تازہ ترین

Marquee xml rss feed

عمران خان اور بشریٰ مانیکا کی شادی، ایک روز بعد ہی علیحدگی ہو جانے کی پیشن گوئی بھی کر دی گئی-چیئرمین چکوال پریس کلب خواجہ بابر سلیم کی سی آر شمسی کوقومی روز نامہ سماء اسلام آباد کا ریزیڈنٹ ایڈیٹر مقرر ہونے پر مبارکباد-سعداحسن قاضی اسلامی جمعیت طلبہ حیدرآباد کے ناظم منتخب-تحصیل ہیڈ کوارٹر حضرو میں ہفتہ صحت میلہ کے حوالے سے کیمپ لگایا گیا،افتتاح انجینئر اعظم خان اور احسن خان نے کیا-ایم فل ڈگری پروگرامز 2018ء کے تحت داخلے کے لیے ٹیسٹ میں کامیاب امیدواروں کے انٹرویوز 26 فروری کو ہوں گے-ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر عمر جہانگیر کا ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال چکوال کا اچانک معائنہ،مریضوں کے مسائل دریافت کیے-اپنا چکوال اور شان پروڈکشن کی مشترکہ پیش کش مزاحیہ ڈارمہ عقل وڈی کے مج مکمل فروری کی شب اپنا چکوال چینل پر پیش کیا جائیگا-مقدمات کی تفتیش کے مد میں 55 لاکھ روپے جاری کردیئے گئے-پٹرولنگ پولیس دلیل پور نے کار میں غیر قانونی اور غیر معیاری سی این جی سلنڈر نصب کرنے پر ڈرائیور کوگرفتار کر لِیا-ڈاکٹر خادم حسین قریشی کا ٹنڈو الہیار ، ٹنڈو جام ، شاہ بھٹائی اسپتال لطیف آباد ، تعلقہ اسپتال قاسم آباد ، نوابشاہ اور ہالا میں ہیپاٹائٹس سینٹر ز کا دورہ

GB News

پاکستانی شناختی کارڈ اور کرنسی بھی واپس کریں گے اب مزیدوہ ظلم برداشت نہیں کریں گے،سیدمہدی شاہ

Share Button

سکردو (محمداسحاق جلال) پیپلزپارٹی کی مرکزی مجلس عاملہ کے رکن وسابق وزیراعلیٰ سیدمہدی شاہ نے اعلان کیا ہے کہ اگر2018ء کے الیکشن کے بعد پیپلزپارٹی کی حکومت اقتدار میں آکرآئینی صوبہ نہ بنایاتووہ پیپلز پارٹی اورسیاست چھوڑدیں گے۔پاکستانی شناختی کارڈ اور کرنسی بھی واپس کریں گے اب مزیدوہ ظلم برداشت نہیں کریں گے۔ اسلام آباد نیشنل پریس کلب میں سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جب آزادکشمیر کوسیٹ آپ دیا جارہاتھا تو ہم سے کوئی رائے نہیں مانگی گئی اور ہم سے پوچھے بغیر اس علاقے کوسیٹ آپ دیا گیا مگرہمیں آئینی صوبہ دینے کے لئے اجلاس آزادکشمیر میںبلایاجارہا ہے۔بتایاجائے کہ گلگت بلتستان کے آئینی حقوق کے مسئلے پر اجلاس آزادکشمیر میں منعقدکیوںکیاجارہا ہے؟۔40سال میں پارٹی کے لئے دئے ہیں پارٹی کے میرے اوپراحسانات ضرور ہیں مگرمیں نے بھی اپنی جوانی لٹادی ہے اگرآئندہ آئینی حقوق کے بغیرگزارہ کرنے کاکہاگیا تو پارٹی کے ساتھ نہیںرہوں گا۔ہاں میںہاں ملانے کے بجائے گھر بیٹھنے کو ترجیح دوں گا۔پارٹی کی ہاں میں ہاں ملاکر قوم کی گالیاں سننے کے لئے ہرگزتیارنہیںہوں۔اب ہم صوبہ لے کردم لیں گے۔صوبے بے کم ترکوئی چیزقبول نہیںکریں گے۔ہم پاکستانی نہیں ہیں تو ہمارے دوشہداء کونشان حیدرکس بات کے دیئے گئے؟۔اب ہمیں سوچنا پڑے گا کہ مزیدبے وقوف نہںبنیںگے۔اگراب بھی نہیں سوچاتوآئندہ آنیوالی نسلیں ہمیںگالیاں دیںگی ۔افراسیاب خٹک نے ٹھیک کہاکہ گلگت بلتستان بیوروکریشی کی چراگاہ ہے ۔یہاں بیوروکریسی نے بڑے گندپھیلائے ہیں اس وقت بھی عملاً بیوروکریسی حکومت کررہی ہے انہوں نے کہا کہ آئینی حقوق لینے کے لئے اب عملی جدوجہد کرنا پڑے گی۔سیمینارزاورکانفرنسزکے انعقاد سے کوئی فرق نہیں پڑے گا مزاق بہت ہوا ہے اب مزیدمذاق برداشت نہیں کریں گے۔ آئینی حقوق کے لئے پورے خطے کو جام کریں گے۔ایساالائنس بنائیں گے کہ سب دنگ رہ جائیں گے کتنی ستم ظریفی کی بات یہ ہے کہ چن چن کر چوروں کوگلگت بلتستان میںبھیجاجارہا ہے اور وسائل کوبے رحمانہ طریقے سے لوٹاجارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اب ہمیں خیرات نہیں آئینی حقوق چاہیں۔آئینی صوبہ نہ دیاگیا توصورت حال کی ذمہ داروفاقی جماعتیں ہوں گی۔حقیقت بات یہ ہے کہ مسئلہ کشمیرنے حل ہونا ہی نہیں ہے  مزید مسئلہ کی آڑمیںہمیں آئینی حقوق سے محروم نہ رکھاجائے۔70سال ہم  نے کشمیریوں کودیئے ہیں10سال کشمیری ہمیں کیوں نہیں دیتے ہیں؟۔ایسااتحادبنایاجائے گا کہ وفاق آئینی حقوق دینے پرمجبور ہوجائے گا۔ملک کی تمام سرحدیں ہمارے پاس ہیں ہم حفاظت نہ کرتے تو ملک کے دوسرے حصوں کے لوگ کیسی آرام سکون کی زندگی گزارتے۔انہوں نے کہا کہ مشیرخارجہ سرتاج عزیزغیرملکی ایجنٹ ہیں انہیں ہمارے حقوق سے کیاغرض ہے۔انہوں نے کبھی گلگت بلتستان کے حق میں بات نہیں کرنی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے لوگوں کی حب الوطنی پرشکست کیاجارہا ہے۔ ہمارے بہادرکوہ پیماہ نانگاہ پربت پرپاکستانی جھنڈے لہرارہے ہیں اب مذاق بہت ہوگیا جوانی لٹ گئی مزید برداشت نہیں کریںگے۔بچہ بچہ آئینی صوبہ مانگ رہا ہے اب کسی کی مجال نہیں کہ وہ آئینی صوبہ بنانے سے روکے۔

Facebook Comments
Share Button