائی کی جا رہی ہے ،صوبائی وزیر اطلاعات احمد وقاص ریاض-الیکشن کمیشن تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کی مبینہ نامناسب تقاریر پر پابندی عائد کرے،مریم اورنگزیب-نگران وزیراعلیٰ پنجاب سے نائیجیریا کے 7 رکنی وفدکی ملاقات نائیجیرین وفد کا دورہ باہمی تعلقات کے نئے دور کا نقطہ آغاز ثابت ہوگا، ڈاکٹر حسن عسکری پاکستان بہت شاندار ملک ... مزید-25 جولائی کو شیر پر مہر لگا کر نواز شریف اور مسلم لیگ (ن ) کو کامیاب بنانا ہے ‘شہباز شریف ان اندھیروں میں بھی منزل تک پہنچائیں گے ، اللہ نے موقع دیا تو پانچ سال میں کئی محاذ ... مزید-پیپلز پارٹی کے گڑھ میں میں پاکستان تحریک انصاف کا تاریخی جلسہ ،عوام کے ٹھاٹھیں مارتے سمندر نے عمران کو لبیک کہا جیکب آباد میں ہزاروں کارکنان نے جلسے میں شرکت کر کے تحریک ... مزید-اٹک پولیس کا سرچ آپریشن، ناجائز اسلحہ بر آمد-الیکشن کمیشن نے مرُدوں کو بھی ووٹ ڈا لنے کی اجازت دے دی ووٹر لسٹ میں سینکڑوں مرُدوں کے نام شا مل

GB News

گلگت بلتستان کونسل نام کاکوئی ادارہ بھی موجود ہے ،مجھے علم نہیں،زیراعظم

Share Button

اسلام آباد (چیف رپورٹر) وزیراعظم شاہدخاقان عباسی نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان کی آئینی حیثیت کے تعین کے لئے آئینی کمیٹی کی جانب سے مجھے کسی قسم کی سفارشات بھیجی گئی ہیں اور نہ ہی مجھے اس بارے میں معلومات حاصل ہیںمجھے اب تک یہ بھی علم نہیں کہ گلگت بلتستان
کونسل نام کاکوئی ادارہ بھی موجود ہے اورمیں اس کاچیئرمین ہوں آئینی مسئلے پرمیں متعلقہ اداروں سے بریفنگ لوں گا پھرکوئی بات کروں گا۔ان خیالات کااظہار انہوں نے اراکین کونسل سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والے کونسل نے منگل کے روزاسلام آباد میںوزیراعظم شاہدخاقان عباسی سے ملاقات کی ملاقات میں ارکان کونسل نے گلگت بلتستان کی آئینی حیثیت اوردیگر مسائل سے وزیراعظم کوآگاہ کیا اوران کے حل کی درخواست کی۔وزیراعظم شاہدخاقان عباسی نے ارکان کونسل سے کہا کہ آپ لوگوں نے ملاقات کرکے بہت اچھا کیا کیونکہ مجھے ابھی تک یہ پتہ نہیں تھا کہ میں گلگت بلتستان کونسل کاچیئرمین ہوں۔اورکونسل نام کاکوئی ادارہ بھی ہے انہوں نے کہا کہ آئینی کمیٹی نے گلگت بلتستان کے آئینی مسئلے سے متعلق کوئی سفارشات نہیں بھیجی ہیں جوں ہی سفارشات آئیں گی آئینی مسئلے پربات ہوگی۔انہوں نے کہا کہ ابھی تک مجھے گلگت بلتستان کے مسائل پرکسی نے کوئی بریفنگ نہیں دی میں کوشش کرتاہوں جلدسے جلد متعلقہ اداروں سے گلگت بلتستان کے بارے میں مکمل بریفنگ حاصل کروں۔گندم کی سبسڈی کے بارے میں بھی متعلقہ ادارے سے معلومات لی جائیں گی۔ارکان کونسل نے وزیراعظم شاہدخاقان عباسی سے کہا کہ چونکہ گلگت بلتستان کے مسائل بہت سنگین ہیں ان کے حل کے لئے ماضی کی حکومتوں نے کچھ نہیں کہا آپ سے ہماری درخواست ہے کہ آپ ہمارے مسائل کے حل کے لئے کرداراداکریں۔ترقیاتی امورمیں تیزی لائی جائے۔تمام ضلعوں کے ہیڈکوارٹرزمیں بڑے منصوبے شروع کئے جائیں۔آئینی حیثیت کامسئلہ جلد حل کیاجائے گندم پرسبسڈی برقراررکھی جائے تاکہ عوام کو کسی قسم کی مشکل پیش نہ آئے۔وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے ارکان کونسل کویقین دلایا کہ گلگت بلتستان کے مسائل کے حل کے لئے وہ ذاتی دلچسپی لیںگے۔ لہذاارکان اسمبلی حوصلہ رکھیں۔انہوں نے کہا کہ جب مجھے کسی چیز کے بارے میں معلومات حاصل نہیں ہیں تو اس بارے میں کسی قسم کی بات کرنا مناسب نہیں ہے۔ ارکان کونسل مطمئن رہیں میں کونسل کی فعالیت کے لئے کام کروں گا۔اورگلگت بلتستان میںترقیاتی امورپرکام تیزکرنے کی ہدایت دیتاہوں۔ادھررکن کونسل سیدعباس رضوی نے کے پی این سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی گلگت بلتستان کے بارے میں بالکل لاعلم تھے انہیں یہ بھی نہیںپتہ تھا کہ ان کے پاس کونسل کے چیئرمین کاعہدہ بھی ہے ہم نے مسائل تحریری طورپران کوپیش کئے ہیں انہوں نے یقین دلایا ہے کہ مسائل حل کریں گے ہم نے وزیراعظم سے آئینی مسئلے کے بارے میں پوچھا تو انہوں نے کہا کہ مجھے کسی کمیٹی نے کوئی سفارشات نہیںبھیجی ہیں اگرسفارشات ان کے پاس آئیں تو وہ اس پرتبصرہ کریںگے۔ ملاقات کے دوران ہم نے اپنے تمام مسائل سے وزیراعظم کوآگاہ کیا۔رکن کونسل سیدافضل نے کہا کہ ہم نے علاقائی مسائل سے وزیراعظم کوآگاہ کیا ہے امید ہے کہ ہمارے مسائل حل کریں گے۔ ملاقات کے لئے وزیراعظم نے وقت دیا جس پرہم ان کے شکرگزار ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ملاقات کاکوئی خاص ایجنڈانہیں تھا۔تعارفی ملاقات تھی جونہایت ہی مفید رہی۔

Facebook Comments
Share Button