تازہ ترین

Marquee xml rss feed

پاکستان میں فحش ویب سائٹس دیکھنے کی رجحان میں کمی واقع پاکستان میں فحش مواد اپ لوڈ ہونے کے شواہد نہیں ملے، جبکہ انٹرنیٹ پر فحش مواد دیکھنے کے رجحان میں بھی واضح کمی ہوئی ... مزید-علیم خان پھر سے پنجاب کی کابینہ میں واپسی کیلئے تیار تحریک انصاف کے سینئر رہنما کو جلد پنجاب کی کابینہ میں شامل کر لیا جائے گا، ممکنہ طور پر سینئر وزیر کی وزارت ہی سونپی ... مزید-مجھے اپنی عزت کا بھی خیال ہے، میرا مزاج ایس نہیں ہے کہ زیادہ شور شرابا کر سکوں اب جو وزارت سونپی گئی ہے اس کیلئے مشاورت نہیں کی گئی، تاہم وزیراعظم کا فیصلہ قبول کرتا ہوں: ... مزید-نامور وکیل کی مشرف کے خلاف غداری کیس میں پیش ہونے سے معذرت-مریم صفدر کے ہوتے ہوئے شر یف فیملی کو کسی د شمن کی ضرور ت نہیں‘ شہباز شریف ساتھی کی گرفتاری پربو کھلاہٹ کا شکار ہو کر بیان بازی کرر ہے ہیں ، غلام محی الدین دیوان-وزیر اعظم قوم کو بتائیں کہ وہ کیا ایجنڈا لیکر امریکہ جارہے ہیں،سینیٹرسراج الحق ایجنڈا افغانستان سے امریکی افواج کی بحفاظت واپسی کا ہے یا قوم کی مظلوم بیٹی ڈاکٹر عافیہ ... مزید-عوام سے جینے کا حق چھیننے کے بعد اب کفن اور قبر پر ٹیکس لگا کر موت بھی مہنگی کر دی گئی ہے ، سینیٹر سراج الحق اس وقت میں ملک میں جھوٹوں کی حکومت ہے ،جماعت اسلامی اقتدار ... مزید-ریکوڈک کیس میں 6 ارب ڈالرز جرمانے کا معاملہ، اب پریشان ہونے کی ضرورت نہیں، چین پاکستان کی مدد کیلئے میدان میں آگیا چین ریکوڈک منصوبے کا کنٹرول خود سنبھال کر چلی اور کینیڈا ... مزید-رینجرز کی شہر کے مختلف علاقوں میں کارروائیاں، 5 ملزمان گرفتار-دائودی بوہرہ جماعت کے سربراہ ڈاکٹر سیدنا مفدل سیف الدین کراچی پہنچ گئے

GB News

گلگت سکردو روڈ کے معیار پر کسی صورت سمجھوتہ نہیں ہوگا،ڈائریکٹر جنرل ایف ڈبلیو اولیفٹیننٹ جنرل محمد افضل

Share Button

گلگت(راجہ شاہ سلطان مقپون سے) ڈائریکٹر جنرل ایف ڈبلیو اولیفٹیننٹ جنرل محمد افضل نے کہاہے کہ گلگت سکردو روڈ کے معیار پر کسی صورت سمجھوتہ نہیں ہوگااین ایچ اے کے ساتھ ہونیوالے معاہدے سے بڑھ کر ایف ڈبلیو او کام کررہی ہے۔ہفتے کے روز گلگت میں صحافیوں اور عمائدین کو جگلوٹ سکردو روڈ کے تعمیراتی کام کے حوالے سے بریفنگ دیتے ہوئے لیفٹیننٹ جنرل محمد افضل نے کہا کہ طے شدہ معاہدے کے تحت ڈیزائن،پلوں کی تعمیر اور سڑک کی کشادگی پر کام کیاجارہا ہے،ایف ڈبلیو او کی تین یونٹ کام میں مصروف ہیں عالم برج سمیت اب تک چارپل مکمل ہوچکے ہیں ان میں 2آرسی سی اور 2لوہے کے پل شامل ہیں۔انہوں نے کہا کہ گلگت سکردو روڈ کی تعمیر میں ماحولیات کا بھرپور خیال رکھتے ہوئے شاہراہ سے متصل درختوں اور پودوں کو بچایاجارہا ہے،سڑک پر کام کیلئے مقامی ٹھیکیداروں اور ٹیکنیکل اور نان ٹیکنیکل سٹاف کو ترجیح دی جارہی ہے ساتھ ساتھ مقامی افراد کی مشینری کو بھی ترجیحی بنیادوں پر مناسب ریٹ پر اٹھایاجارہا ہے،اس کا مقصد زیادہ سے زیادہ مقامی آبادی کو فائدہ پہنچانا ہے ،انہوں نے کہا کہ سکردو روڈ پر بننے والے پل80ٹن وزن برداشت کرسکتے ہیں تاہم مکمل طور پر فنکشنل ہونے کے بعد 180ٹن وزن کو بھی دونوں طرف سے اٹھایاجاسکتا ہے ان پلوں کے سلسلے میں خود انگلینڈ جاکر آیا ہوں ۔انہوں نے کہا کہ ایف ڈبلیو او نے سب سے کم ٹینڈر دے کر روڈ کا ٹھیکہ اس لیے لیاتھا کہ ہمیں گلگت بلتستان کے لوگوںکی خوشحالی عزیز تھی ایف ڈبلیو او کا مقصد بھی یہی تھا کہ دورافتادہ علاقوں کے عوام کی زندگی کو آسان بنایا جائے ،میں سمجھتا ہوں کہ یہ ادارہ گلگت بلتستان کیلئے ہی بنا تھا اس لیے اس کا نام ہی گلگت بلتستان ورکس آرگنائزیشن ہونا چاہیے تھا۔ انہوں نے کہا کہ سڑک کی تعمیر میں ٹنل بنایا معاہدے میں شامل نہیں تھا لیکن ایف ڈبلیو او 3چھوٹی اور ایک بڑی ٹنل بھی بنانے جارہی ہے بڑے ٹنل کی تعمیر سے جگلوٹ اور سکردو کے درمیان مسافت 42کلومیٹر کم ہوجائے گی ۔ جبکہ سڑک کی تعمیر مکمل ہونے کے بعد سکردوسے گلگت تک کا سفر 2سے ڈھائی گھنٹے ہوجائے گا، صحافیوں کے سوالوں کے جواب میں ڈی جی ایف ڈبلیواو کا کہناتھا کہ سڑک کی زد میں آنے والی زمینوں کا معاوضہ ایف ڈبلیو او نہیں این ایچ اے نے دینا ہے ہماری کوشش ہوتی ہے کہ این ایچ اے عوامی زمینوں کے معاوضے بروقت اداکرے ۔انہوں نے کہا کہ گلگت سکردو روڈ کے تعمیراتی کاموں کو ذاتی طور پر مانیٹر کررہا ہوں ہر روز روڈ کی پراگریس دیکھتاہوں ،انہوں نے کہا کہ حکومت نے بروقت پیسے ادانہیں کیے تو ہم نے خود انتظام کیا اور پوری تیاری کے ساتھ آگے بڑھ رہے ہیں تاکہ سڑک کی تکمیل میں تاخیر نہ ہو، اب کام پہلے سے زیادہ تیز ہوگا تاہم بعض تکنیکی وجوہات کی وجہ سے کچھ مشکلات تھیں جنہیں وفاقی کابینہ کے ذریعے دورکرلیاگیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہمارے دشمن منصوبہ بندی کے تحت منفی اور بے بنیاد پراپیگنڈا کررہا ہے ۔دشمن کو جگلوٹ سکردو روڈ ہضم نہیں ہورہا ۔

Facebook Comments
Share Button