تازہ ترین

Marquee xml rss feed

خیبرپختونخواہ میں ہزاروں ملازمتیں ختم کرنے کا اعلان خیبرپختونخوا حکومت نے 4 ارب روپے کی بچت کے لیے صوبے میں 6 ہزار 500 ملازمتیں ختم کرنے کا فیصلہ کیاکرلیا-حکومت ملک میں کاروبار ی لاگت کم کرنے اور کاروباری طبقے کو ہر ممکنہ سہولت فراہم کر کے کاروبار کو آسان بنانے کے حوالے سے ملکی رینکنگ بہتر کرنے کیلئے پر عزم ہے، حکومت کاروبار ... مزید-اسلام آباد ،صرف آئی ایم ایف پر انحصار کرنے کی بجائے متبادل حل پر بھی کا م کر رہے ہیں،اسدعمر وال سٹریٹ جنرل کے انکشافات کی تحقیقات ہونی چاہیئے، اچھے فیصلے کروں یا برے ... مزید-ترجمان وزیر اعلیٰ پنجاب کا وزیر اعلی پنجاب سیکرٹریٹ کا بجٹ بڑھانے کی ترددید پچھلی حکومت کی جانب سے اس مد میں خرچ کئیے جانے والی رقم 802 ملین تھی جبکہ ہم نے جو رقم اس مد میں ... مزید-پاک پتن دربار اراضی قبضہ کیس،نواز شریف سمیت دیگر فریقین کو دوبارہ نوٹس جاری، آئندہ سماعت پرعدالت کو اراضی کا مکمل ریکارڈ پیش کیا جائے ،سپریم کورٹ-سابقہ حکومتوں نے جس انداز میں سرکاری وسائل اور عوام کے پیسوں کا استعمال کیا اور ملک کو جس دلدل میں دھکیلا ہے اس کی مثال نہیں ملتی، آج ملک تیس ٹریلین کا مقروض ہو چکا ہے۔ ... مزید-چترال میں کیلاش قبائل کی حدود میں تجاوزات سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت،کیلاش قبائل کے لوگوں کی زمینوں پر قبضہ نہ کیا جائے، انہیں مکمل آزادی اور حقوق ملنے چاہئیں،کیلاش ... مزید-سپریم کورٹ نے لاہورکے سول اور کنٹونمنٹ علاقوں میں لگائے گئے تمام بڑے بل بورڈز اور ہورڈنگز ڈیڑھ ماہ کے اندر ہٹانے کا حکم جاری کر دیا، پبلک پراپرٹی پر کسی کوبھی بورڈ لگانے ... مزید-کے الیکٹرک بکا ہی نہیں تھا اس لئے کسی ڈیل کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا،خواجہ آصف-سپریم کورٹ کے فیصلے سے سعدیہ عباسی اور ہارون اختر تاحیات نا اہل نہیں ہوئے :آئینی ماہر بیرسٹر علی ظفر

GB News

پاکستانی شناختی کارڈ اور کرنسی بھی واپس کریں گے اب مزیدوہ ظلم برداشت نہیں کریں گے،سیدمہدی شاہ

Share Button

سکردو (محمداسحاق جلال) پیپلزپارٹی کی مرکزی مجلس عاملہ کے رکن وسابق وزیراعلیٰ سیدمہدی شاہ نے اعلان کیا ہے کہ اگر2018ء کے الیکشن کے بعد پیپلزپارٹی کی حکومت اقتدار میں آکرآئینی صوبہ نہ بنایاتووہ پیپلز پارٹی اورسیاست چھوڑدیں گے۔پاکستانی شناختی کارڈ اور کرنسی بھی واپس کریں گے اب مزیدوہ ظلم برداشت نہیں کریں گے۔ اسلام آباد نیشنل پریس کلب میں سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جب آزادکشمیر کوسیٹ آپ دیا جارہاتھا تو ہم سے کوئی رائے نہیں مانگی گئی اور ہم سے پوچھے بغیر اس علاقے کوسیٹ آپ دیا گیا مگرہمیں آئینی صوبہ دینے کے لئے اجلاس آزادکشمیر میںبلایاجارہا ہے۔بتایاجائے کہ گلگت بلتستان کے آئینی حقوق کے مسئلے پر اجلاس آزادکشمیر میں منعقدکیوںکیاجارہا ہے؟۔40سال میں پارٹی کے لئے دئے ہیں پارٹی کے میرے اوپراحسانات ضرور ہیں مگرمیں نے بھی اپنی جوانی لٹادی ہے اگرآئندہ آئینی حقوق کے بغیرگزارہ کرنے کاکہاگیا تو پارٹی کے ساتھ نہیںرہوں گا۔ہاں میںہاں ملانے کے بجائے گھر بیٹھنے کو ترجیح دوں گا۔پارٹی کی ہاں میں ہاں ملاکر قوم کی گالیاں سننے کے لئے ہرگزتیارنہیںہوں۔اب ہم صوبہ لے کردم لیں گے۔صوبے بے کم ترکوئی چیزقبول نہیںکریں گے۔ہم پاکستانی نہیں ہیں تو ہمارے دوشہداء کونشان حیدرکس بات کے دیئے گئے؟۔اب ہمیں سوچنا پڑے گا کہ مزیدبے وقوف نہںبنیںگے۔اگراب بھی نہیں سوچاتوآئندہ آنیوالی نسلیں ہمیںگالیاں دیںگی ۔افراسیاب خٹک نے ٹھیک کہاکہ گلگت بلتستان بیوروکریشی کی چراگاہ ہے ۔یہاں بیوروکریسی نے بڑے گندپھیلائے ہیں اس وقت بھی عملاً بیوروکریسی حکومت کررہی ہے انہوں نے کہا کہ آئینی حقوق لینے کے لئے اب عملی جدوجہد کرنا پڑے گی۔سیمینارزاورکانفرنسزکے انعقاد سے کوئی فرق نہیں پڑے گا مزاق بہت ہوا ہے اب مزیدمذاق برداشت نہیں کریں گے۔ آئینی حقوق کے لئے پورے خطے کو جام کریں گے۔ایساالائنس بنائیں گے کہ سب دنگ رہ جائیں گے کتنی ستم ظریفی کی بات یہ ہے کہ چن چن کر چوروں کوگلگت بلتستان میںبھیجاجارہا ہے اور وسائل کوبے رحمانہ طریقے سے لوٹاجارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اب ہمیں خیرات نہیں آئینی حقوق چاہیں۔آئینی صوبہ نہ دیاگیا توصورت حال کی ذمہ داروفاقی جماعتیں ہوں گی۔حقیقت بات یہ ہے کہ مسئلہ کشمیرنے حل ہونا ہی نہیں ہے  مزید مسئلہ کی آڑمیںہمیں آئینی حقوق سے محروم نہ رکھاجائے۔70سال ہم  نے کشمیریوں کودیئے ہیں10سال کشمیری ہمیں کیوں نہیں دیتے ہیں؟۔ایسااتحادبنایاجائے گا کہ وفاق آئینی حقوق دینے پرمجبور ہوجائے گا۔ملک کی تمام سرحدیں ہمارے پاس ہیں ہم حفاظت نہ کرتے تو ملک کے دوسرے حصوں کے لوگ کیسی آرام سکون کی زندگی گزارتے۔انہوں نے کہا کہ مشیرخارجہ سرتاج عزیزغیرملکی ایجنٹ ہیں انہیں ہمارے حقوق سے کیاغرض ہے۔انہوں نے کبھی گلگت بلتستان کے حق میں بات نہیں کرنی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے لوگوں کی حب الوطنی پرشکست کیاجارہا ہے۔ ہمارے بہادرکوہ پیماہ نانگاہ پربت پرپاکستانی جھنڈے لہرارہے ہیں اب مذاق بہت ہوگیا جوانی لٹ گئی مزید برداشت نہیں کریںگے۔بچہ بچہ آئینی صوبہ مانگ رہا ہے اب کسی کی مجال نہیں کہ وہ آئینی صوبہ بنانے سے روکے۔

Facebook Comments
Share Button