تازہ ترین

Marquee xml rss feed

جہانگیر ترین نے تحریک انصاف کیلئے ایک اور مشکل ترین کام کر دکھایا بلوچستان عوامی پارٹی کے تحفظات دور کرکے قومی اسمبلی میں اسپیکر، ڈپٹی اسپیکر اور وزیراعظم کے امیدوار ... مزید-وطن عزیز کے استحکام اور بقاء کی خاطر اپنے ذاتی مفادات کو قربان کرنا ہو گا، شیخ آفتاب احمد-حکومت سازی، عمران خان کی زیر صدارت اہم امور پر مشاورت-نامزد گورنر سندھ عمران اسماعیل کو مزارِ قائد میں داخلے سے روکنے کی شدید الفاظ میں مذمت پی پی سے بلاول ہائوس کی حفاظتی دیوار گرانے کی بات کرنے کا بیان دیا تھا، بلاول ہائوس ... مزید-عمران اسماعیل سے گورنرشپ کاعہدہ ہضم نہیں ہورہااگر انہوں نے بدزبانی بند نہیں کی تواحتجاج کریں گے، نثار احمد کھوڑو-انصاف اور مساوات کے رہنما اُصولوں پر گامزن ہوکر ہی پاکستان کو دنیا کا ماڈل بنایا جاسکتا ہے ،سربراہ پاکستان سنی تحریک موجودہ نئی حکومت سے اُمید ہے کہ وہ ملک وقوم کی ترقی ... مزید-صوبائی حکومت انفرا اسٹرکچر، صحت و تعلیم پر خصوصی توجہ دے گی، مراد علی شاہ-پاکستان کی بنیادیں استوار کرنے کیلئے برصغیر کے مسلمانوں نے لاتعداد اور بے مثال قربانیاں دی ہیں، ملک خرم شہزاد-نومنتخب ممبر قومی اسمبلی کو شہری پر تشدد کرنا مہنگا پڑ گیا تحریک انصاف نے رکن سندھ اسمبلی عمران شاہ کو شوکاز نوٹس جاری کردی-لوڈشیڈنگ کے دعوے دھرے رہ گئے ․ پارلیمنٹ لاجز میں بجلی کی طویل بندش ، 282 کے قریب ارکان اسمبلی کو شدید مشکلات کا سامنا ، آئیسکو معقول وجہ بتانے سے قاصر رہا

GB News

گلگت بلتستان میں انتظامی اصلاحات کیلئے مقتدرحلقوں میں مشاورت شروع

Share Button

اسلام آباد(رپورٹ، غلام عباس)گلگت بلتستان میں انتظامی اصلاحات کیلئے مقتدرحلقوں میں مشاورت شروع ہوگئی ہے۔ذمہ دارذرائع کے مطابق حال ہی میں گلگت بلتستان کی ایک درجن کے قریب اہم شخصیات جن میں سابق افسران،سیاسی ،سماجی اورمذہبی شخصیات شامل ہیں۔کے ساتھ اہم میٹنگ ہوئی جس میں گلگت بلتستان کی آئینی حیثیت سے متعلق عوام کے تحفظات اورمطالبات پرسنجیدگی سے غور کیاگیا۔ذرائع کے مطابق ن لیگ کی حکومت کی جانب سے تیارکردہ۔انتظامی اصلاحات کاڈرافٹ اخبارات اورمختلف ذرائع سے پبلک ہونے کے بعد عوام کی جانب سے شدیدرد عمل آیا اور اس مجوزہ ڈرافٹ کومستردکردیاگیا جس کا مقتدرحلقوں نے سنجیدگی سے نوٹس لیا اور گلگت بلتستان کے اہم رہنمائوں سے مشاورت کی گئی۔دوسری جانب ڈرافٹ پرغور کے لئے وزیراعظم کی زیرصدارت اجلاس جو14مئی کوہونا تھا اب وہ21مئی کو ہوگا۔ ذرائع کے مطابق مقتدر حلقوں کے ساتھ اجلاس میں گلگت بلتستان کے اہم رہنمائوں سے جامع تجاویزطلب کی گئیں جس پر بتایاگیا کہ سرتاج عزیز کی سربراہی میںقائم پہلی کمیٹی کی جانب سے تیارکردہ سفارشات کسی حد تک معقول تھیں اور عوام کی جانب سے اس پرمثبت رائے کااظہار کیاگیا تھا تاہم بعدمیں بننے والی دوکمیٹیوں اوراس کے نتیجے میں تیار ہونے والے ڈرافٹ پرعوام کو شدید تشویش ہے کیونکہ موجودہ درافٹ کے مندرجات سرتاج عزیز کمیٹی والی سفارشات سے بالکل الگ ہیں اور اس میں گلگت بلتستان کے بجائے وزیراعظم کوبااختیار بنایاگیا ہے ضرورت اس امر کی ہے کہ سرتاج عزیز کمیٹی والی سفارشات کے تحت عوام کو بہترسیٹ اپ دیاجاسکتا ہے اور یہ گلگت بلتستان کے لوگوں کوکسی حد تک قابل قبول بھی ہوگا۔اجلاس میں گلگت بلتستان کے سٹیک ہولڈرز سے تفصیلی تجاویز پر تبادلہ خیال کیا گیا اور اپ مقتدر حلقوں کی جانب سے ایک جامع اورقابل قبول سیٹ اپ کے لئے کام کاآغازکردیاگیا ہے۔ذرائع کے مطابق انتظامی اصلاحات پرنئے سرے سے غور کرنے کی وجہ سے موجودہ حکومت کے دورمیں ہی مکمل ہونے کاامکان کم نظرآرہا ہے اس لئے قوی امکان یہی ہے کہ اگلی حکومت میں ہی باقاعدہ سیٹ اپ کااعلان ہوگا۔ کیونکہ ن لیگ کی حکومت کایہ آخری مہینہ ہے اور اس میں بھی صرف15دن باقی ہیں نگران حکومت کامینڈیٹ چونکہ صرف انتخابات کے انعقاد تک ہے اس لئے الیکشن کے بعد اگلی حکومت ہی سیٹ اپ کاباقاعدہ اعلان کرے گی اس سے پہلے گلگت بلتستان کے تمام سٹیک ہولڈرز سے مشاورت کے ذریعے انتظامی اصلاحات کے ڈرافٹ کوفائنل کیاجائے گا۔ ذرائع کے مطابق اعلیٰ حلقوں کی کوشش ہے کہ عوام کے تحفظات کاہرممکن ازالہ ہواورایک جامع سیٹ اپ گلگت بلتستان کو دیاجائے۔ممکن ہے کہ انتظامی اصلاحات کے ڈرافٹ کوقانون سازاسمبلی میں ان کیمرہ یاآن کیمرہ بحث کے لئے پیش کیاجائے کیونکہ مقتدرحلقوں کے ساتھ میٹنگ میں گلگت بلتستان کے نمائندوں نے تجویز دی تھی کہ اگلے ڈرافٹ کے حوالے سے گلگت بلتستان کے منتخب ممبران کو بھی اعتماد میں لیاجائے اس سے عوامی سطح پر پائے جانے والے تحفظات کاابھی ازالہ ہوسکے گا اوراگلے سیٹ اپ کے بارے میں عوام بھی مطمئن ہوں گے۔

 

Facebook Comments
Share Button