تازہ ترین

Marquee xml rss feed

گاڑیوں اور بھینسوں کے بعد 11کھلاڑی بھی نیلام کیے جائیں کھلاڑی نیلام کرنے سے تین ہزار ارب GB ڈیٹا اور 20 ہزار میگا واٹ سالانہ بجلی کی بچت ہو گی جو قوم کرکٹ میچ دیکھنے میں خرچ ... مزید-پنجاب کو آ پریٹو بینک اور سوسائٹی کے ریکارڈ روم میں آگ لگائے جانے کا انکشاف آگ شارٹ سرکٹ سے نہیں بلکہ پٹرولیم سے لگائی گئی تھی،جس وقت آ گ لگی اس وقت چوکیدار بھی موجود نہیں ... مزید-نواز شریف روزانہ بیگم کلثوم نواز کی قبر پر کچھ وقت گزارتے ہیں نواز شریف کو پچھتاوا ہے کہ وہ آخری وقت میں کلثوم نواز کے ساتھ نہیں تھے-پاکستان چین کے تعاون سے گوادر پورٹ کو دنیا کی جدید ترین بندرگاہ بنا کر سمندری راستے سے عالمی تجارت کو فروغ دینے کیلئے بھرپور اقدامات کر رہا ہے وفاقی وزیر منصوبہ بندی، ... مزید-امریکی سرمایہ کاروں کو پاکستان کے دورے کی دعوت، ویزے آسان بنانے کی کوشش جاری ہے امریکا میں پاکستان کے سفیر علی جہانگیر صدیقی کی ایف پی سی سی آئی کے صدر غضنفر بلور سے ... مزید-سابق صدر پرویز مشرف کی دبئی میں 4.5 ملین سے زائد کی جائیداد سپریم کورٹ میں جمع کروائے گئے بیان حلفی میں جائیدادوں کی تفصیل سامنے آ گئی-وزیراعظم عمران خان کا آج قوم سے خطاب متوقع وزیراعظم عمران خان قوم سے خطاب میں اہم اعلان کریں گے-کیپٹن (ر) صفدر کو بیرون ملک بھیجنے کی تیاریاں کیپٹن (ر) صفدر کو علاج کے لیے بیرون ملک منتقل کیا جا سکتا ہے-ضمنی انتخابات میں تحریک انصاف کی جیت یقینی ہے،لیاقت خان خٹک-چترال میں چینی انجینئرزکی گاڑی کوحادثہ ، 6 افراد زخمی

GB News

چیف سیکرٹری کے بیان پر عوام مشتعل، خپلو میں ہڑتال، سکردو ،کھرمنگ میں مظاہرے

Share Button

فلاحی کمیٹی خپلو کی کال پرچیف سیکرٹری گلگت بلتستان بابر حیات تارڑ کی متنازعہ بیان کے خلاف خپلو شہر میں شٹر ڈائون ہڑتال اور احتجاجی مظاہرہ کیا گیا احتجاجی جلسے میں پیپلز پارٹی، پاکستان تحریک انصاف اور پاکستان مسلم لیگ ن سمیت تمام مسالک کے علماء شریک تھے مین بازار خپلو میں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے عالم دین شیخ غلام حسین ، مولانا محسن علی اور مولانا اسحاق نے کہا کہ  چیف سیکرٹری گلگت بلتستان سے گائناکالوجسٹ ڈاکٹر کی عدم تعیناتی کے حوالے سے خواتین کو درپیش مسائل سے آگاہ کرنے اور گائناکالوجسٹ کی تعیناتی کا مطالبہ کرنے پر بابر حیات تارڑ آپے سے باہر ہو گیا اور ہتک آمیز رویہ اپنایا اور پورے گلگت بلتستان کے عوام کی توہین کی ہے  ہم بتانا چاہتے ہیں کہ گلگت بلتستان کے عوام نے 1948 سے لے کر ردالفساد تک پاکستان کے لئے اپنی جانوں کا نذرانہ اور لہو دیا ہے سو ارب اس کے آگے کچھ بھی نہیں ہے یہ ہمارا حق ہے پاکستان کی حکومت ہمیں کوئی خیرات نہیں دیتی ہے انہوں نے آرمی چیف اور نگران وزیراعظم پاکستان سے مطالبہ کیا کہ چیف سیکرٹری گلگت بلتستان کے متنازعہ بیان کا نوٹس کے ان کے خلاف فوری کارروائی عمل میں لائی جائے انکے غیر ذمہ دارانہ بیان سے عوام میں اس وقت شدید غم و غصہ پایا جاتا ہے چیف سیکرٹری فوری طور پر گلگت بلتستان کے عوام سے معافی مانگیں۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے پاکستان پیپلز پارٹی کے جنرل سیکرٹری سید نذر شاہ اور مسلم سٹوڈنٹس فیڈریشن کے صدر ذوہیر اسدی نے کہا کہ بابر حیات تارڑ عوامی مسائل کو حل کرنے کی بجائے منافرت پھیلا رہے ہیں ان کو فوری طور پر اپنی عہدے سے ہٹایا جائے چیف سیکرٹری سے ہم نے گائناکالوجسٹ کا مطالبہ کیا تھا جو کہ کو ناگوار گزرا۔ وہ واسرائے بنا ہوا ہے چیف سیکرٹری گلگت بلتستان نے پوری گلگت بلتستان کے عوام کو گالی دے کر توہین کی ہے جو ہم برداشت نہیں کریں گے ان کا لہجہ توہین آمیز تھا ان کا بیان ہمارے شہدا کی توہین ہے ٹیکسں کا نہ دینے طعانہ تو دیتے ہیں مگر ہمیں ستر سالوں سے حقوق سے محروم رکھا گیا اس کا حساب کون دے گا چیف سیکرٹری گلگت بلتستان عوام کا خادم ہے مگر وہ اس وقت شاہانہ انداز اپنایا ہوا ہے تقریب کے اختتام پر مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ عید تک بابر حیات تارڑ کو عہدے نہیں ہٹایا گیا تو سیاچن روڑ پر دھرنا دے کے بند کریں گے اس کے بعد حالات کا ذمہ دار عوام نہیں ہو ں گا۔چیف سیکرٹری کے ٹیکس کے بارے میں ریمارکس پر بلتستان کے عوام مشتعل ہوگئے ،سکردو یاد گار چوک پر احتجاجی مظاہرہ کیاگیا ،پیر کے روز چیف سیکرٹری کے متوقع دورہ ڈی ایچ کیو ہسپتال کا سن کر شہریوں کی بڑی تعداد ہاتھوں میں انڈے ٹماٹر اٹھا کر ہسپتا ل کے باہر جمع ہوگئی، تاہم چیف سیکرٹری کا دورہ منسوخ ہونے پر شہری وہاں سے منتشر ہوگئے بعد ازاں عوام کی بڑی تعداد نے ہاتھوں میں پلے کارڈ اٹھا کر حسینی چوک سے یادگار چوک تک ریلی نکالی اس دوران لوگ زبردست نعرے بازی کرتے رہے ،یاد گار چوک پر احتجاجی مظاہرے میں  بی ایس ایف، سیاسی جماعتوں ،سول سوسائٹی  اور تاجروں کی کثیر تعداد نے شرکت کی ،احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے غلام شہزاد آغانجف علی،محمد علی دلشاد، منظور یولتر، خوجہ مدثر ،آصف ناجی ایڈووکیٹ اور دیگر نے کہا کہ چیف سیکرٹری نے گلگت بلتستان کے عوام کی دل آزادی کی توہین آمیز بیان سے عوام کے جذبات مجروح ہوئے ،مقررین نے کہا کہ گلگت بلتستان نے بیان واپس لیتے ہوئے معافی نہیں مانگی تو عید کے بعد تحریک چلائیں گے ،  وزیر اعظم نے گلگت میں خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ چیف سکریٹری کو پاور فل بنا یا ہے چیف سکریٹری کو حقوق غصب کرنے اور عوام کے اوپر وائسرائے بنے کاپاور دیا تھا جوہمیں منظور نہیں ہے چیف سیکرٹری جان بوجھ کر بلتستان کے عوام کوتوہین کر رہے ہیں  انہوں نے کہا کہ ہم ایک ماچس  کی ڈبی سے لے کر  ہر چیز پر ٹیکس دیتے ہیں خاموش نہیں رہیں گے مقررین  نے عید الفطر تک چیف سیکرٹری تبدیل نہ کرنے کی صورت میں گلگت کی طرف لانگ مارچ کرنے کی دھمکی دیدی ۔دوسری جانب کھرمنگ میں چیف سیکرٹری کے متنازعہ ریمارکس کیخلاف عوامی ایکشن کمیٹی اور ایم ڈبلیو ایم کے زیر اہتمام احتجاجی مظاہرہ کیاگیا، مظاہرے میں سیاسی سماجی کارکنوں،سول سوسائٹی اور شہریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی ،مظاہرین نے چیف سیکرٹری کیخلاف شدید نعرے بازی بھی کی ،ایم ڈبلیو ایم ضلعی جنرل سیکرٹری اور عوامی ایکشن کمیٹی کے رہنما  شیخ اکبر رجائی ودیگر نے کہا کہ بابر حیات نے عوام کی توہین کی ہے ،وزیر اعلیٰ معاملے کا نوٹس لیں او رچیس سیکرٹری کا محاسبہ کیاجائے۔ مقررین نے کہا کہ گانچھے کے عوام نے چیف سیکرٹری کے سامنے اپنی مائوں ،بہنوں کے مسائل رکھے تھے لیکن الٹا جھاڑ پلا کر ٹیکس کا تقاضاکیا ،ایک سرکاری ملازم کا عوام کے ساتھ اس طرح کا توہین آمیز سلوک ناقابل برداشت ہے

Facebook Comments
Share Button