تازہ ترین

Marquee xml rss feed

حکومت کسی ریٹائرڈ جج کو نگراں وزیر اعظم نہیں بنانا چاہتی-سرگودھا میں مریم نواز کی تصاویر پر کالی سیاہی سے حمزہ لکھ دیا گیا-پی ٹی آئی 2013ء کے الیکشن سے بھی کم سیٹیں جیتے گی-نوزائیدہ بچوں کی اموات، پاکستان دنیا بھر میں پہلے نمبر پر پاکستان میں ہر22میں سے ایک بچہ پہلے مہینے ہی موت کا شکار،صحت کا بجٹ ناکافی ہے،ترجمان یونیسیف-پاکستان دہشت گردی کی مالی معاونت روکنے کے لیے سخت کارروائی نہیں کر رہا،امریکہ پاکستان کو دہشت گردوں کی مالی معاونت کرنے والے ممالک میں شامل کرنے کا فیصلہ آج ہوگا،ترجمان ... مزید-کل جماعتی حریت کانفرنس کی طرف سے سیدعلی گیلانی کی مسلسل غیرقانونی نظربندی کی مذمت بھارت کی عدلیہ اور انتظامیہ کے عدل وانصاف کے حوالے سے مسلمانوں کے ساتھ دوہرا معیار ... مزید-چیف جسٹس نے ائیر پورٹ پر میرے ہاتھ چومے اور پھر میری ہاتھوں کو اپنی آنکھوں سے لگایا ،جاوید ہاشمی-رانا ثناءاللہ اتنی بیہودہ گفتگو کرتے ہیں کہ شرم آ جاتی ہے-نواز شریف نے ہر حال میں لندن جانے کا فیصلہ کر لیا-نواز شریف کی تقاریر پر پابندی کی بجائے انہیں الٹا لٹکا دینا چاہئے

GB News

فاروق ستار کی خواہش پر اسٹیبلشمنٹ نے ملاقات کروائی، مصطفیٰ کمال

Share Button

کراچی: پاک سر زمین پارٹی کے سربراہ مصطفیٰ کمال نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہر گھنٹے بعد قلابازیاں اور کامیڈی شو ہو رہا تھا اور چند حقائق عوام کے سامنے رکھنا چاہتا ہوں جبکہ باقی آف دی ریکارڈ سب کو سب پتا ہے۔

انہوں نے کہا ہم لوگ چیزوں کو لیک کرنے والے نہیں جبکہ ہم نے فاروق ستارکے ساتھ پریس کانفرنس کی اس کا سب کو پتا ہے لیکن کہا جا رہا ہے فاروق ستار کیساتھ جو پریس کانفرنس کی وہ اسٹیبلشمنٹ نے کروائی ہے۔ پاک سر زمین پارٹی کے سربراہ نے مزید کہا گورنر سندھ کا کہنا ہے فاروق ستار نے بتایا ان سے مجبوراً یہ کام کروایا جا رہا ہے اور دوسرا یہ تاثر دیا جا رہا ہے فاروق ستار کو اغوا کر کے پریس کانفرنس کروائی گئی۔

ان کا کہنا پاکستان واپس آنے کے بعد ہمیں بے شمار مشکلات کا سامنا کرنا پڑا لیکن فاروق ستار نے پورے پاکستان کو یہ بات باور کروا دی کہ پچھلے 50 گھنٹوں میں جو کچھ ہوا وہ اسٹیبلشمنٹ ہمارے لیے کر رہی ہے.ان کا کہنا تھا ہاں ہمیں اسٹیبلشمنٹ نے بلوا کر فاروق ستار سے ملوایا اور جب ہم وہاں پہنچے تو وہاں فاروق ستار پہلے سے موجود تھے جن کی فرمائش پر ہمیں وہاں بلوایا گیا تھا۔

Facebook Comments
Share Button