تازہ ترین

Marquee xml rss feed

لڑکی کو ہراساں کرنے والے ڈرائیور کا بیان سامنے آ گیا لڑکی گاڑی کی پچھلی سیٹ پر تھی کیسے ہراساں کر سکتا تھا؟ حلفیہ کہتا ہوں کہ لڑکی کو ہراساں نہیں کیا-جمائما کا شادی کے بعد عمران خان کے ساتھ رہنے والے گھر کو فروخت کرنے کا فیصلہ جمائما گولڈ سمتھ نے پہلی بار اپنے عالیشان گھر کی تصاویر شئیر کر دیں-مشہور کارٹون کیریکٹر ٹام اینڈ جیری اب لائیو ایکشن میں نظر آئیں گے وارنر بروز کی تخلیق کردہ ٹام اینڈ جیری کارٹون کو لائیو ایکشن میں بنانے کی تیاریاں شروع کی جاچکی ہیں-گلوکاری اور اداکاری کے بعد فرحان سعید کی فلم انڈسٹری میں انٹری سکرپٹ کے مراحل مکمل ‘فلم کی عکس بندی کا آغاز رواں برس دسمبر سے کیا جائے گا-اداکارہ ماہ نور کلین اینڈ گرین مہم کا حصہ بن گئیں بحریہ ٹائون میں اپنے گھرکے باہر پودا لگایا اور سٹرک پر جھاڑو بھی دیا-اداکارہ ساکشی تنورنے بچی گود لے لی یہ بچی میری دعاؤں کا انعام ہے جسے پاکر میں بے انتہا خوش ہوں‘اداکارہ-لوک ورثہ فیسٹیول2نومبر کوشکر پڑیاں میں شروع ہوگا-شلپا شندے نے ریب سے متعلق انکشاف کر کے سب کو حیران کردیا شوبز انڈسٹری میں سمجھوتے کے تحت کچھ لو اور کچھ دو کی بنیاد پر چیزیں ہوتی ہیں شوبز میں ریپ یا زبردستی نہیں بلکہ سب ... مزید-اداکار فیصل قریشی نے فلم بنانے کا اعلان کر دیا یہ فلم 2019 میں نمائش کے لیے پیش کی جائے گی-میںہر نئی فلم کو اپنی پہلی فلم سمجھتا ہوں، ایوشمان کھرانہ میری 3 فلمیں ناکام رہیں جو میری زندگی کا سیکھنے کا بہترین تجربہ تھا، بالی ووڈ اداکار

GB News

تمام تر قیاتی کام اپنے مقررہ وقت سے قبل مکمل ہو رہے ہیں،وزیر اعلیٰ

Share Button

گلگت (ثاقب عمرسے) وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الر حمن نے کہاہے کہ پچھلے پندرہ سال سے تر قیاتی کام منجمد پڑے ہو ئے تھے پلوں کا کام التوا کا شکارتھا ، بلڈنگز کے کام التوا کے شکار تھے ، اسمبلی کا کام التوا کا شکار تھا سڑکوں کا برا حال تھا لیکن اس کم عرصے میں اسمبلی کی بلڈنگ پہ بھی کام ہو رہاہے ساتھ ہی جو ڈیشل کمپلیکس کا کام ڈیڑھ سال میں مکمل ہوا ۔ اس سے قبل گلگت بلتستان میں ایک پرائمری سکول کی بلڈنگ کے لیئے چھ سال لگتے ایک ہسپتال کے وارڈکے لیئے دس سال لگا ئے جا تے لیکن اب وہی محکمہ ہے وہی ٹھیکیدار ہیں عوامی نمائندے تبدیل ہو نے کے بعد تمام تر قیاتی کام اپنے مقررہ وقت سے قبل مکمل ہو رہے ہیں اسی طرح ہی سپریم اپیلٹ کورٹ کے جو ڈیشل کمپلیکس بھی اپنے مقررہ وقت سے قبل ڈیڑھ سال میں 35کروڑ کی لاگت سے مکمل ہوا ہے ۔وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الر حمن نے بدھ کے روز سپریم اپیلٹ کورٹ گلگت بلتستان کے جو ڈیشل کمپلیکس کی افتتاحی تقریب میں شرکاء سے خطاب کر تے ہو ئے کہا کہ سپریم اپیلٹ کورٹ کے چیف جسٹس ڈاکٹر رانا شمیم نے عدالت کے اختیارات کو مکمل استعمال کیا ہے ہر وقت اس جو ڈیشل کمپلیکس کے کام کو فوری کرنے پہ زور دیاہمیں خوشی ہے کہ جو ڈیشری اس قسم کے اجتماعی مفاد عامہ کے کاموں کے لیئے کام کرے تو ایک عام آدمی کو اس کی دہلیز پر سہو لیات مہیا ہو نگی ۔انہوں نے خطاب کر تے ہو ئے کہا کہ 2004سے اسمبلی کی بلڈنگ نہیں بنی اس دوران تین اسمبلیاں وجود میں آئیں لیکن پھر بھی کام مکمل نہیں ہوا لیکن اس مر تبہ وہی ٹھیکیدار ، وہی محکمہ ہے لیکن عوامی نمائندوں کی تبد یلی ہو ئی ہے اور اس سال جون سے قبل اسمبلی کی بلڈنگ مکمل ہو گی اور جون کا بجٹ بھی اسی اسمبلی میں پیش کیا جا ئے گا ۔ انہوں نے کہا کہ تعمیراتی کام کسی بھی علاقے کے کلچر کو سامنے لاتے ہیں اور تعمیراتی کام نہ ہو نے سے لوگوںمیں حکومت کے حوالے سے غلط تا ثر جا تا ہے کہ حکومت اگر تعمیراتی کام نہیں کراسکتی ہے تو عوام کے مسائل کیا حل کر ے گی ؟ ہم اگر سابقہ حکومت پہ تنقید کرتے ہیں تو وہ نا راض ہوتے ہیں لیکن ہم تنقید کر کے وقت ضا ئع نہیں کرینگے اور عام آدمی کو انصاف سہولیات فراہم کر نے کے ساتھ انصاف کی فراہمی کے لیئے کام کرینگے ۔انہوں نے کہا کہ اس سے قبل پانچ ارب کا بجٹ لیپس ہو جا تا تھا اورتر قیاتی کاموں پہ بجٹ خرچ نہیں ہو تا تھا لیکن اب بجٹ بڑھ بھی گیا ہے اور مکمل بجٹ خرچ ہو گا اور نیا بجٹ اس سے زیادہ ہو کر 25ارب تک جا ئے گا ۔انہوں نے کہاکہ ا سے پہلے آفیسر میس نہیں تھا ، ریسٹ ہائوس نہیں تھے اور آڈیو ٹوریم نہیں تھا لیکن اس مر تبہ آفیسرز میس بھی بنا یا جا رہا ہے ریسٹ ہا ئوس کے ساتھ آڈیو ٹو ریم بھی بنا یا جا رہاہے جو کہ ایک صو بے کے لیئے ضروری ہو تا ہے ۔انہوں نے کہا کہ جو ڈیشری اور دیگر تمام اصلا حات کا خلاصہ یہ ہو تا ہے کہ ایک عام آدمی کو انصاف کی فرا ہمی ہو اور سہولیات میسر ہوں اگر ہم انصاف اور سہو لیات ایک عام آدمی کو نہیں دے سکے تو یہ تمام تعمیراتی کام ضا ئع ہیں اس لئے ہم پر امید ہیں کہ ہم ایک عام آدمی کو اس کی دہلیز پہ سہو لیات فراہم کر رہے ہیں اور مزید سہو لیات فراہم کر نے میں کوشاں ہیں ۔ جو ڈیشل کمپلیکس کی افتتاحی تقریب میںسپریم اپلیٹ کورٹ کے چیف جسٹس رانا شمیم ، جسٹس جاوید اقبال ، ہا ئی کورٹ کے چیف جسٹس وزیر شکیل سمیت حکو متی کابینہ کے اراکین نے بھی شر کت کی اور بہترین کام کر نے پر ٹھیکیداروں کو تعریفی اسناد بھی دی گئیں۔ دوسری جانب وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ سابقہ حکومت میں ترقیاتی بجٹ 8ارب ہوتا تھا جس میں سے 3ارب بھی استعمال نہیں کئے جاتے تھے۔ مسلم لیگ ن کی حکومت نے ترقیاتی بجٹ کا 100فیصد استعمال کو یقینی بنایا جس کی وجہ سے مسلم لیگ ن کے قائد محمد نواز شریف نے ترقیاتی بجٹ میں اضافہ کرکے گلگت بلتستان کا ترقیاتی بجٹ 18ارب کردیا ہے۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت کے اقدامات اور عدالتوں کا اصل مقصد عوام کے دہلیز پر مسائل کو حل کرنا اور انصاف کی فراہمی کو یقینی بنانا ہے ہماری عدالتیں میرٹ پر فیصلے کررہے ہیں جس کی وجہ سے عوام کو انصاف کی فراہمی ممکن ہوئی ہے۔ دوسری جانب وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے صوبے کی پہلی ڈرگ ،فوڈ اور پانی کے ٹیسٹنگ لیبارٹری کے افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ تمام کمپنیوں کو صوبے میں ادویات اور اشیاء خوردنوش کو فروخت کرنے کے قبل صوبے میں قائم کی جانے والی ڈرگ، فوڈ اور پانی کی لیبارٹری سے معیار کی تصدیق کرانا لازمی قرار دیا جائے گا جس کیلئے ضروری قانون سازی بھی کی جائے گی۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہاکہ اس ادارے کی اہمیت نظرانداز کرتے ہوئے سابقہ حکومتوں نے ادارے کی فعالیت پر توجہ نہیں دیا موجودہ حکومت نے اس ادارے کی افادیت کی مدنظر ڈرگ، فوڈ اور پانی کی ٹیسٹنگ لیبارٹری کی نئی بلڈنگ کی تعمیر اور جدید مشینری کی خریداری کو یقینی بنایااس ادارے کا مقصد عوام کو صاف پانی، اشیاء خوردنوش اورادویات کی فراہمی یقینی بنانا ہے اس ادارے کے قیام سے غیر معیاری اشیاء خوردنوش، ادویات اور پانی کی فروخت کے روک تھام کو یقینی بنایا جاسکے گا۔ صوبے میں پہلی ڈرگ، فوڈ اور پانی کی ٹیسٹنگ لیبارٹری کے قیام سے قیمتی انسانی جانوں کے ساتھ کھیلنے والوں کو قانون کے مطابق سزا دلائی جاسکے گی۔ جن چیزوں کی سماج کو ضرورت ہے ان پر توجہ دے رہے ہیں۔ حکومت کی کارکردگی اور اقدامات عوام کونظر آرہے ہیں ۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے ذہنی، نفسیاتی اور دماغی ہسپتال کے دورے کے موقع پر وارڈز کا معائنہ کیا۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے سیکریٹری صحت کو ہدایت کی کہ ہسپتال میں بیماریوں سے متعلق لیٹریچر کی فراہمی اور بلڈنگ کی جدید طرز پر تزائن و آرائش کو یقینی بنایا جائے۔ ذہنی، نفسیاتی اور دماغی بیماریاں تمام علاقوں میں پائی جاتی ہے لیکن سابقہ حکومتوں کی عدم توجہی کی وجہ سے صوبے میں اس نوعیت کے ہسپتال کا قیام عمل میں لانے پر توجہ نہیں دیا۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہاکہ نفسیاتی و ذہنی امراض کی تشخیص اور علاج کیلئے صوبے میں پہلا ہسپتال کا قیام عمل میں لایا گیا ہے جس کیلئے مزید ماہرین کی خدمات حاصل کی جارہی ہے۔

 

Facebook Comments
Share Button