تازہ ترین

Marquee xml rss feed

بچے کی ولادت دوہری خوشی لائے گی بچے کی ولادت پر ماں کے لیے 6 اور باپ کے لیے 3 ماہ کی چھٹیوں کا بل سینیٹ میں پیش کر دیا گیا-وزیر اعظم عمران خان 21 نومبر کو ملائشیا کے دورے پر روانہ ہوں گے وزیر اعظم ، ملائشین ہم منصب سے ملاقات کے علاوہ کاروبای شخصیات سے ملاقاتیں کریں گے-متعدد وزراء کی چھٹی ہونے والی ہے 100 روز مکمل ہونے پر 5,6 وفاقی وزراء اور متعدد صوبائی وزراء اپنی ناقص کارکردگی کے باعث اپنی وزارتوں سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے-نوازشریف،مریم نوازاورکیپٹن(ر)صفدرکی رہائی کےخلاف نیب اپیل کامعاملہ سپریم کورٹ نے نیب اپیل پر لارجر بنچ تشکیل دینے کا حکم جاری کردیا-ڈیرہ اسماعیل خان میں جشن عید میلاد النبی ؐکی تیاریاںعروج پرپہنچ گئیں-آئی جی سندھ نے حیدرآباد میں واقع مارکیٹ میں نقب زنی کا نوٹس لے لیا-عمر سیف سے چیئرمین پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کا اضافی چار ج واپس لے لیا گیا-پنجاب کے 10ہزار فنکاروں کے لئے 4لاکھ روپے مالیت کے ہیلتھ کارڈ جاری کئے جائیں گے‘فیاض الحسن چوہان صوبے میں 200فنکاروں اور گلوکاروںمیں ان کی کارکردگی,اہلیت اور میرٹ کی ... مزید-پاکستان میں امیر اور غریب کے درمیان طبقاتی فرق اضافہ ہوگیا ہے ،ْ دن بدن فرق بڑھتا جارہاہے ،ْ ورلڈبینک-وزیراعظم جنوبی پنجاب صوبے سے متعلق جلد اہم اقدامات کا اعلان کرینگے جنوبی پنجاب صوبے کے قیام کیلئے وزیراعظم عمران خان اتحادی جماعتوں اور اپوزیشن ارکان پر مشتمل کمیٹی ... مزید

GB News

پیپلز پارٹی نے ہمیشہ جنوبی پنجاب کے لیے کام کیا، بلاول بھٹو زرداری

Share Button

مظفر گڑھ: پاکستان پیپلزپارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ آپ کو فیصلہ کرنا ہے کہ آپ کو شوباز چاہیے یا یوٹرن والا؟ ووٹ کی بنیاد منشور، نظریہ اور پالیسی ہونی چاہیے۔

مظفر گڑھ میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی نے 50 سال میں جمہوری جدوجہد کی، ہم نےجیلیں کاٹی ہیں اور حکومت بھی کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کراچی سےخیبر تک جہاں جہاں گیا، عوام نے استقبال کیا اور آج بھی خدمت کا وہی جذبہ لے کر خان گڑھ میں آیا ہوں۔

ان کا کہنا ہے کہ میرا مقابلہ سیاستدان سے نہیں بلکہ محرومیوں سے ہے، میرا مقابلہ غربت، بھوک اور معاشی ناانصافی سے ہے اور میں استحصال سے پاک معاشرہ چاہتاہوں، دنیاکی کوئی طاقت شہید بی بی کا مشن پورا کرنے سے نہیں روک سکتی۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ الیکشن میں عوام دوست اور زرعی دوست منشور لایا ہوں، پیپلزپارٹی ہمیشہ کسان دوست منشور لاتی ہے جب کہ ہم کپاس،چاول، گندم اور دالوں کی امدادی قیمت دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ملک کی 60 فیصد آبادی خوراک کی کمی کاشکار ہے لہذا حکومت میں آنے کے بعد بھوک مٹاؤ پروگرام کے تحت بھوک کارڈ دیں گے اور یونین کونسل کی سطح پر فوڈ اسٹور کھولیں گے۔

ان کا کہنا ہے کہ میں نے ہمیشہ جنوبی پنجاب صوبےکامقدمہ لڑا ہے لیکن چند کٹھ پتلیوں کو آخری دنوں میں جنوبی پنجاب یاد آیا جب کہ حکمرانوں نے جنوبی پنجاب کو اپنی جاگیر سمجھا اور مسائل کو اہمیت نہ دی۔

پی پی پی چیئرمین کا کہنا تھا کہ ہم نے سندھ میں درجنوں اسپتال بنائے، 8 دل کے اسپتال سندھ میں بنائے لیکن ہمارے مخالفین کہتے ہیں ہم نے میٹرو نہیں بنائی، ہم نے 14 نئی یونیورسٹیاں بنائی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ آپ کو میٹرو چاہیے یا معیاری تعلیم اور علاج؟ آپ کو روزگار چاہیے یا میٹرو؟ الیکشن میں 2 ہفتےرہ گئے لیکن پاکستان بدلنے والے کا منشور بھی تیار نہیں۔

بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ آپ کو فیصلہ کرنا ہے کہ آپ کو شوباز چاہیے یا یوٹرن والا؟ ووٹ کی بنیاد منشور، نظریہ اور پالیسی ہونی چاہیے، یہ الیکشن میری سیاسی انا اور اقتدار کی ہوس کی بات نہیں بلکہ یہ الیکشن آپ کے حقوق کی جنگ ہے۔

انہوں نے کہا کہ مجھے اقتدار کی ہوس نہیں اور نہ ہی اقتدار اپنے لیے چاہیے بلکہ یہ  اقتدار غربت اور معاشی ناانصافی کے خاتمے کے لیے چاہتا ہوں، ملک کی خوشحالی اور نوجوانوں کے روزگار کے لیے اقتدار چاہتا ہوں۔

Facebook Comments
Share Button