تازہ ترین

Marquee xml rss feed

بچے کی ولادت دوہری خوشی لائے گی بچے کی ولادت پر ماں کے لیے 6 اور باپ کے لیے 3 ماہ کی چھٹیوں کا بل سینیٹ میں پیش کر دیا گیا-وزیر اعظم عمران خان 21 نومبر کو ملائشیا کے دورے پر روانہ ہوں گے وزیر اعظم ، ملائشین ہم منصب سے ملاقات کے علاوہ کاروبای شخصیات سے ملاقاتیں کریں گے-متعدد وزراء کی چھٹی ہونے والی ہے 100 روز مکمل ہونے پر 5,6 وفاقی وزراء اور متعدد صوبائی وزراء اپنی ناقص کارکردگی کے باعث اپنی وزارتوں سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے-نوازشریف،مریم نوازاورکیپٹن(ر)صفدرکی رہائی کےخلاف نیب اپیل کامعاملہ سپریم کورٹ نے نیب اپیل پر لارجر بنچ تشکیل دینے کا حکم جاری کردیا-ڈیرہ اسماعیل خان میں جشن عید میلاد النبی ؐکی تیاریاںعروج پرپہنچ گئیں-آئی جی سندھ نے حیدرآباد میں واقع مارکیٹ میں نقب زنی کا نوٹس لے لیا-عمر سیف سے چیئرمین پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کا اضافی چار ج واپس لے لیا گیا-پنجاب کے 10ہزار فنکاروں کے لئے 4لاکھ روپے مالیت کے ہیلتھ کارڈ جاری کئے جائیں گے‘فیاض الحسن چوہان صوبے میں 200فنکاروں اور گلوکاروںمیں ان کی کارکردگی,اہلیت اور میرٹ کی ... مزید-پاکستان میں امیر اور غریب کے درمیان طبقاتی فرق اضافہ ہوگیا ہے ،ْ دن بدن فرق بڑھتا جارہاہے ،ْ ورلڈبینک-وزیراعظم جنوبی پنجاب صوبے سے متعلق جلد اہم اقدامات کا اعلان کرینگے جنوبی پنجاب صوبے کے قیام کیلئے وزیراعظم عمران خان اتحادی جماعتوں اور اپوزیشن ارکان پر مشتمل کمیٹی ... مزید

GB News

میں نے حکومت سے کوئی مفاد نہیں لیا، سکندر علی

Share Button

سکردو(چیف رپورٹر ) صوبائی اسمبلی کی پبلک اکاونٹس کمیٹی کے چیئرمین کیپٹن(ر) سکندر علی نے کہاہے کہ میں نے کسی سے کوئی ذاتی مفاد لیا ہے اور نہ حکومت کی گود میں بیٹھا ہوں جو لوگ میرے اوپر حکومت سے مفاد لینے کا الزام لگا رہے ہیں وہ رات کی تاریکی میں حکومتی لوگوں سے ملتے ہیں دن میں اپوزیشن کا شو شہ چھوڑتے ہیں الزامات لگانے والے بتائیں کہ میں نے کونسا مفاد لیا ہے کیا میں نے اپنے کسی رشتہ دار کو کوئی ٹھیکہ دلوایا ہے کیا میرے کسی رشتہ دار کو سرکاری ملازمت دلوائی ہے؟ الزامات لگانے والوں کیخلاف عدالت سے رجوع کروں گا اور یسے لوگوں کے خلاف ہتک عزت کا کیس دائر کروں گا میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ اسلامی تحریک مثبت سیاست تعمیر اپوزیشن پر یقین رکھتی ہے تنقید برائے تنقید اس جماعت کا ہر گز منشور نہیں رہا ہے ہم قومی ایشوز پر کبھی خاموش نہیں رہے ہیں بلکہ عوامی مفادات کا ڈٹ کر مقابلہ کیا ہے 2018کا آرڈر آئینی حقوق کا ہرگز نعم البدل نہیں ہے ہم اسمبلی کو بااختیار دیکھنا چاہتے ہیں آرڈر میں ترمیم کا اختیارصوبائی اسمبلی کو دیا جائے اپوزیشن اراکین سے میری گزارش ہے کہ وہ تنقید برائے تنقید نہیں مثبت اپوزیشن کریں صرف بائیکات سے مسئلہ کبھی حل نہیں ہوگا آپس میں مل بیٹھ کر مسائل کا پائیدار حل نکالناہو گا ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ اسلامی تحریک میں کوئی گروپ بندی نہیں ہماری جماعت کا اس وقت میڈیا ترائل ہو رہا ہے ہم مثبت سیاست اور تعمیری اپوزیشن کے خواہاں ہیں کیونکہ محاز آرائی کی سیاست کا خطہ ہرگز متحمل نہیں ہوسکتا میں اسلامی تحریک میں ہوں اور اس میں ہی رہوں گامسلم لیگ ن میں جانے کی باتیں مفروضات پر مبنی ہیں تاہم اسلامی تحریک اور مسلم لیگ ن میں گہرے روابط الیکشن سے پہلے سے موجود ہیں انہوں نے کہاکہ علاقے کی تعمیر وترقی کیلئے کام کرنا کوئی جرم نہیں ہے ہم بکنے والے ہیں اور نہ جھکنے والے قوم ملت کے لئے خدمات انجام دی ہیں آئندہ بھی اپنی خدمات جاری رکھوں گا ۔

Facebook Comments
Share Button