تازہ ترین

Marquee xml rss feed

اںڈے برآمد ہونے کے بعد سیکیورٹی اہلکار چوکنے ہوگئے رانا ثنا اللہ نے کہا ہے کہ سیکیورٹی اہلکارہر بار ان سے پوچھتے ہیں کہ ان کے پاس انڈے تو نہیں ہیں-گرفتار رکن کو پنجاب اسمبلی میں لانے کیلئے شہبازشریف نے رولز میں ترمیم نہیں کی تھی‘ چودھری پرویزالٰہی سب سے زیادہ فلاحی کام ہمارے دور میں ہوئے‘باباجی خالد محمود مکی ... مزید-یکم جنوری سے تمام کمرشل ڈرائیورز کی سکریننگ اور مرحلہ وار خصوصی تربیتی کورسز کرانے کا فیصلہ 6ماہ میں ہر ڈرائیور کو اس عمل سے گزارا جائے ،آگاہی مہم جاری رکھی جائے‘عبدالعلیم ... مزید-آئی ایم ایف کی شرائط کے انتظار سے پہلے ہی معیشت کی بہتری کیلئے ازخود اقدامات کئے ‘ اسد عمر اصلاحات کے معاملے پر آئی ایم ایف اور حکومت کے درمیان اختلافات ہیں ،اقدامات ... مزید-سعودی عرب سے امداد حاصل کرنے پر پاکستان کو شرمندگی نہیں ہونی چاہیئے ہمیں شرم کرنے کا کہنے کی بجائے مغربی ملکوں کے رہنماوں کو شرم آنی چاہیے جو جمہوریت اور آزادی کی بات ... مزید-لندن میں پاکستانی تاجر کا کروڑوں کا کاروبار جل کر راکھ نسل پرستوں نے پاکستانی تاجر کی کروڑوں روپے مالیت کی گاڑیاں جلا ڈالیں-احتساب عدالت نے شوکت عزیز کیخلاف دائر ریفرنس میں شریک ملزم عارف علاؤالدین کو عدم حاضری کی بناء پر اشتہاری قرار دیدیا-جنگی حکمت عملی میں ہمیں ہائبرڈوار فئیر اور سائبر وار فئیر کے خلاف چوکنا رہنا ہے ،ْ نیول چیف ایڈمرل ظفر محمود عباسی جیو اسٹریٹجک حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے ہمیں اپنے قومی ... مزید-ْ پروٹوکول میں جو بات بتائی گئی اس میں کوئی بھی چیز یہاں موجود نہیں ،ْ چیف جسٹس ثاقب نثار-امریکہ نے پاکستان کو باعث تشویش ممالک پر عائد معاشی پابندیوں سے استثنیٰ دے دیا گذشتہ روز امریکہ نے پاکستان کو مذہبی آزادی کی خلاف ورزی کرنے والے ممالک کی فہرست میں ... مزید

GB News

سلامتی کونسل سے عالم اسلام کو کوئی امید نہیں رکھنی چاہئے، سراج الحق

Share Button

امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے حکومت کی طرف سے 11 اپریل کو سینیٹ میں پیش کیا گیا متنازع آرڈی نینس ” انسداد دہشتگردی ایکٹ میں ترمیمی آرڈی نینس نمبر 2018-2 ء جو کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی طرف سے پاکستان میں جماعت الدعوہ پر پابندی سے متعلق ہے کے خلاف نامنظوری کا نوٹس سینیٹ میں جمع کرادیا ۔ نوٹس پر ان کے ساتھ سینیٹر مشتاق احمد خان نے بھی دستخط کیے ہیں ۔بعد ازاں پارلیمنٹ ہائوس کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ سلامتی کونسل سے عالم اسلام کو کوئی امید نہیں رکھنی چاہیے ۔یہ کفن چوروں کا عالمی ٹولہ اور امریکہ کی کٹھ پتلی ہے ، جبکہ حکومت آرڈی نینس کے ذریعے قانون میں ترمیم کے ذریعے اپنے ملک کو اقوام متحدہ کی غلامی میں دے رہی ہے ۔ آرڈی نینس میں ترمیم کے حکومت نے جو اغراض و مقاصد بتائے ہیں ، وہ اپنی عدالتوں پر عدم اعتماد کا اظہار ہے ۔ اپنی عدالتوں کو سلامتی کونسل کا پابند بنانا عدالتوں کی بے توقیری ہے ۔ انہوںنے کہاکہ وزیر صاحب کہتے ہیں کہ عدالتیں ثبوت مانگتی ہیں اور بعض اوقات ہمارے پاس ثبوت نہیں ہوتے جس کی وجہ سے عدالتیں ملزموں کو رہا کردیتی ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ بغیر ثبوت کے کونسا قانون اجازت دیتاہے کہ لوگو ں کو پابند سلاسل کردیاجائے۔

Facebook Comments
Share Button