تازہ ترین

Marquee xml rss feed

حکومت کسی ریٹائرڈ جج کو نگراں وزیر اعظم نہیں بنانا چاہتی-سرگودھا میں مریم نواز کی تصاویر پر کالی سیاہی سے حمزہ لکھ دیا گیا-پی ٹی آئی 2013ء کے الیکشن سے بھی کم سیٹیں جیتے گی-نوزائیدہ بچوں کی اموات، پاکستان دنیا بھر میں پہلے نمبر پر پاکستان میں ہر22میں سے ایک بچہ پہلے مہینے ہی موت کا شکار،صحت کا بجٹ ناکافی ہے،ترجمان یونیسیف-پاکستان دہشت گردی کی مالی معاونت روکنے کے لیے سخت کارروائی نہیں کر رہا،امریکہ پاکستان کو دہشت گردوں کی مالی معاونت کرنے والے ممالک میں شامل کرنے کا فیصلہ آج ہوگا،ترجمان ... مزید-کل جماعتی حریت کانفرنس کی طرف سے سیدعلی گیلانی کی مسلسل غیرقانونی نظربندی کی مذمت بھارت کی عدلیہ اور انتظامیہ کے عدل وانصاف کے حوالے سے مسلمانوں کے ساتھ دوہرا معیار ... مزید-چیف جسٹس نے ائیر پورٹ پر میرے ہاتھ چومے اور پھر میری ہاتھوں کو اپنی آنکھوں سے لگایا ،جاوید ہاشمی-رانا ثناءاللہ اتنی بیہودہ گفتگو کرتے ہیں کہ شرم آ جاتی ہے-نواز شریف نے ہر حال میں لندن جانے کا فیصلہ کر لیا-نواز شریف کی تقاریر پر پابندی کی بجائے انہیں الٹا لٹکا دینا چاہئے

GB News

روسی ماڈل کیٹ واک کے دوران چل بسی

Share Button

بیجنگ:روس سے تعلق رکھنے والی جواں سال ماڈل ولادا ڈزیوباچین میں کیٹ واک کے دوران چل بسی۔

تفصیلات کے مطابق یہ افسوسناک واقعہ شنگھائی میں منعقد ہونے والے فیشن شو کے دوران پیش آیا جب روسی ماڈل ولادا ڈزیوبا اسٹیج پر کیٹ واک کر رہی تھیں کہ اچانک چکرا کر گر گئی۔

خوبرو ماڈل کو قریبی اسپتال لے جایا گیا جہاں وہ دو دن تک کوما میں رہنے کے بعد آج جہان فانی سے کوچ کر گئیں۔ ان کی میت کو ضروری کارروائی کے بعد روس میں واقع ان کے آبائی گاﺅں روانہ کردیا جائے گا۔

دوران علاج ان میں کرونک میننجائٹس کی تشخیص کا انکشاف ہوا۔چین میں بہت سی روسی ماڈل کام کر رہی ہیں مگر ولادا ڈزیوبا کی حادثاتی موت نے چین میں کام کی نوعیت اور متوسط طبقے سے تعلق رکھنے والی ماڈلز کے استحصال سے متعلق کئی سوالات کو جنم دیا ہے۔

ماسکو نے ماڈل کی موت کے بارے میں تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔ ان کی والدہ اوکسانا نے بتایا ہے کہ انکی بیٹی نے اسٹیج پر جانے سے پہلے انہیں کال کر کے خرابی طبیعت سے آگاہ کیا تھا۔ انہوں نے ولادا کو میڈیکل انشورنس نہ ملنے کا بھی انکشاف کیا۔

پولیس نے واقعہ کا مقدمہ درج کرتے ہوئے ابتدائی شواہد کی روشنی میں تحقیقات کا آغاز کردیا ہے اور مذکورہ ایجنسی سے معاہدے کے متعلق پوچھ گچھ کا سلسلہ جاری ہے جب کہ ماڈل کے والدین کو قانونی چارہ جوئی کے لیے چین آنے کی دعوت بھی دی گئی ہے۔

Facebook Comments
Share Button