تازہ ترین

Marquee xml rss feed

حکومت اور تحریک لبیک پاکستان میں بیک ڈور رابطے تحریک لبیک کے 322 رہنماؤں اور کارکنان کو رہا کر دیا گیا-سپریم کورٹ کا علیمہ خان کو 29.4 ملین روپے جمع کروانے کا حکم-چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کا تھر کا دورہ چیف جسٹس کے دورے کے دوران کئی اہم انکشافات سامنے آ گئے-خواجہ سعد رفیق ریلوے خسارہ کیس کی سماعت کے لیے سپریم کورٹ میں پیشی سابق وزیر ریلوے کو نیب اور پولیس کی تحویل میں عدالت میں لایا گیا-سپریم کورٹ نے پاکپتن اراضی کیس میں جے آئی ٹی تشکیل دے دی تین رکنی جے آئی ٹی کے سربراہ خالد داد لک ہوں گے جب کہ تحقیقاتی ٹیم میں آئی ایس آئی اور آئی بی کا ایک ایک رکن بھی شامل ... مزید-لاہور میں پنجاب اسمبلی کی خالی نشست پی پی 168 پر ضمنی انتخاب‘نون لیگ اور تحریک انصاف میں مقابلہ پولنگ کا آغاز صبح 8 بجے سے 5 بجے تک جاری رہے گی-نواز شریف کے خلاف العزیزیہ ریفرنس کی سماعت‘فیصلہ محفوظ کیے جانے کا امکان نیب پراسیکیوٹر سردار مظفر عباسی جواب الجواب دے رہے ہیں‘حسن، حسین کی پیش دستاویزات کو انڈورس ... مزید-صدر مملکت عارف علوی کی عمرہ کی ادائیگی صدر مملکت کے لیے خانہ کعبہ کا دروازہ بھی کھولا گیا-گوگل پر احمق (Idiot) لکھیں صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی تصاویردیکھیں کمپنی نے کانگریس کی کمیٹی کے سامنے پیش ہوکر مبینہ الزام کو مسترد کردیا-آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوران ملک کے شمالی علاقوں میں موسم شدید سرد اور خشک رہے گا، محکمہ موسمیات

GB News

سیاسی حالات کے اونٹ کی نئی کروٹ

Share Button

مرکز اور چاروں صوبوں میں اسمبلیوں کی تحلیل کے بعد نگران حکومتیں اپنی ذمہ داریوں کا آغاز کر چکی ہیں ابتدا میں یہ افواہیں گرم تھیں کہ کچھ حلقہ بندیوں کو ہائیکورٹ کی طرف سے کالعدم قرار دینے اور کاغذات نامزدگی کے فارم کو مسترد کردینے سے انتخابات کچھ عرصہ کیلئے ملتوی ہوسکتے ہیں لیکن سپریم کورٹ نے ہائیکورٹ کے فیصلوں کو مسترد کرتے ہوئے خوبصورتی کے ساتھ مسائل کے حل نکالے جن کے مطابق الیکشن کمیشن کے طبع شدہ کاغذات نامزدگی کے ساتھ ہی ہر امیدوار کو اپنا بیان حلفی جمع کرانا پڑے گا جس میں زیر کفالت افراد سے لے کر بنک کھاتوں اور جائیدادوں کی تمام ترتفصیلات جمع ہوں گی ان احکامات کے ساتھ ہی سپریم کورٹ کے چیف جسٹس اور چیف الیکشن کمشنر کی طرف سے قوم کو مسلسل یہ یقین دہانی کرائی گئی کہ انتخابات طے شدہ وقت پرہی منعقد ہوں گے اور اس تاریخ میں کوئی ردو بدل نہیں ہوگا۔اس وقت الیکشن کمیشن سے لے کر نگران حکومت تک عدلیہ سے وابستہ شخصیات ہی کی بالادستی ہے نگران وزیر اعظم جسٹس (ر) ناصر الملک عدلیہ کی ایک ریٹائرڈ و نیک نام شخصیت ہیں’چیف الیکشن کمشنر سردار رضا بھی عدلیہ کے سابق جج ہیں جبکہ سپریم کورٹ کے چیف جسٹس میاں ثاقب نثار بھی غیر جانبدارانہ وشفاف انتخابات اور ملک کو کرپشن سے پاک کرنے کا عزم رکھتے ہیں نیب کے چیئرمین کا تعلق بھی عدلیہ سے ہے یہ عدلیہ سے ریٹائرڈ باصلاحیت اور نیک نام شخصیت ہیں دوسرے لفظوں میں اگر یہ کہا جائے تو غلط نہ ہوگا کہ سول میں عدلیہ سے وابستہ اہم شخصیات اس وقت ملک میں غیر معمولی طور پر طاقتور ہیں اور ارباب سیاست سے وابستہ تمام شخصیات ایوان اقتدار سے باہر ہیں گویا اس دور کو عدلیہ کے دور سے تعبیر کیا جاسکتا ہے انتخابات کے انعقاد میں کتنی شفافیت ہوگی اس کے کیا اثرات ہوں گے اس کے بارے میں 25جولائی کے بعد ہی معلوم ہوسکے گا۔نیب کی انکوائری کی زد میں کم و بیش تمام ہی سیاسی جماعتوں سے وابستہ افراد آئے ہیں اگر 25جولائی سے قبل انکوائریوں کے نتیجے میں ٹھوس ثبوت سامنے نہ آسکے تو انہیں انتخابات میں شرکت سے نہیں روکا جاسکے گا لیکن اگر نیب بدعنوانیوں کے ٹھوس ثبوت حاصل کرنے میں کامیاب ہوگیا پھر بہت سی اہم شخصیات الیکشن سے باہر ہوجائیں گی۔تحریک انصاف میں شمولیت کا سلسلہ جاری ہے ظفراللہ جمالی کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ وہ عید کے بعد شمولیت اختیار کریں گے ادھر احتساب عدالت کے جج نے نواز شریف اور مریم نواز کی بیرون ملک جانے کیلئے حاضری سے استثنےٰ کی درخواست مسترد کردی ہے جس کا یہ مطلب ہوا کہ عید سے قبل تک جتنی بھی سماعتیں ہوں گی ان میں دونوں کی حاضری لازم ہوگی بعض حلقوں کے نزدیک ان کے خلاف کیسز کے فیصلے عید سے قبل متوقع ہیں بعض قانونی حلقوں کے مطابق یہ فیصلے جون کے آخری ہفتے میں متوقع ہیں ۔وفاقی دارالحکومت کے حلقوں نے سابق صدر پرویز مشرف کی وطن واپسی کے سلسلے میں سپریم کورٹ کی پیشکش کو اہم اور دلچسپ قرار دیا ہے سپریم کورٹ نے انہیں 13جون کو لاہور رجسٹری میں طلب کیا ہے اور وطن واپسی پر انہیں گرفتار نہ کرنے کا حکم دیا ہے سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے پرویز مشرف کی تاحیات نااہلی کے خلاف دائر اپیل کی سماعت کے دوران عدالت نے پرویز مشرف کو کاغذات نامزدگی جمع کرانے کی اجازت دے کر انہیں 13جون کو لاہور طلب کرلیا چیف جسٹس نے کہا کہ پرویز مشرف 13جون کو عدالت میں پیش ہوجائیں انہیں گرفتار نہیں کیا جائے گا ان کی ذاتی حیثیت میں پیشی کے بعد نااہلی کے معاملے کو دیکھا جائے گا پرویز مشرف اگر سپریم کورٹ کی اس پیشکش سے فائدہ اٹھاتے ہیں تو ظاہر ہے ان کی بعض مشکلات دور ہوجائیں گی لیکن اس کے باوجود کچھ مشکلات انہیں دلدل میں لے جائیں گی پنجاب کے معاملے میں پیپلز پارٹی کا اسے فتح کرنے کا جوش و خروش تھم گیا ہے لیکن باخبر حلقے لاہور میں نجم سیٹھی کی رہائش گاہ پر آصف زرداری اور نواز شریف کی ملاقات کو بے حد اہمیت دے رہے ہیں ابھی تک کسی طرف سے اس ملاقات کی تردید نہیں کی گئی مبصرین کے مطابق دونوں لیڈروں کو عمران خان کے رویوں نے اکٹھا ہونے پر مجبور کیا ہے عین ممکن ہے کہ اس ملاقات کے نتیجے میں پنجاب کے اندر مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی ایک دوسرے سے تعاون کرنے پر آمادہ ہوجائیں بلوچستان میں سینیٹ انتخابات کے حوالے سے پیپلز پارٹی اور تحریک انصاف میں جو قربت پیدا ہوئی تھی اب وہ دم توڑ چکی ہے البتہ آصف زرداری نے اس سے یہ مقصد حاصل کیا ہے کہ اپنی پارٹی کیلئے ڈپٹی چیئرمین کے عہدے کیلئے پی ٹی آئی سے ووٹ حاصل کرکے کامیابی حاصل کی ہے پی ٹی آئی سے دوری نے پیپلز پارٹی کو مسلم لیگ (ن) کے قریب جانے پر مجبور کیا ہے۔ بہرحال اس بار حالات کا اونٹ جس کروٹ بیٹھے گا اس کے بارے میں عوام کو واضح دکھائی دے رہا ہے اور وہ یہ سوچنے پر مجبور ہیں کہ حکومتیں عوام کے ووٹوں سے نہیں کہیں اور تشکیل پاتی ہیں۔

Facebook Comments
Share Button