تازہ ترین

Marquee xml rss feed

گوجرانوالہ میں پاک فوج اور عدلیہ کے حق میں ریلی ، نعرے بھی لگائے گئے-حکمران عوام کی حالت زار بدلنے کے معاملے پر ڈنگ ٹپائو پالیسیوں پر عمل پیرا ہیں ‘ مسرت چیمہ عوام نے موقع دیا تو صحت اور تعلیم سمیت بنیادی ضروریات کی فراہمی اولین ترجیح ہو ... مزید-عروج کے دنوں میں شوبز کو چھوڑنا میرے لیے باعث فخر ہے ‘ اداکارہ زاریہ بٹ-کسی بھی فلم کی کامیابی کیلئے سکرپٹ کا اچھا اور معیاری ہونا لازمی ہے‘ صائمہ نور-گلوکارہ حمیرا چنا سیرو تفریح کے لئے دبئی روانہ-عالمی شہرت یافتہ اداکار وکمپیئر معین اختر کی ساتویں برسی (آج )منائی جائے گی-اداکارہ شیزہ بٹ پر فیصل آباد میں قاتلانہ حملے کے ملزمان تاحال گرفتار نہ ہوسکے پولیس کی پراسرار خاموشی /پاکستان میں فن اور فنکاروں کی جان و مال کی کوئی قدر نہیں‘ شیزہ ... مزید-انعامی بانڈ زپر ٹیکس کی شرح کم کی جائے ‘ پی ٹی آئی کی پنجاب اسمبلی میں قرارداد-حکومتی پالیسیوں سے آئی سی یو میں پڑی معیشت کی سانسیں بحال ہو ئی ہیں‘ (ن) لیگ ٹریڈرز ونگ تاجروں نے نا مساعد حالات کے باوجود ٹیکسز کی ادائیگی کر کے معیشت میں کلیدی کردار کو ... مزید-ملک کو مثبت سمت میں آگے لیجانے کیلئے تمام اسٹیک ہولڈرز کا ایک پیج پر ہونا نا گزیر ہے ‘آل پاکستان انجمن تاجران معیشت کو درپیش مسائل کے حل ،قومی معاملات میں اتفاق رائے کیلئے ... مزید

GB News

امریکی شہری پاکستان کا سفر نہ کریں،امریکی حکومت کی ہدایت

Share Button

امریکہ نے اپنے شہریوں کو متنبہ کیا ہے کہ وہ جہاں تک ممکن ہو پاکستان کے سفر سے پرہیز کریں اور اگر وہاں ہوں تو خیبر پختونخوا، بلوچستان اور پاکستان کے زیرِ انتظام کشمیر نہ جائیں کیونکہ ان کے لیے وہاں خطرہ ہے۔

امریکی محمکۂ خارجہ کی ویب سائٹ پر ایک پیغام میں امریکی شہریوں کو پاکستان جانے کے خطرات سے آگاہ کیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ وہ پاکستان میں دہشت گردی کی وجہ سے وہاں جانے کے فیصلے پر ازسرِنو غور کریں۔ویب سائٹ پر چھپنے والے پیغام میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کے صوبے بلوچستان، خیبر پختونخوا اور وفاق کے زیرِ انتظام قبائلی علاقوں (فاٹا) میں دہشت گردی کی وجہ سے سفر نہ کریں۔

اسی طرح پاکستان کے زیرِ انتظام کشمیر میں دہشت گردی اور ممکنہ مسلح جنگ کے خطرے کے باعث سفر سے اجتناب کیا جائے۔’دہشت گرد گروہپاکستان میں حملوں کے منصوبے بناتے رہتے ہیں۔ دہشت گرد کسی ہلکی سی وارننگ یا پھر اس کے بھی بغیر حملے کر سکتے ہیں اور ان کا نشانہ سیاحتی مقام، مواصلاتی ذرائع، مارکیٹ/شاپنگ مال، فوجی یا سرکاری تنصیبات، ہوائی اڈے، یونیورسٹیاں، سکول، ہسپتال، عبادت گاہیں اور مقامیحکومت دفاتر ہو سکتا ہے۔

گذشتہ چھ ماہ میں پاکستان میں کم از کم 40 دہشت گرد حملے ہو چکے جن میں 225 سے زیادہ افراد ہلاک اور 475 کے قریب زخمی ہوئے ہیں۔ ان میں زیادہ تر حملے بلوچستان، کے پی کے، اور فاٹا میں ہوئے ہیں۔ ویب سائٹ پر ماضی کا حوالہ دیتے ہوئے بھی کہا گیا ہے کہ پہلے بڑے پیمانے پر ہونے والے حملے میں سینکڑوں لوگ مارے گئے تھے۔

امریکی شہریوں کے لیے پیغام میں وزارتِ خارجہ نے کہا ہے کہ پاکستان میں سیکیورٹی کے حالات کے پیشِ نظر امریکی حکومت کے پاس اپنے شہریوں کو ہنگامی سروس پہنچانے کی صلاحیت محدود ہے۔ پیغام میں کہا گیا ہے کہ امریکی حکومت کے اہلکاروں کے پاکستان میں سفر پر پابندی لگا دی گئی ہے، اور امریکی حکومت کے اہلکاروں کے سفارتی تنصیبات سے باہر جانے پر بھی مقامی اور سکیورٹی حالات کے پیشِ نظر، جو کہ اچانک بدل سکتے ہیں، کسی وقت بھی اضافی پابندی عائد کر دی جائے گی۔

دہشت گردوں نے ماضی میں بھی امریکی سفارتکاروں اور سفارتی تنصیبات کو نشانہ بنایا ہے اور شواہد بتاتے ہیں کہ وہ ایسا کرتے رہیں گے۔

وزارتِ خارجہ نے اپنی ویب سائٹ پر دیے گئے پیغام میں لکھا کہ انڈیا اور پاکستان کی سرحد پر دونوں طرف ایک بڑی فوج موجود ہے۔ ’ان افراد کے لیے جو پاکستان اور انڈیا کے شہری نہیں ہیں واحد انڈیا۔ پاکستان سرحدی کراسنگ صوبہ پنجاب میں واہگہ، پاکستان جبکہ اٹاری، انڈیا میں ہے۔ مسافروں کو مشورہ دیا جاتا ہے کہ وہ سفر پر نکلنے سے پہلے سرحدی کراسنگ کی حالت کے متعلق معلوم کر لیں۔ انڈیا داخل ہونے کے لیے انڈین ویزہ چاہیے اور سرحد پر ویزہ کی کوئی سہولت نہیں ہے۔‘

Facebook Comments
Share Button