تازہ ترین

Marquee xml rss feed

خیبرپختونخواہ میں ہزاروں ملازمتیں ختم کرنے کا اعلان خیبرپختونخوا حکومت نے 4 ارب روپے کی بچت کے لیے صوبے میں 6 ہزار 500 ملازمتیں ختم کرنے کا فیصلہ کیاکرلیا-حکومت ملک میں کاروبار ی لاگت کم کرنے اور کاروباری طبقے کو ہر ممکنہ سہولت فراہم کر کے کاروبار کو آسان بنانے کے حوالے سے ملکی رینکنگ بہتر کرنے کیلئے پر عزم ہے، حکومت کاروبار ... مزید-اسلام آباد ،صرف آئی ایم ایف پر انحصار کرنے کی بجائے متبادل حل پر بھی کا م کر رہے ہیں،اسدعمر وال سٹریٹ جنرل کے انکشافات کی تحقیقات ہونی چاہیئے، اچھے فیصلے کروں یا برے ... مزید-ترجمان وزیر اعلیٰ پنجاب کا وزیر اعلی پنجاب سیکرٹریٹ کا بجٹ بڑھانے کی ترددید پچھلی حکومت کی جانب سے اس مد میں خرچ کئیے جانے والی رقم 802 ملین تھی جبکہ ہم نے جو رقم اس مد میں ... مزید-پاک پتن دربار اراضی قبضہ کیس،نواز شریف سمیت دیگر فریقین کو دوبارہ نوٹس جاری، آئندہ سماعت پرعدالت کو اراضی کا مکمل ریکارڈ پیش کیا جائے ،سپریم کورٹ-سابقہ حکومتوں نے جس انداز میں سرکاری وسائل اور عوام کے پیسوں کا استعمال کیا اور ملک کو جس دلدل میں دھکیلا ہے اس کی مثال نہیں ملتی، آج ملک تیس ٹریلین کا مقروض ہو چکا ہے۔ ... مزید-چترال میں کیلاش قبائل کی حدود میں تجاوزات سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت،کیلاش قبائل کے لوگوں کی زمینوں پر قبضہ نہ کیا جائے، انہیں مکمل آزادی اور حقوق ملنے چاہئیں،کیلاش ... مزید-سپریم کورٹ نے لاہورکے سول اور کنٹونمنٹ علاقوں میں لگائے گئے تمام بڑے بل بورڈز اور ہورڈنگز ڈیڑھ ماہ کے اندر ہٹانے کا حکم جاری کر دیا، پبلک پراپرٹی پر کسی کوبھی بورڈ لگانے ... مزید-کے الیکٹرک بکا ہی نہیں تھا اس لئے کسی ڈیل کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا،خواجہ آصف-سپریم کورٹ کے فیصلے سے سعدیہ عباسی اور ہارون اختر تاحیات نا اہل نہیں ہوئے :آئینی ماہر بیرسٹر علی ظفر

GB News

ناقص اور دو نمبر اشیاء کی بھرمار

Share Button

راولپنڈی اسلام آباد کے نجی ہسپتالوں میں گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والے 23 افراد کے دل کے آپریشن کئے گئے، رواں سال بڑی تعداد میں لوگ دل کے عارضے میں مبتلا ہونے کے باعث اسلام آباد لائے گئے ہیں، ان میں اکثریت کو ادویات دی جارہی ہیں، گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والے بلڈ پریشر، گردے، معدے، دمے، کینسر اور ہارٹ کے مریضوں سے بھر گئے ہیں،ناقص اشیائے خورونوش اور ادویات کی بھرمارکی وجہ سے گلگت بلتستان میں پیچیدہ امراض خاص طور پر امراض قلب میں خوفناک حد تک اضافہ ہوگیا ہے، جب تک ناقص ادویات اور اشیائے خورونوش پر پابندی عائد نہیں ہوگی تب تک پیچیدہ امراض پر قابو نہیں پایا جاسکتا’دولت کے پجاری طویل عرصے سے لوگوں کی زندگیوںسے کھیلتے ہوئے ناقص و دونمبر اشیاء کی فروخت جاری رکھے ہوئے لاکھوں شہریوں میں کھلے عام موت کا بیو پار کر رہے ہیں مضر صحت اور خطرناک تیزابی اجزا کی آمیزش سے تیار کردہ ملاوٹی اشیا جن میں مرچ ،ہلدی ،فاسٹ فوڈ ،مصالحہ جات ،مربہ جات ،جوس ،گھی ،کوکنگ آئل ،سلانٹی آٹا ،سگریٹ ،صابن ،سوئٹس ،بچوں کی ٹافیاں ،مشروبات وغیرہ شامل ہیں جبکہ بعض درندہ صفت مینو فیکچرز مردہ جانوروں کی ویسٹ اور چربی سے بھی گھی ،آئل ،مکھن وغیرہ تیار کرتے ہیں کھلے عام تھوک وپرچون فروخت کی جا رہی ہیں اور بیشتر طاقتور با اثر جعلساز سرکاری مشینری کے خصوصی تعاون سے ان ملاوٹی اور انسانی صحت کی قاتل اشیاء کو ملٹی نیشنل اور معیاری کمپنیوں کی جعلی پیکنگ میں پیک کر کے فروخت کر نے کے دھندے میں ملوث ہیں اور اس مکروہ دھندے کو حقیقت کا رنگ دینے کیلئے انہوں نے باقاعدہ طور پر اصلی کمپنیوں کی جعلی مہریں ،سٹکرز ،مونو گرام اور کیش میمو بھی بنوا رکھے ہیں جبکہ یہ ملاوٹی اور دو نمبر اشیاء روزانہ کے حساب سے بڑی مقدار میں خریدو فروخت کیلئے لائی جاتی ہیں اور اس میں کئی معروف سرمایہ دار ،تاجر ملوث ہیں ان جعلسازوں نے متعدد سیلز مین کمیشن ایجنٹ ،بروکر اور رکھے ہوئے ہیں جنہیں تنخواہ کی بجائے سیلز پالیسی کے تحت بھاری کمیشن دیا جاتا ہے اور اس بات کا بالکل خیال نہیں کیا جاتا کہ لوگ ان کے استعمال سے موذی و مہلک بیماریوں میں مبتلا ہو رہے ہیں اس لیے ان عناصر کے خلاف سخت اقدامات کی ضرورت ہے تاکہ یہ لوگوں کی زندگیوں سے کھیلنے میں کامیاب نہ ہو سکیں۔

Facebook Comments
Share Button