تازہ ترین

Marquee xml rss feed

وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا خصوصی اجلاس کئی گھنٹوں سے جاری ہر ایک وزارت کو عملدرآمد کیلئے پانچ سالوں پر محیط مخصوص سٹرٹیجک پلان کی تیاری کا ہدف دیا ... مزید-منگنی کسی سے شادی کسی سے ،لڑکی نے منگیتر کو سبق سکھا دیا لڑکی نے بے وفائی پر حملہ کر کے منگیتر، اُس کی بیوی اور والدہ کو زخمی کردیا-مرکز میں نیاپاکستان بناہے،اقتصادی طورپرملک کی صورتحال ابتر ہے، آفتاب شیرپاؤ حکومت کی 100دن کی کارکردگی نظرنہیں آرہی،خیبر پشتوخوا اور بلوچستان میں لا پتہ افراد کا مسئلہ ... مزید-بیرون ممالک پاکستان کا موجودہ حکومت پر اعتماد کا اظہار جولائی سے نومبر کے درمیان بیرون ممالک سے 9 ارب ڈالرز سے زائد ترسیلات زر بھیج دیں-بدعنوان عناصر کیخلاف بلاتفریق کارروائی کی جانی چاہئے ، علی امین خان گنڈا پور اپوزیشن احتساب سے بچنے کیلئے حکومت پر بلاوجہ تنقید کر رہی ہے،پی ٹی آئی کسی بدعنوان کو معاف ... مزید-سپیکر قومی اسمبلی کا راجہ ریاض کی جانب سے (ن) لیگ کی قیادت کیخلاف نازیبا الفاظ کے استعمال پر انتباہ جاری آئندہ اس طرح کے الفاظ استعمال کئے تو ان کے خلاف کارروائی کی جائے ... مزید-نوجوان قوم کا قیمتی سر مایہ ہیں انہوں نے ہی مستقبل میں ملک کی باگ ڈور سنبھالنی ہے،ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی حکومت بلوچستان میں نئے تعلیمی ادارے خصوصا ٹیکنیکل تعلیم ادارے ... مزید-کسی کا نام ناجائز طور پر ای سی ایل میں ڈالنا اور پرامن احتجاج سے روکنا درست اقدام نہیں ہے ،ْشیریں مزاری-آرمی چیف سے چین کے نائب وزیرخارجہ کی ملاقات علاقائی سیکیورٹی صورتحال ،باہمی دلچسپی کے امور اور دوطرفہ تعاون بڑھانے پر بات چیت-پاکستان اور بھارت کے درمیان مذاکرات کے علاوہ امن کا کوئی دوسرا راستہ نہیں‘ شاہ محمود قریشی پاکستان افغانستان میں پائیدار امن کا خواہاں ہے‘ خطے کے دیگر ممالک کے ساتھ ... مزید

GB News

آٹومیٹک ہتھیاروں کے لائسنس کی معطلی

Share Button

وفاقی حکومت نے آٹومیٹک ہتھیاروں کے لائسنسوں کومعطل کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس حوالے سے اسلحہ لائسنس ہولڈرز کودواختیارات دئیے جائیں گے۔ پہلے آپشن کے تحت آٹومیٹک لائسنس کو سیمی آٹومیٹک میں تبدیل کرواجاسکے گا،جس کیلئے پندرہ جنوری 2018تک متعلقہ ڈی پی او آفس سے تصدیق کروانا ہوگی۔ دوسرے آپشن کے تحت لائسنس ہولڈرز اپنا آٹومیٹک اسلحہ واپس کرسکتے ہیں جس کے عوض حکومت انہیں پچاس ہزار روپے دے گی۔اسلحہ لائسنس یافتہ افراد ڈپٹی کمشنرز اورپولیٹیکل ایجنٹس کے دفاتر میں اپنا اسلحہ واپس کرسکتے ہیں۔آٹومیٹک ہتھیاروں کے لائسنس کی معطلی کو موجودہ صورتحال میں انتہائی اہم قدم قرار دیا جا سکتا ہے’یہ حقیقت اظہر من الشمس ہے کہ اس سہولت کی آڑ میں جرائم پیشہ عناصر بھی اسلحے کے لائسنس حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئے اور اس اسلحے کے ناجائز استعمال نے صورتحال کے بگاڑ میں اہم کردار ادا کیا یہ درست ہے کہ ملکی حالات کے پیش نظر لوگوں کو اپنے دفاع کیلئے حفاظتی اقدامات پر مجبور ہونا پڑا لیکن دیکھنے میں یہ آیا ہے کہ جن لوگوں کو حفاظت کی ضرورت ہے وہ تو اسلحہ خریدنے اور محافظ رکھنے کی استطاعت ہی نہیں رکھتے لیکن وہ عناصر جنہوں نے یہ اسلحہ حاصل کیا انہوں نے اسے اپنی طاقت کی نمائش کاوتیرہ بنا لیا تاکہ دوسروں پہ رعب و دبدبہ قائم کیا جا سکے’اس فیصلے پر بلا امتیاز عملدرآمد سے ہی مطلوبہ نتائج حاصل کیے جا سکتے ہیں یہ نہیں ہونا چاہیے کہ کچھ لوگوں کو تو اس سے مستثنی قرار دے دیا جائے اور باقیوں پہ اس کا پورے طور پر اطلاق کرتے ہوئے ان سے یہ اسلحہ واپس لے لیا جائے’ آٹومیٹک ہتھیار صرف اور صرف حکومتی اہلکاروں اور اداروں ہی کے پاس ہونے چاہیں ہم سمجھتے ہیں کہ اس فیصلے کا اطلاق گلگت بلتستان پربھی کیا جائے کیونکہ یہ حساس علاقہ ہے اور یہاں بھی بڑی تعداد میں آٹو میٹک اسلحہ موجود ہے’اس علاقے کی حساسیت کے پیش نظر تو یہ اور بھی ضروری ہو جاتا ہے کہ اسے مکمل طور آٹو میٹک اسلحے سے پاک کر دیا جائے اس لیے امید کی جا سکتی ہے کہ حالیہ فیصلے کا اطلاق بلاتاخیر گلگت بلتستان پر بھی کیا جائے گا ۔

Facebook Comments
Share Button