تازہ ترین

Marquee xml rss feed

خیبرپختونخواہ میں ہزاروں ملازمتیں ختم کرنے کا اعلان خیبرپختونخوا حکومت نے 4 ارب روپے کی بچت کے لیے صوبے میں 6 ہزار 500 ملازمتیں ختم کرنے کا فیصلہ کیاکرلیا-حکومت ملک میں کاروبار ی لاگت کم کرنے اور کاروباری طبقے کو ہر ممکنہ سہولت فراہم کر کے کاروبار کو آسان بنانے کے حوالے سے ملکی رینکنگ بہتر کرنے کیلئے پر عزم ہے، حکومت کاروبار ... مزید-اسلام آباد ،صرف آئی ایم ایف پر انحصار کرنے کی بجائے متبادل حل پر بھی کا م کر رہے ہیں،اسدعمر وال سٹریٹ جنرل کے انکشافات کی تحقیقات ہونی چاہیئے، اچھے فیصلے کروں یا برے ... مزید-ترجمان وزیر اعلیٰ پنجاب کا وزیر اعلی پنجاب سیکرٹریٹ کا بجٹ بڑھانے کی ترددید پچھلی حکومت کی جانب سے اس مد میں خرچ کئیے جانے والی رقم 802 ملین تھی جبکہ ہم نے جو رقم اس مد میں ... مزید-پاک پتن دربار اراضی قبضہ کیس،نواز شریف سمیت دیگر فریقین کو دوبارہ نوٹس جاری، آئندہ سماعت پرعدالت کو اراضی کا مکمل ریکارڈ پیش کیا جائے ،سپریم کورٹ-سابقہ حکومتوں نے جس انداز میں سرکاری وسائل اور عوام کے پیسوں کا استعمال کیا اور ملک کو جس دلدل میں دھکیلا ہے اس کی مثال نہیں ملتی، آج ملک تیس ٹریلین کا مقروض ہو چکا ہے۔ ... مزید-چترال میں کیلاش قبائل کی حدود میں تجاوزات سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت،کیلاش قبائل کے لوگوں کی زمینوں پر قبضہ نہ کیا جائے، انہیں مکمل آزادی اور حقوق ملنے چاہئیں،کیلاش ... مزید-سپریم کورٹ نے لاہورکے سول اور کنٹونمنٹ علاقوں میں لگائے گئے تمام بڑے بل بورڈز اور ہورڈنگز ڈیڑھ ماہ کے اندر ہٹانے کا حکم جاری کر دیا، پبلک پراپرٹی پر کسی کوبھی بورڈ لگانے ... مزید-کے الیکٹرک بکا ہی نہیں تھا اس لئے کسی ڈیل کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا،خواجہ آصف-سپریم کورٹ کے فیصلے سے سعدیہ عباسی اور ہارون اختر تاحیات نا اہل نہیں ہوئے :آئینی ماہر بیرسٹر علی ظفر

GB News

سکردو میں بدترین لوڈ شیڈنگ

Share Button

سکردو میں پانچ دنوں سے جاری لوڈشیڈنگ سے عوام کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو گیا ۔ لوڈشیڈنگ سے ستائے ہوئے سینکڑوں لوگوں نے سڑکوں پہ آکر حکومت اور محکمہ برقیات کے خلاف شدید احتجاج اور کھل کر نعرے بازی کی، سکردو شہر اور گردونواح میں گزشتہ ایک ہفتے سے جاری بدترین لوڈ شیڈنگ سے معمولات زندگی مفلوج ہو کررہ گئے ہیںجبکہ کاروبار بری طرح متاثرہوا ہے۔اس حوالے سے یادگار شہدا سکردو پر احتجاجی مظاہرہ کیاگیا۔ مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے حکومت اور محکمہ برقیات کو ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے کہا کہ سکردو شہر ایک ہفتے سے اندھیرے میں ڈوبا ہوا ہے لیکن حکمرانوں کو اس کا کوئی احساس ہی نہیں ہے ۔اگر لوڈشیڈنگ کے خاتمے کیلئے فوری اقدامات نہ کیے گئے تو احتجاج کا دائرہ پورے بلتستان میں پھیلا دیا جائے گا۔ایک ایسا خطہ جو بجلی کی پیداوار کے حوالے سے پورے ملک کی ضروریات سے کہیں زیادہ بجلی پیدا کر سکتا ہے بدقسمتی سے اپنی ضرورت کے مطابق بجلی پیدا کرنے سے بھی قاصر ہے حیرت انگیز امر یہ ہے کہ اس وقت تقریبا پورے ملک میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ نہ ہونے کے برابر رہ گئی ہے لیکن گلگت بلتستان کی صورتحال اس ضمن میں ناگفتہ بہ ہے گزشتہ پانچ روز سے ہونے والی لوڈ شیڈنگ غمازی کرتی ہے کہ لوگ کن حالات میں زندگی بسر کرنے پر مجبور ہیں سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ آیا یہ بجلی کی پیداوار میں کمی کا شاخسانہ ہے یا کسی خرابی کی صورت میں ایسا ہوا ہے’ہر دو صورتوں میں اس کے فوری تدارک کا اہتمام اشد ضروری ہے تاکہ لوگ اس اذیت ناک صورتحال سے نجات حاصل کر سکیں جو روزگار کی تباہی کا موجب بھی بن رہی ہے ۔

Facebook Comments
Share Button