تازہ ترین

Marquee xml rss feed

سپیرئیر یونیورسٹی شعبہ ابلاغیات اور میڈیا کلب کے زیر اہتمام آزادی کی تقریب کا انعقاد تقریب کے اختتام پر ایک عزمیہ قرارداد پیش کی گئی جس میں ملک بہتری میں کردار ادا کرنے ... مزید-قومی اسمبلی میں حلف برداری کی تقریب میں عمران خان سے مصافحہ لیگی ارکان اسمبلی کی جارحانہ انداز نہ اپنانے پر شہباز شریف پر تنقید-خورشید شاہ نے متحدہ اپوزیشن کی جانب سے اسپیکر قومی اسمبلی کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کروادیے موجودہ حالات میں ایسے اسپیکر کی ضرورت ہے جو سب کو ساتھ لے کر چلے، میں نے 30 ... مزید-جشن آزادی پر ہر کسی نے اپنایا الگ انداز ہر کوئی جشن آزادی کے رنگ میں رنگ گیا ، سوشل میڈیا پر دلچسپ ٹویٹ بھی کر دئیے-واہگہ باڈرپر پرچم کشائی کی تقریب میں شہریوں کی شرکت‘سرحدی محافظوں میں مٹھائیوں کا تبادلہ مقبوضہ کشمیر میں پاکستان کے جھنڈے لہرائے گئے‘کشمیری 15اگست کو بھارتی یوم آزادی ... مزید-نواز شریف کی احتساب عدالت میں پیشی پر کارکن اور رکن اسمبلی غائب نواز شریف اور مریم نواز کا سخت ناراضی کا اظہار-چکوال سے 3خواتین قومی اور پنجاب اسمبلی میں پہنچ گئیں آسیہ امجد اور فوزیہ بہرام تحریک انصاف جبکہ مہوش سلطانہ مسلم لیگ نون کے ٹکٹ پر مخصوص نشتشوں کے لیے نامزدہوئیں-قومی اسمبلی کی 11 نشستوں پر ضمنی انتخابات آئندہ 2 ماہ میں منعقد کروانے کا فیصلہ 11 نشستوں میں سے 9 ایسی نشستیں ہیں جو انتخابی امیدواروں نے ایک سے زائد ہونے کی وجہ سے واپس ... مزید-71یوم آزادی کی تقریبات :ملک بھر میں توپوں کی سلامی‘ تحریک پاکستان کے شہدا کو خراج عقیدت پیش کیا گیا جناح کنونشن سینٹراسلام آباد میں یوم آزادی کی مرکزی تقریب ‘ صدرممنون ... مزید-اس یوم آزادی پر میرے دل میں اُمید کا ایک عظیم چراغ روشن ہے یوم آزادی کے موقع پر پاکستان کے متوقع وزیر اعظم عمران خان کا ٹویٹر پیغام

GB News

پیپلزپارٹی کا تحریک عدم اعتماد کے معاملے پرغور کیلئے اسلام آبادمیں اجلاس طلب

Share Button

اسلام آباد(لیاقت علی انجم)پاکستان پیپلزپارٹی نے تحریک عدم اعتماد کے معاملے پرغور کرنے کے لئے اہم اجلاس اسلام آبادمیں طلب کرلیا۔گلگت بلتستان سے پارٹی کے اہم رہنمائوں کواسلام آباد میں طلب کرلیاگیا ہے جبکہ تحریک عدم اعتماد کے مرکزی کردارجاویدحسین کوبھی اسلام آبادبلالیاگیا ہے۔ذرائع کے مطابق اجلاس میں تحریک عدم اعتماد کے حوالے سے پیپلزپارٹی کی پالیسی فائنل کی جائے گی اور آئندہ کالائحہ عمل تیار کیاجائے گا۔پارٹی کی ہائی کمان کے ساتھ ہونے والی میٹنگ میں گلگت بلتستان کی سیاسی صورتحال اورپارٹی کی پالیسی کے حوالے سے اہم امورفائنل کیے جائیں گے۔ذرائع نے بتایا کہ عدم اعتماد کے حوالے سے بڑھتی چہ مگوئیوں اوربیانات کی جنگ کے بعدپیپلزپارٹی اپنی پوزیشن واضح کرناچاہتی ہے۔اسی لئے یہ اجلاس بلایاگیا ہے۔ ذرائع کاکہنا تھا کہ عدم اعتماد کے معاملے پرپیپلزپارٹی کھل کرمیدان میں آنے کی صورت میں وزیراعلیٰ کے خلاف چارج شیٹ کی تیاری میں چیلنج درپیش ہوگا اس لئے پارٹی قیادت چاہتی ہے کہ اندرون خانہ رابطوں کوتیز کرنے کے ساتھ ساتھ وزیراعلیٰ کے خلاف مضبوط”چارج شیٹ”تیارکی جائے گی تاکہ عدم اعتماد کے حوالے سے پارٹی کی پوزیشن مستحکم ہو۔ذرائع کاکہناتھا کہ پیپلزپارٹی کی صوبائی قیادت میں عدم اعتماد کے معاملے پر اختلاف رائے پائی جاتی ہے۔بعض لیڈرتحریک عدم اعتماد کے حوالے سے”بے تاب”دکھائی دیتے ہیں۔جاوید حسین کے علاوہ کئی اوررہنمائوں کابھی موقف ہے کہ تحریک عدم اعتماد کے معاملے پرپارٹی کوسستی نہیں دکھائی جانی چاہیے لیکن بعض رہنما جاویدحسین اوران کے ہم نوائوں کی جلدبازی سے اختلاف رکھتے ہیں ان کا موقف ہے کہ جب تک وزیراعلیٰ کے خلاف مضبوط چارج شیٹ تیار نہیں کی جاتی۔تحریک عدم اعتماد کے معاملے کوسردخانے میں ہی رکھنا ہوگا انہی صورتحال پرن لیگ کے ساتھ بیانات کی جنگ میںتیزی آنے اورایک دوسرے پرالزامات کی بارش کے بعد پیپلزپارٹی کی قیادت اپنی پوزیشن واضح کرناچاہتی ہے تاہم یہ بات واضح ہے کہ عدم اعتماد کے معاملے پرشریک چیئرمین آصف زرداری کی بھرپور تائید حاصل ہے۔ادھرلیگی ذرائع نے بھی اس بات کااعتراف کیا ہے کہ پیپلزپارٹی کے بعد لیڈران نے بعض لیگی رہنمائوں سے ملاقات کی ہے صورتحال سے نمٹنے کے لئے مشیراطلاعات شمس میرکوٹاسک دیدیاگیا ہے دوسری جانب پیپلزپارٹی کے اہم رہنما نے دعویٰ کیا ہے کہ بلتستان سے تعلق رکھنے والے3اہم ممبران اسمبلی سے رابطہ کیاگیا ہے ان کی طرف سے اچھاریسپانس آرہا ہے تاہم ایک رکن اسمبلی کوکنٹرول کرنے میں مشکل پیش آئے گی۔کے پی این نے جب پیپلزپارٹی کی سیکرٹری اطلاعات سعدیہ دانش سے رابطہ کیاتوان کاکہنا تھا کہ12فروری کوگلگت بلتستان کی آئینی حیثیت کے حوالے سے اہم سیمینار ہوگا جبکہ13کوپارٹی کاالگ اجلاس ہوسکتا ہے ان کاکہنا تھا کہ تحریک عدم اعتماد کے حوالے سے پارٹی کی پالیسی13فروری کے بعدواضح ہوگی ایک سوال کے جواب میں سعدیہ دانش نے کہا کہ پارٹی کے تمام رہنما اسلام آباد میںہیں اورجوگلگت یاسکردومیں تھے ان کو بھی طلب کرلیاگیا ہے عدم اعتماد کے معاملے کواب فائنل کیاجائے گا اورپارٹی کی پالیسی واضح کی جائے گی۔

 

Facebook Comments
Share Button