تازہ ترین

Marquee xml rss feed

لڑکی کو ہراساں کرنے والے ڈرائیور کا بیان سامنے آ گیا لڑکی گاڑی کی پچھلی سیٹ پر تھی کیسے ہراساں کر سکتا تھا؟ حلفیہ کہتا ہوں کہ لڑکی کو ہراساں نہیں کیا-جمائما کا شادی کے بعد عمران خان کے ساتھ رہنے والے گھر کو فروخت کرنے کا فیصلہ جمائما گولڈ سمتھ نے پہلی بار اپنے عالیشان گھر کی تصاویر شئیر کر دیں-مشہور کارٹون کیریکٹر ٹام اینڈ جیری اب لائیو ایکشن میں نظر آئیں گے وارنر بروز کی تخلیق کردہ ٹام اینڈ جیری کارٹون کو لائیو ایکشن میں بنانے کی تیاریاں شروع کی جاچکی ہیں-گلوکاری اور اداکاری کے بعد فرحان سعید کی فلم انڈسٹری میں انٹری سکرپٹ کے مراحل مکمل ‘فلم کی عکس بندی کا آغاز رواں برس دسمبر سے کیا جائے گا-اداکارہ ماہ نور کلین اینڈ گرین مہم کا حصہ بن گئیں بحریہ ٹائون میں اپنے گھرکے باہر پودا لگایا اور سٹرک پر جھاڑو بھی دیا-اداکارہ ساکشی تنورنے بچی گود لے لی یہ بچی میری دعاؤں کا انعام ہے جسے پاکر میں بے انتہا خوش ہوں‘اداکارہ-لوک ورثہ فیسٹیول2نومبر کوشکر پڑیاں میں شروع ہوگا-شلپا شندے نے ریب سے متعلق انکشاف کر کے سب کو حیران کردیا شوبز انڈسٹری میں سمجھوتے کے تحت کچھ لو اور کچھ دو کی بنیاد پر چیزیں ہوتی ہیں شوبز میں ریپ یا زبردستی نہیں بلکہ سب ... مزید-اداکار فیصل قریشی نے فلم بنانے کا اعلان کر دیا یہ فلم 2019 میں نمائش کے لیے پیش کی جائے گی-میںہر نئی فلم کو اپنی پہلی فلم سمجھتا ہوں، ایوشمان کھرانہ میری 3 فلمیں ناکام رہیں جو میری زندگی کا سیکھنے کا بہترین تجربہ تھا، بالی ووڈ اداکار

GB News

پاکستان کو غیر مستحکم کرنے میں بھارت کا کردار ہے، آصف غفور

Share Button

راولپنڈی: ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے کہ پاکستان کو غیر مستحکم کرنے میں بھارت کا   کردار ہے, کلبھوشن کی گرفتاری سے صاف ظاہر ہو   گیا بھارت دہشت گردی میں ملوث ہے, بھارت پاکستان کے خلاف اب بھی سرگرم ہے۔

ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا   کہ سی پیک کے تناظر میں بلوچستان بہت اہم ہے, پاک فوج کا فوکس بلوچستان کی جانب ہے, بلوچستان میں ترقی کے لیے پروگرام بھی شروع کیا, سی پیک نہ صرف پاکستان کے لیے بلکہ خطہ کی ترقی کے لیے بھی بہت ضروری ہے۔قیام پاکستان سے اب تک چیلنجز کا سامنا کرتے آ رہے ہیں, پاکستان اب امن کی طرف جا رہا ہے پاکستان کا مستقبل امن اور ترقی ہے دہشت گردی کے خلاف جنگ مشکل مرحلہ تھا پاکستانی قوم نے ثابت کیا ہم پر عزم ہیں، خطے میں مکمل امن کے لیے افغانستان میں امن ضروری ہے، پاکستان میں امن ہو گیا افغانستان کے بغیر پائیدار امن ممکن نہیں۔ 2001ء کے بعد اپنی افواج کو افغان بارڈر  پر بھیجنا شروع کیا اس وقت مالا کنڈ ڈویژن میں افغان طالبان   کی موجودگی کے تھریٹ تھے، ضرب عضب شروع کیا تو دہشت گردوں کا خاتمہ کیا، فاٹا مالا کنڈ میں آپریشن کے تھریٹ کو ختم کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ شمالی وزیرستان میں دہشت گردوں کے خلاف آپریشن پلان کیا گیا،  آپریشنز سے دہشت گرودں کو ایک جگہ اکٹھا کرنا تھا،شمالی وزیرستان آپریشن سے پہلے اے پی سی بھی ہوئی، فیصلے کے بعد شمالی وزیرستان کا آپریشن کیا گیا،فیصلہ ہوا دہشت گردوں کو افغانستان منتقل ہونے دیا جائے، دہشت گردوں کو بھاگنے نہ دینے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔

انہوں نے کہا  کہ اتحادی افواج کا اپنا  ایک  آ رگنائزڈ سسٹم تھا، افغان فورسز نے آئی ایس ایف کا زیادہ تعاون نہیں کیا تھا، آئی ایس ایف سے پاک فوج  کی بہت اچھی کوارڈینیشن تھی، دورہ افغانستان میں اشرف غنی سے کوارڈینیشن کی بات ہوئی۔ آپریشن کا موجودہ مرحلہ مشکل ہے کیونکہ دشمن سامنے نہیں ہے ڈپلومیٹک فورسز سے کسٹم کوارڈینیشن پر مبنی دستاویز بھیجی گئیں، کوارڈینیشن بہتر ہو جائے تو بارڈرز کے معاملات حل ہو جاتے ہیں۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ افغان جنگ کے دوران تمام جنرلز نے اچھا کام کیا۔ بھارت پاکستان کے خلاف اب بھی سرگرم ہے فزیکل کلیئرنس کے بعد کچھ کام ہمارے کچھ افغانستان کے ہوںگے۔ چاہتے ہیں کہ افغانستان پاکستان سے کوئی ادھر ادھر باآسانی آ جا نہ سکے۔ کلبھوشن کی گرفتاری سے ظاہر ہو گیا بھارت دہشت گردی میں ملوث ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان نے بہت سی معلومات افغانستان سے شیئر کیں۔ پاکستان نے ہدف حاصل کیے افغانستان کچھ نہ کر سکا۔ پاکستان پر کوئی الزام نہیں لگا سکتا پاکستان نے اپنے حصے کا کام کیا اور سو فیصد نتائج دیئے پاکستان کو غیر مستحکم کرنے میںبھارت کا کردار ہے۔افغانستان کے تھریٹپاکستان پر بھی اثرانداز ہوتے ہیں 900 کلومیٹر تک سڑکیں بنیں، سکول بنائے، فاٹا میں بہت سے کام ہوئے جو عوام کی ضرورت تھے، فاٹا میں جنگ لڑی 2 لاکھ کے قریب فوج لگائی۔

انہوں نے کہا کہ سی پیک کے تناظر میں بلوچستان بہت اہم ہے پاک فوج کی توجہ بلوچستان کی طرف ہے انہوں نے کہا کہ پاکستان کا بارڈر ایران کیساتھ بھی لگتا ہے ایران سے بارڈر کمیونیکشن بہتر ہو رہی ہے ایران نے بارڈر پر حفاظتی اقدامات شروع کیے ہیں دنیا میں کہیں بھی ضرورت پڑی تو پاک فوج تعاون کر سکتی ہے روس کے ساتھ ہمارے دفاعی تعلقات بڑھے ہیں۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ سی پیک کی کامیابی پاکستان اور خطے کی ترقی کے لیے ضروری ہے۔ممالک کے ساتھ ملٹری ڈپلومیسی چلتی رہتی ہے خارجہ تعلقات والے ملک سے ملٹری ڈپلومیسی اچھی ہوتی ہے ملک مخالف عناصر نے بلوچستان میں سرگرمیاں تیز کیں۔

انہوں نے کہا کہ آج کے پاکستان کی افواج بہت مختلف ہے پہلے جنگ نہ لڑنے والی فوج اب جنگ لڑ رہی ہے رد الفساد میں انٹیلی جنس بیس آپریشنز زیادہ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کی جنگ کو نظام تک پہنچانے میں وقت لگے گا، پاک فوج فاٹا میں موجود رہے گی، فاٹا میں اس وقت فوج کی موجودگی ضروری ہے، عوام کی بھی خواہش ہے کہ پاک فوج فاٹا میں موجود رہے، فاٹا کو علاقہ غیر  کہا جاتا تھا اپنا بنانے میں وقت لگے گا۔ مقامی آبادی کا اپنے علاقے میں اعتماد بحال ہونا چاہیے۔ دہشت گردوں سے متعلق اطلاعات شیئر کی جائیں تو کارروائی کریںگے۔

Facebook Comments
Share Button