تازہ ترین

Marquee xml rss feed

حکومت اور تحریک لبیک پاکستان میں بیک ڈور رابطے تحریک لبیک کے 322 رہنماؤں اور کارکنان کو رہا کر دیا گیا-سپریم کورٹ کا علیمہ خان کو 29.4 ملین روپے جمع کروانے کا حکم-چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کا تھر کا دورہ چیف جسٹس کے دورے کے دوران کئی اہم انکشافات سامنے آ گئے-خواجہ سعد رفیق ریلوے خسارہ کیس کی سماعت کے لیے سپریم کورٹ میں پیشی سابق وزیر ریلوے کو نیب اور پولیس کی تحویل میں عدالت میں لایا گیا-سپریم کورٹ نے پاکپتن اراضی کیس میں جے آئی ٹی تشکیل دے دی تین رکنی جے آئی ٹی کے سربراہ خالد داد لک ہوں گے جب کہ تحقیقاتی ٹیم میں آئی ایس آئی اور آئی بی کا ایک ایک رکن بھی شامل ... مزید-لاہور میں پنجاب اسمبلی کی خالی نشست پی پی 168 پر ضمنی انتخاب‘نون لیگ اور تحریک انصاف میں مقابلہ پولنگ کا آغاز صبح 8 بجے سے 5 بجے تک جاری رہے گی-نواز شریف کے خلاف العزیزیہ ریفرنس کی سماعت‘فیصلہ محفوظ کیے جانے کا امکان نیب پراسیکیوٹر سردار مظفر عباسی جواب الجواب دے رہے ہیں‘حسن، حسین کی پیش دستاویزات کو انڈورس ... مزید-صدر مملکت عارف علوی کی عمرہ کی ادائیگی صدر مملکت کے لیے خانہ کعبہ کا دروازہ بھی کھولا گیا-گوگل پر احمق (Idiot) لکھیں صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی تصاویردیکھیں کمپنی نے کانگریس کی کمیٹی کے سامنے پیش ہوکر مبینہ الزام کو مسترد کردیا-آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوران ملک کے شمالی علاقوں میں موسم شدید سرد اور خشک رہے گا، محکمہ موسمیات

GB News

پی آئی اے کے کرایوں میں بے محابا اضافہ

Share Button

پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائنز (پی آئی اے) نے سکردو اور اسلام آباد کے مابین ہوائی جہاز کے کرایوں میں 100فیصد تک اضافہ کر کے صوبائی اسمبلی کی قراردادوں کی نفی کر دی’صوبائی اسمبلی نے ڈیڑھ ماہ قبل متفقہ طور پر قرارداد پاس کر کے پی آئی اے حکام سے مطالبہ کیا تھا کہ گلگت وسکردو کیلئے کرایوں میں خصوصی رعایت دی جائے کیونکہ مسافت کے حساب سے کرایے بہت زیادہ ہیں کرایے زیادہ ہونے کے باعث سیاحت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچ رہا ہے قرارداد میں پی آئی اے حکام سے فوری طور پر کرایوں میں کمی کر کے سیاحوں اور عام مسافروں کی مشکلات دور کرنے کی اپیل کی گئی تھی لیکن پی آئی اے حکام نے اسلام آباد اور سکردو کے درمیان کرایوں میں 80سے 100فیصد تک کا اضافہ کر کے گلگت بلتستان کے مسافروں اور ملکی وغیرملکی سیاحوں کیلئے نئی مشکلات پیدا کر دی ہیں جس کے باعث مسافروں وسیاحوں میں شدید غم و غصے کی لہر دوڑ گئی ہے’اسلام آباد سکردو روٹ پر پی آئی اے کے کرایوں میں اضافہ بلاشبہ بدترین زیادتی کے مترادف ہے’ظلم یہ ہے کہ یہ کرایے ملک بھر میں دیگر تمام روٹس سے زیادہ ہیں یہی وجہ ہے کہ اس روٹ کے مسافراس کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں’یوں محسوس ہوتا ہے کہ پی آئی اے اپناتمام تر خسارہ اسی روٹ سے پورا کرنا چاہتی ہے نہ جانے اس ادارے کے کارپردازان کو گلگت بلتستان سے کیا کد ہے کہ انہوں نے کرایوں کی شرح میں بے محابا اضافہ کر دیا ہے’یہ روٹ ایسا بھی نہیں کہ ادارے کو خسارے کا سامنا ہو اس کے باوجود اس فاصلے کے دیگر روٹس کے مقابلے میں بے تحاشا کرایہ ناقابل فہم ہے ہونا تو یہ چاہیے کہ اس علاقے میں سیاحت کے حوالے سے سیاحوں کو ریلیف دینے کیلئے کرایوں میں سبسڈی دی جاتی تاکہ زیادہ سے زیادہ سیاح یہاں کا رخ کرتے اور قیمتی زرمبادلہ حاصل ہوتا لیکن پی آئی اے نے اپنے تئیں سیاحت کو نقصان پہنچانے کے لیے یہ قدم اٹھایا ہے اور اس پر لوگوں کے احتجاج کا بھی کوئی اثر نہیں ہو رہا’ستم ظریفی یہ ہے کہ یہ ادارہ قانون ساز اسمبلی کی قرارداد کو بھی خاطر میں لانے کیلئے آمادہ نہیں’کرایوں میں اسّی سے سو فیصد اضافہ فوری طور پر واپس لیا جانا چاہیے اس ضمن میں صوبائی حکومت پر بھی لازم ہے کہ وہ پی آئی اے حکام اور نگران حکومت سے گفت وشنید کے علاوہ اس ناانصافی پر کھل کر احتجاج کرے اور کرایوں میں اضافے کی بلاتاخیر واپسی کوممکن بنائے۔

Facebook Comments
Share Button