تازہ ترین

Marquee xml rss feed

وزیراعلیٰ پنجاب کا گجرات میں طالبات پر تیزاب پھینکنے کے واقعہ کا نوٹس،ملزمان کی گرفتاری کا حکم-وزیراعلیٰ پنجاب سے دانش سکولز سے فارغ التحصیل ہوکراعلی تعلیمی اداروں میںتعلیم حاصل کرنے والے طلباء و طالبات کی ملاقات دانش سکول پر تنقید کرنے والے سیاسی لیڈروںنے اپنے ... مزید-سپریم کورٹ کی سفارش پر قائم کمیٹی نے سندھ اور بلوچستان کے اکیس غیر معیاری نجی اور سرکاری لاء کالجز بند کرنے کی سفارش کر دی-چیف جسٹس نے پنجاب میں 600 سے زائد بچوں کے اغوا کی میڈیا رپورٹس کا نوٹس لے لیا-وزیراعلیٰ پنجاب کا پیپلز پارٹی کے رہنما جہانگیر بدر مرحوم کے بھائی کے انتقال پر اظہار تعزیت-وزیراعلیٰ پنجاب سے سندھ کے شیرازی برادران کی ملاقات شیرازی برادران کا عوام کی فلاح و بہبود اور ترقی کیلئے بے مثال اقدامات پر شہبازشریف کو خراج تحسین عوام کی خدمت کا ... مزید-فیس بک کے لوگو کا رنگ نیلا کیوں ہے،ایسا انکشاف جو آپ کے وہم و گمان میں بھی نہ ہو گا-لاہور، ملک کے وزیر اعظم عمران خان ہونگے،اعجازاحمد چوہدری نواز شریف اور زرداری ٹولہ نے اقتدار میں آ کر صرف عوام کا خون چونسا ہے اور اپنی جیبیں بھری ہے ملک کے تباہی کے ... مزید-پشاور، بس ریپڈٹرانزٹ منصوبے پر صوبائی کابینہ کو بریفننگ واحد منصوبہ ہے جو قلیل عرصے اور کم لاگت سے مکمل ہوگا،پرویز خٹک مجموعی لاگت میں بسوں کی خریداری، اراضی، کمرشل ... مزید-عوام کی عدم دلچسپی کے باعث سندھ گیمز کی افتتاحی تقریب نا کامی کا شکار ہوئی ہے ، سید صفدر حسین شاہ

GB News

تم نااہل کرتے رہو ہم نے نواز شریف کو تاحیات اپنا قائد بنالیا ہے،حفیظ الرحمن

Share Button

گلگت (پ ر)وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان و صدر مسلم لیگ ن گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ تم نااہل کرتے رہو ہم نے نواز شریف کو تاحیات اپنا قائد بنالیا ہے۔ خنجراب سے گوادر تک جوڑنے والے اور تعمیر و ترقی کے منصبوں کا جال بچھانے والے کو بیٹے سے تنخواہ نہ لینے پر نااہل کیاجاتا ہے لیکن ملک کو لوٹنے والوں کو کوئی سزا نہیں دی جاتی۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان و صدر مسلم لیگ ن گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ ملک کو ایٹمی طاقت بنانے والے سب سے مقبول ترین سیاسی لیڈر محمد نواز شریفکو بیٹے سے تنخواہ نہ لینے کی بنیاد پر وزیر اعظم کے عہدے سے نااہل کیا گیا اور آج پھر آرٹیکل62ٹو ایف کے تحت پاکستان کاتیسری مرتبہ منتخب وزیر اعظم کو تاحیات نااہل کیا گیا۔ اس فیصلے نے پاکستان کے مقبول ترین سیاسی لیڈر کو نااہل کیا اور مقدمہ اب بھی عدالتوں میں زیر سماعت ہے۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ جو سماعت مکمل ہی نہیں ہوا اس پر منتخب وزیر اعظم کو تاحیات نااہل کردیا گیا یہ وہی مذاق ہے جو پاکستان میں 17عوامی منتخب وزرائے اعظم کے ساتھ ہوتا چلا آرہاہے۔ جس وزیر اعظم کو پاکستان کے عوام نے منتخب کیا اس کی نااہلی کا فیصلہ عوام کرے گی۔ اس طرح کا جانبدارانہ فیصلے پاکستان کے عوام کبھی تسلیم نہیں کریں گے ۔پاکستان کے عوام اور مسلم لیگ ن کے شیروں نے سب سے مقبول ترین سیاسی لیڈر محمد نواز شریف کو تاحیات اپنا رہنما اور قائد بنایا ہے جس کیلئے کسی عدالتی فیصلے کی ضرورت نہیں۔عوام کے مقبول ترین رہنما کو تعصبانہ اور جانبدارانہ فیصلوں کے ذریعے عوام سے کبھی دور نہیں کیا جاسکتا ہے۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ ملک کے سب سے مقبول ترین سیاسی لیڈر اور تین مرتبہ منتخب ہونے والے وزیر اعظم کیخلاف جب کوئی ثبوت نہیں ملتا ہے تو نظریہ ضرورت کا سہارا لیاجاتا ہے۔ آج کے فیصلے سے ایوب خان کی یاد تازہ ہوتی ہے جس نے سیاستدانوں کیخلاف فیصلے دیئے جب بھی سیاستدانوں کو انتقام کا نشانہ بناتے ہوئے من پسند فیصلے کرائے گئے پاکستان کے عوام نے ان فیصلوں کو رد کیا ہے۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ اس قسم کے فیصلوں سے ملک کو نقصان ہونے کا خدشہ ہے۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ جس شخص نے اپنی زندگی ملک کی خدمت اور ترقی کیلئے صرف کی ہو ملک کو ایٹمی طاقت بنایا ہے اور ملک سے دہشتگردی کا خاتمہ کرے اس عظیم اور مقبول ترین سیاسی لیڈر کیخلاف جھوٹے مقدمات میں تاحیات نااہلی کے فیصلے عوام کبھی تسلیم نہیں کریں گے۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا کہ یہی وجہ ہے کہ ہمارے قائد محمد نواز شریف کی مقبولیت روز بروز بڑھ رہی ہے عدالتیں ہمارے قائد کیخلاف ایک روپے کا کرپشن ثابت نہیں کرسکے اپنے بیٹے سے تنخواہ لینا بھی ثابت نہیں کرسکے ہیں ۔ بلوچستان سے جنوبی پنجاب تک جمہوریت کیخلاف جو کھیل کھیلا جارہاہے وہ ملک کی ترقی کے مفاد میں نہیں۔ قومی جماعتوں کو کمزور کرنے کی سازشوں کا ملک اورپاکستان کے عوام متحمل نہیں ہوسکتے۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہاکہ قومی سیاسی جماعتوں کو کمزور کرنے اورعلاقائی جماعتوں کو فروغ دینے کیلئے کھیل کھیلا جارہا ہے جس کے بھیانک نتائج نکل سکتے ہیں۔ طاقت کے بل بوتے پر اقتدار میں آنے والوں کا ہمیشہ عدالتوں نے ساتھ دیا ہے۔ ڈکٹیٹرز کے فیصلوں کو تحفظ دیا جاتا ہے لیکن ملک کے سب سے مقبول ترین سیاسی لیڈر کو بیٹے سے تنخواہ نہ لینے پر نااہل کیا جاتا ہے۔12اکتوبر کو بھی اس طرح کے متنازعہ فیصلوں کے ذریعے محمد نواز شریف کو ملک کی سیاست سے الگ رکھنے کی سازشیں کی گئی تھی لیکن پاکستان کے عوام نے پھر سے ان کو اپنا وزیر اعظم بنادیا تھا۔ آئندہ بھی ملک پاکستان کا وزیر اعظم نواز شریف ہوگا یا نواز شریف کا ہوگا۔

Facebook Comments
Share Button