GB News

انجمن تاجران کی کال پر غیر قانونی و غیر آئینی ٹیکسز کے خلاف سکرد و میں تاریخی ہڑتال

Share Button

سکردوشگرکھرمنگ روندو (نمائندگان) انجمن تاجران کی کال پر غیر قانونی و غیر آئینی ٹیکسز کے خلاف سکرد و میں تاریخی ہڑتال کی گئی شٹر کھلا نہ ہی پہیہ چلا تمام مقامات کو جام کر دیا گیا پبلک ٹرانسپورٹ سڑکوں سے غائب رہی بنک ، میڈیکل سٹورز ،تندور ،ہوٹلز بھی بند رہے جگہ جگہ رکاوٹیں کھڑی کر کے سڑکیں بلاک کی گئی تھیں جس کی وجہ سے لوگوں کو آمد ورفت میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا روندو ، گمبہ سکردو ، کھرمنگ ، شگر ، گانچھے سمیت سکردو کے تمام مضافاتی علاقوں میں بھی مکمل طورپر شٹر ڈاؤن رہا اور شہریوں نے آئینی حیثیت کے تعین سے قبل گلگت بلتستان میں ٹیکسز کے نفاذ کے خلاف شدید احتجاج کیا پبلک ٹرانسپورٹ کی عدم موجودگی کے باعث سڑکیں سنسان رہیں مارکیٹوں میں سناٹا چھایا رہا لوگ ایک کب چائے کیلئے ترستے رہے تمام نجی تعلیمی ادارے بھی ہڑتال کے باعث بند رہے جس کی وجہ سے پیر کے روز ہونے والے تمام امتحانات ملتوی کر دیئے گئے غیر قانونی اور غیر آئینی ٹیکسز کے خلاف انجمن تاجران کی جانب سے حسینی چوک سے یادگارچوک تک احتجاجی ریلی نکالی گئی جس میں ہزاروں تاجروں اور شہریوں نے شرکت کی ریلی کے شرکاء ہم نہیں مانتے ظلم کے ضابطے ، نامنظور نامنظور غنڈہ ٹیکس نامنظور کے نعرے لگار ہے تھے ریلی یادگار چوک پہنچ کر بہت بڑے جلسے میں بدل گئی تاجر پیر کے روز صبح 7بجے ہی حسینی چوک پر جمع ہو نا شروع ہو گئے جگہ جگہ سے تاجر تنظیموں وکلاء تنظیموں اور دیگر تنظیموں نے ریلیوں کی شکل میں آکر انجمن تاجران کے مرکزی احتجاجی جلسے میں شرکت کی اور تمام غیر قانونی ٹیکسز کے خاتمے تک احتجاج جاری رکھنے کا اعلان کر دیا ہے۔ ادھر انجمن تاجران گلگت بلتستان کے ساتھی یکجہتی اور غیر آئینی علاقے میں ٹیکسوںکے نفاذ کے خلاف کھرمنگ میں بھر شٹر ڈاون و پہہ جام ہرتال جاری ہے مہدی آباد طولتی کمنگو منٹھوکہ کھرمنگ خاص اور تمام چھوٹے بڑے علاقوں میں دکانیں اور مارکیٹیں بند رہیں عوام کو ساز و سامان کی خریداری میں شدید پریشانی کا سامنا کر نا پڑرہا ہے جبکہ ٹرانسپورٹر کی گاڑیاں نہ چلانے کی وجہ سے سفر کرنے والوں کو بھی مشکلات کا سامنا ہے۔ ادھر شگر کی عوام ٹیکس کے نفاذ کیخلاف ڈٹ گئے۔ودہولڈنگ ٹیکس اور دیگر ٹیکسوں کیخلاف عوامی ایکشن کمیٹی ،انجمن تاجران اور بازار کمیٹی شگر کی کال پر ضلع بھر میں مکمل پہیہ جام اور شٹر ڈائون ہڑتال رہا۔ اس موقع پر مارکیٹ ،دکانیں،عوامی مراکز،ہوٹلز اور نجی ادارے بند رہے۔ جبکہ سڑکوں پر گاڑیاں بالکل بند رہیں۔ دوسری جانب سب ڈویژن روندو میں بھی ہڑتال کی گئی، بازار بند رہے، مختلف سیاسی تنظیموں اور تاجروں کی جانب سے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔

Facebook Comments
Share Button