تازہ ترین

Marquee xml rss feed

عمران خان اور بشریٰ مانیکا کی شادی، ایک روز بعد ہی علیحدگی ہو جانے کی پیشن گوئی بھی کر دی گئی-چیئرمین چکوال پریس کلب خواجہ بابر سلیم کی سی آر شمسی کوقومی روز نامہ سماء اسلام آباد کا ریزیڈنٹ ایڈیٹر مقرر ہونے پر مبارکباد-سعداحسن قاضی اسلامی جمعیت طلبہ حیدرآباد کے ناظم منتخب-تحصیل ہیڈ کوارٹر حضرو میں ہفتہ صحت میلہ کے حوالے سے کیمپ لگایا گیا،افتتاح انجینئر اعظم خان اور احسن خان نے کیا-ایم فل ڈگری پروگرامز 2018ء کے تحت داخلے کے لیے ٹیسٹ میں کامیاب امیدواروں کے انٹرویوز 26 فروری کو ہوں گے-ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر عمر جہانگیر کا ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال چکوال کا اچانک معائنہ،مریضوں کے مسائل دریافت کیے-اپنا چکوال اور شان پروڈکشن کی مشترکہ پیش کش مزاحیہ ڈارمہ عقل وڈی کے مج مکمل فروری کی شب اپنا چکوال چینل پر پیش کیا جائیگا-مقدمات کی تفتیش کے مد میں 55 لاکھ روپے جاری کردیئے گئے-پٹرولنگ پولیس دلیل پور نے کار میں غیر قانونی اور غیر معیاری سی این جی سلنڈر نصب کرنے پر ڈرائیور کوگرفتار کر لِیا-ڈاکٹر خادم حسین قریشی کا ٹنڈو الہیار ، ٹنڈو جام ، شاہ بھٹائی اسپتال لطیف آباد ، تعلقہ اسپتال قاسم آباد ، نوابشاہ اور ہالا میں ہیپاٹائٹس سینٹر ز کا دورہ

GB News

ذوالفقار علی بھٹو نے گلگت بلتستان سے ایف سی آر جیسے کالے قانون کو ختم کیا،اکبر تابان

Share Button

اسلام آباد(چیف رپورٹر)سینئر وزیر حاجی اکبر تابان نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان کے آئینی مسئلے کو حل کرنے کیلئے ماضی کی حکومتوں نے اپنے طور پر مختلف کوشش کی ہیں ہماری موجودہ اسمبلی نے متفقہ طور پر قرار داد پاس کی تھی کہ گلگت بلتستان کو ملک کا پانچواں آئینی صوبہ بنایا جائے۔ ہم تمام اداروں میں گلگت بلتستان کو نمائندگی دینے کی بات کی ہے سابق وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو نے گلگت بلتستان سے ایف سی آر جیسے کالے قانون کو ختم کیا سابق صدر آصف علی زرداری نے سیلف گورننس آرڈر کی شکل میں انتظامی نظام دیا اس سے پہلے کی حکومتوں نے بھی آئینی حقوق کی طرف پیشرفت کی ہے ۔ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سیلف گورننس میں موجود نقائض کو دور کرنے کیلئے کوشش کرنے کی ضرورت ہے سی پیک کو کامیاب بنانے کیلئے گلگت بلتستان کی آئینی حیثیت کا تعین وقت کی اہم ترین ضرورت ہے آئینی اصلاحات کمیٹی کی سفارشات کو پبلک نہ کرنا بڑی زیادتی کی بات ہے ہماری حکومت نے صوبہ بنانے کی سفارش کی ہے آئینی حقوق کے مسئلے پر خطے کے 95 فیصد لوگ متفق ہیں انہوں نے کہا کہ آئینی حقوق کے لئے اب ہمیں مزید اتحاد کا عملی مظاہرہ کرنا ہو گا ہم مختلف تعصبات کا شکار رہیں گے تو حقوق کبھی نہیں ملیں پاکستان تحریک انصاف کی رہنما و سابق رکن اسمبلی آمنہ انصاری ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ آئینی حقوق نہ ملنے کی ذمہ دار پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ ن ہے دونوں جماعتوں نے آئینی مسئلے پر بڑے جھوٹے وعدے کئے اور نعروں کے سوا عملی طور پر دونوں جماعتوں نے کچھ نہیں کیا اب تمام سیاسی مذہبی جماعتوں کو متحد ہونا ہو گا۔

Facebook Comments
Share Button