تازہ ترین

Marquee xml rss feed

پی ٹی اے نے پرانے موبائلوں کی خرید و فروخت پر ٹیکس لگا دیا پاکستان ٹیلی کمیونیشن اتھارٹی نے تاجروں کو پابند کیا ہے کہ پرانے موبائل بیچنے سے پہلے انہیں اس پر ٹیکس ادا کرنا ... مزید-آئی جی سندھ نے شہری کے پولیس کیساتھ نامناسب رویے کا نوٹس لے لیا-نواز شریف کی ضمانت پر اظہار تشکر کی قرارداد پنجاب اسمبلی میں جمع کروا دی گئی-عدالتی حکم پر من و عن عمل درآمد کیا جائے گا، ڈاکٹر شہباز گل مریم نواز کی درخواست پر کارڈیالوجی سینٹر جیل کے اندر بنایا گیا تھا ۔ کارڈیالوجی سینٹر میں 21 ڈاکٹرزاور 21 ٹیکنیشن ... مزید-نواز شریف کو ان کی ضمانت پر رہائی کے عدالتی حکم کی اطلاع جیل میں دی گئی-شکر ہے عدالت نے نواز شریف کو باہر جانے کی اجازت نہیں دی، وزیر اعظم لندن میں سیل لگی ہوئی تھی اور نواز شریف وہاں شاپنگ کرنے کے لیے مچل رہے تھے، عمران خان-تاریخی شاہی قلعہ میں واقعہ شیش محل کی سیاحت کے لئے سیاحوں پر 100 روپے مالیت کا ٹکٹ لاگو کر دیا گیا-لاہورہائی کورٹ نے اپوزیشن لیڈر شہبازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم دے دیا-اللہ تعالیٰ کا شکر ہے نواز شریف کو رہائی ملی ،عدالتی فیصلے کو سراہتے ہیں،شہباز شریف-وفاقی جامعہ اردو کراچی میں طلباء گروپوں کے مابین تصادم، کھڑکیاں ،دروازے توڑ دیے گئے انتظامیہ جھگڑا رکوانے میں ناکام ، پولیس اور رینجرز طلب کر لی گئی

GB News

سیاسی حالات کے اونٹ کی نئی کروٹ

Share Button

مرکز اور چاروں صوبوں میں اسمبلیوں کی تحلیل کے بعد نگران حکومتیں اپنی ذمہ داریوں کا آغاز کر چکی ہیں ابتدا میں یہ افواہیں گرم تھیں کہ کچھ حلقہ بندیوں کو ہائیکورٹ کی طرف سے کالعدم قرار دینے اور کاغذات نامزدگی کے فارم کو مسترد کردینے سے انتخابات کچھ عرصہ کیلئے ملتوی ہوسکتے ہیں لیکن سپریم کورٹ نے ہائیکورٹ کے فیصلوں کو مسترد کرتے ہوئے خوبصورتی کے ساتھ مسائل کے حل نکالے جن کے مطابق الیکشن کمیشن کے طبع شدہ کاغذات نامزدگی کے ساتھ ہی ہر امیدوار کو اپنا بیان حلفی جمع کرانا پڑے گا جس میں زیر کفالت افراد سے لے کر بنک کھاتوں اور جائیدادوں کی تمام ترتفصیلات جمع ہوں گی ان احکامات کے ساتھ ہی سپریم کورٹ کے چیف جسٹس اور چیف الیکشن کمشنر کی طرف سے قوم کو مسلسل یہ یقین دہانی کرائی گئی کہ انتخابات طے شدہ وقت پرہی منعقد ہوں گے اور اس تاریخ میں کوئی ردو بدل نہیں ہوگا۔اس وقت الیکشن کمیشن سے لے کر نگران حکومت تک عدلیہ سے وابستہ شخصیات ہی کی بالادستی ہے نگران وزیر اعظم جسٹس (ر) ناصر الملک عدلیہ کی ایک ریٹائرڈ و نیک نام شخصیت ہیں’چیف الیکشن کمشنر سردار رضا بھی عدلیہ کے سابق جج ہیں جبکہ سپریم کورٹ کے چیف جسٹس میاں ثاقب نثار بھی غیر جانبدارانہ وشفاف انتخابات اور ملک کو کرپشن سے پاک کرنے کا عزم رکھتے ہیں نیب کے چیئرمین کا تعلق بھی عدلیہ سے ہے یہ عدلیہ سے ریٹائرڈ باصلاحیت اور نیک نام شخصیت ہیں دوسرے لفظوں میں اگر یہ کہا جائے تو غلط نہ ہوگا کہ سول میں عدلیہ سے وابستہ اہم شخصیات اس وقت ملک میں غیر معمولی طور پر طاقتور ہیں اور ارباب سیاست سے وابستہ تمام شخصیات ایوان اقتدار سے باہر ہیں گویا اس دور کو عدلیہ کے دور سے تعبیر کیا جاسکتا ہے انتخابات کے انعقاد میں کتنی شفافیت ہوگی اس کے کیا اثرات ہوں گے اس کے بارے میں 25جولائی کے بعد ہی معلوم ہوسکے گا۔نیب کی انکوائری کی زد میں کم و بیش تمام ہی سیاسی جماعتوں سے وابستہ افراد آئے ہیں اگر 25جولائی سے قبل انکوائریوں کے نتیجے میں ٹھوس ثبوت سامنے نہ آسکے تو انہیں انتخابات میں شرکت سے نہیں روکا جاسکے گا لیکن اگر نیب بدعنوانیوں کے ٹھوس ثبوت حاصل کرنے میں کامیاب ہوگیا پھر بہت سی اہم شخصیات الیکشن سے باہر ہوجائیں گی۔تحریک انصاف میں شمولیت کا سلسلہ جاری ہے ظفراللہ جمالی کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ وہ عید کے بعد شمولیت اختیار کریں گے ادھر احتساب عدالت کے جج نے نواز شریف اور مریم نواز کی بیرون ملک جانے کیلئے حاضری سے استثنےٰ کی درخواست مسترد کردی ہے جس کا یہ مطلب ہوا کہ عید سے قبل تک جتنی بھی سماعتیں ہوں گی ان میں دونوں کی حاضری لازم ہوگی بعض حلقوں کے نزدیک ان کے خلاف کیسز کے فیصلے عید سے قبل متوقع ہیں بعض قانونی حلقوں کے مطابق یہ فیصلے جون کے آخری ہفتے میں متوقع ہیں ۔وفاقی دارالحکومت کے حلقوں نے سابق صدر پرویز مشرف کی وطن واپسی کے سلسلے میں سپریم کورٹ کی پیشکش کو اہم اور دلچسپ قرار دیا ہے سپریم کورٹ نے انہیں 13جون کو لاہور رجسٹری میں طلب کیا ہے اور وطن واپسی پر انہیں گرفتار نہ کرنے کا حکم دیا ہے سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے پرویز مشرف کی تاحیات نااہلی کے خلاف دائر اپیل کی سماعت کے دوران عدالت نے پرویز مشرف کو کاغذات نامزدگی جمع کرانے کی اجازت دے کر انہیں 13جون کو لاہور طلب کرلیا چیف جسٹس نے کہا کہ پرویز مشرف 13جون کو عدالت میں پیش ہوجائیں انہیں گرفتار نہیں کیا جائے گا ان کی ذاتی حیثیت میں پیشی کے بعد نااہلی کے معاملے کو دیکھا جائے گا پرویز مشرف اگر سپریم کورٹ کی اس پیشکش سے فائدہ اٹھاتے ہیں تو ظاہر ہے ان کی بعض مشکلات دور ہوجائیں گی لیکن اس کے باوجود کچھ مشکلات انہیں دلدل میں لے جائیں گی پنجاب کے معاملے میں پیپلز پارٹی کا اسے فتح کرنے کا جوش و خروش تھم گیا ہے لیکن باخبر حلقے لاہور میں نجم سیٹھی کی رہائش گاہ پر آصف زرداری اور نواز شریف کی ملاقات کو بے حد اہمیت دے رہے ہیں ابھی تک کسی طرف سے اس ملاقات کی تردید نہیں کی گئی مبصرین کے مطابق دونوں لیڈروں کو عمران خان کے رویوں نے اکٹھا ہونے پر مجبور کیا ہے عین ممکن ہے کہ اس ملاقات کے نتیجے میں پنجاب کے اندر مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی ایک دوسرے سے تعاون کرنے پر آمادہ ہوجائیں بلوچستان میں سینیٹ انتخابات کے حوالے سے پیپلز پارٹی اور تحریک انصاف میں جو قربت پیدا ہوئی تھی اب وہ دم توڑ چکی ہے البتہ آصف زرداری نے اس سے یہ مقصد حاصل کیا ہے کہ اپنی پارٹی کیلئے ڈپٹی چیئرمین کے عہدے کیلئے پی ٹی آئی سے ووٹ حاصل کرکے کامیابی حاصل کی ہے پی ٹی آئی سے دوری نے پیپلز پارٹی کو مسلم لیگ (ن) کے قریب جانے پر مجبور کیا ہے۔ بہرحال اس بار حالات کا اونٹ جس کروٹ بیٹھے گا اس کے بارے میں عوام کو واضح دکھائی دے رہا ہے اور وہ یہ سوچنے پر مجبور ہیں کہ حکومتیں عوام کے ووٹوں سے نہیں کہیں اور تشکیل پاتی ہیں۔

Facebook Comments
Share Button