تازہ ترین

Marquee xml rss feed

پی ٹی آئی کے رکن پنجاب اسمبلی مظہر عباس انتقال کر گئے مظرہ عباس راں کو گذشتہ روز صحت کی خرابی پر پنجاب اسمبلی سے اپستال منتقل کیا گیا تھا-حکومت پاکستان کا رواں برس حج پر 40 ہزار روپے سبسڈی دینے پر غور سبسڈی کی منظوری کے بعد فی کس حج اخراجات 4 لاکھ 20 ہزار روپے ہو جائیں گے-خاتون کو شادی کی تقریب میں اپنے کزن نذیر احمد کو کھانے کی پلیٹ دینا مہنگا پڑ گیا شکی شوہر نے بیوی پر کاروکاری کا الزام دیا، بھائیوں کے ساتھ مل کر خاتون کو قتل کرنے کی کوشش ... مزید-اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز کو بیرون ملک جانے کی اجازت مل گئی حمزہ شہباز نے نام بلیک لسٹ میں ڈالنے کا اقدام لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کیا تھا-امریکی گلوکار ایکون بھی پاکستان میں ڈیمز کی تعمیر کی حمایت میں سامنے آ گئے پاکستانی مہمند فنڈ میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں۔ ایکون نے اپنے ویڈیو پیغام میں دنیا بھر کے پاکستانیوں ... مزید-سندھ سے پیپلز پارٹی کا صفایا ہونے والا ہے ، فاطمہ بھٹو کو گورنر لگایا جائے گا پیپلزپارٹی سے متعلق سینئیر صحافی چوہدری غلام حسین نے بڑی خبر دے دی-وزیراعظم نے ندیم افضل چن کو اپنا ترجمان مقرر کرنے سے پہلے کیا ہدایت کی؟ وزیراعظم عمران خان نے مجھے ہدایت کی ہے کہ لہجے میں عاجزی و انکساری لاؤ متکبرانہ رویہ نہیں ہونا ... مزید-خان صاحب آپ سے ایک بات کرنی ہے میرا بچہ بیمار ہے لیکن اس کے لیے یہاں بیڈ موجود نہیں ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے بے نظیر بھٹو شہید اسپتال انتظامیہ کو فوراََ روتے ہوئے باپ ... مزید-سپریم کورٹ آف پاکستان نے اٹھارہویں ترمیم سے متعلق محفوظ شدہ فیصلہ سنا دیا سپریم کورٹ نے اٹھارہویں ترمیم سے متعلق سندھ حکومت کی درخواست مسترد کر دی-پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کے لیے خطرے کی گھنٹی بج گئی اتحادی اختر مینگل کا اپوزیشن کے اجلاس میں جا کر بیٹھنا موجودہ حکومت کے لیے سیاسی خطرہ ہے۔ عامر متین

GB News

گلگت بلتستان آرڈر 2018 پرمذاکرات کی دعوت

Share Button

وزیراعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمان نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان تاریخی دوراہے پر ہے ‘ہر ادارے اور فرد کو اپنی ذمہ داریوں کا احساس کرنا ہوگامسلم لیگ نون نے گلگت بلتستان آرڈر 2018 کا نیا نظام دیا ہے ۔اپوزیشن جماعتوں نے گلگت بلتستان کے اس اہم مسئلے پر صرف منفی سیاست کی ہم دعوت دیتے ہیں کہ وہ آئیں اور اس آرڈر میں موجود خامیوں کی نشاندہی کریں ہم اس میں ترمیم کریںگے عوام کے پاس جانے اور دھرنے دینے سے مسائل حل نہیں ہوتے۔ اپوزیشن سمیت کوئی بھی جماعت اس میں کسی مسئلے پر تحفظات رکھتی ہے یا خامی سمجھتی ہے تو نشاندہی کریں ان کے تحفظات کو دور کریںگے۔گلگت بلتستان آرڈر2018 پر مختلف نکتہ ہائے نظر سامنے آچکے ہیں اور ہنوز اس پر تبصروں کا سلسلہ جاری ہے یہ تبصرے کہیں مخالفت کا عنصر لیے ہوئے ہیں اور کہیں انہیں خطے کے مفاد میں پہلے سے بہتر قرار دیا جا رہا ہے’اپوزیشن کی جانب سے اس پر تنقید کا سلسلہ بھی جاری ہے ہم پہلے بھی یہ عرض کر چکے ہیںکہ جب بات خطے کے مفاد کی ہے تو اپنی اپنی ڈیڑھ اینٹ کی مسجد بنانے کی کیا ضرورت ہے؟ایک متفقہ لائحہ عمل کا تعین کر کے علاقے کے مفادات کو یقینی بنایا جائے’اس ضمن میں بہترین طریقہ مذاکرات کا ہے ہم یہ کہہ چکے ہیں کہ آرڈر پر جو تحفظات ہیں انہیں حکومت کے سامنے زیر بحث لایا جائے تاکہ اس میں مزید بہتری لائی جا سکے خوش آئند بات یہ ہے کہ وزیراعلی گلگت بلتستان نے اس حوالے سے اپوزیشن جماعتوں کو نہ صرف گفت و شنید کی دعوت دی بلکہ خامیوں کی نشاندہی پر ترمیم کی یقین دہانی بھی کرائی ہے’ ان کا یہ کہنا درست ہے کہ مسائل دھرنوں اور احتجاج سے حل نہیں ہوتے اس لیے عقلمندی کا تقاضا یہی ہے کہ اس بارے میں اپنے تحفظات پیش کر کے انہیں بات چیت کے ذریعے حل کرنے کی راہ ہموار کی جائے اسی میں خطے کا مفاد پوشیدہ ہے ۔

Facebook Comments
Share Button