تازہ ترین

Marquee xml rss feed

خیبرپختونخواہ میں ہزاروں ملازمتیں ختم کرنے کا اعلان خیبرپختونخوا حکومت نے 4 ارب روپے کی بچت کے لیے صوبے میں 6 ہزار 500 ملازمتیں ختم کرنے کا فیصلہ کیاکرلیا-حکومت ملک میں کاروبار ی لاگت کم کرنے اور کاروباری طبقے کو ہر ممکنہ سہولت فراہم کر کے کاروبار کو آسان بنانے کے حوالے سے ملکی رینکنگ بہتر کرنے کیلئے پر عزم ہے، حکومت کاروبار ... مزید-اسلام آباد ،صرف آئی ایم ایف پر انحصار کرنے کی بجائے متبادل حل پر بھی کا م کر رہے ہیں،اسدعمر وال سٹریٹ جنرل کے انکشافات کی تحقیقات ہونی چاہیئے، اچھے فیصلے کروں یا برے ... مزید-ترجمان وزیر اعلیٰ پنجاب کا وزیر اعلی پنجاب سیکرٹریٹ کا بجٹ بڑھانے کی ترددید پچھلی حکومت کی جانب سے اس مد میں خرچ کئیے جانے والی رقم 802 ملین تھی جبکہ ہم نے جو رقم اس مد میں ... مزید-پاک پتن دربار اراضی قبضہ کیس،نواز شریف سمیت دیگر فریقین کو دوبارہ نوٹس جاری، آئندہ سماعت پرعدالت کو اراضی کا مکمل ریکارڈ پیش کیا جائے ،سپریم کورٹ-سابقہ حکومتوں نے جس انداز میں سرکاری وسائل اور عوام کے پیسوں کا استعمال کیا اور ملک کو جس دلدل میں دھکیلا ہے اس کی مثال نہیں ملتی، آج ملک تیس ٹریلین کا مقروض ہو چکا ہے۔ ... مزید-چترال میں کیلاش قبائل کی حدود میں تجاوزات سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت،کیلاش قبائل کے لوگوں کی زمینوں پر قبضہ نہ کیا جائے، انہیں مکمل آزادی اور حقوق ملنے چاہئیں،کیلاش ... مزید-سپریم کورٹ نے لاہورکے سول اور کنٹونمنٹ علاقوں میں لگائے گئے تمام بڑے بل بورڈز اور ہورڈنگز ڈیڑھ ماہ کے اندر ہٹانے کا حکم جاری کر دیا، پبلک پراپرٹی پر کسی کوبھی بورڈ لگانے ... مزید-کے الیکٹرک بکا ہی نہیں تھا اس لئے کسی ڈیل کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا،خواجہ آصف-سپریم کورٹ کے فیصلے سے سعدیہ عباسی اور ہارون اختر تاحیات نا اہل نہیں ہوئے :آئینی ماہر بیرسٹر علی ظفر

GB News

دہشت گردوں کے خلاف ٹارگٹڈ آپریشن وقت کی اہم ضرورت ہے،کیپٹن (ر) محمد شفیع 

Share Button

گلگت ( ثاقب عمر سے )قائد حز`ب اختلاف کیپٹن (ر) محمد شفیع نے کہا ہے کہ مٹھی بھر دہشت گر دوں کو اگر وزیر اعلیٰ قابو نہیں کر سکتا ہے تو استعفیٰ دینے کی ضرورت ہے وزیر اعلیٰ چیف ایگزیکٹیو ہے اور اس کے پاس اختیارات ہیں اور جو دہشت گرد ہیں ان کا بھی وزیر اعلیٰ سمیت کابینہ کو بھی علم ہے پھر بھی ٹا رگٹڈ آپریشن میں تا خیری حر بے استعمال کر نا علاقے کے مفاد میں نہیں ہے اس سے قبل دیامر میں جو سکولو ں کے واقعات رونما ہو ئے اور مختلف سانحات ہو ئے اس پر ایکشن ہو تا تو آج اس قسم کے واقعات نہیں ہو تے ۔انہوں نے کے پی این سے گفتگو کر تے ہو ئے کہا کہ سابقہ سکولوں کو دہشت گردی کا نشانہ بنا نے والوںکو سر پر بھٹیا گیا اور وزاتیں حا صل کی گئی اور اس وقت کا روائی نہیں کی گئی جس کا خمیازہ آج سامنے آرہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مٹھی بھر دہشت گردوں کے ہاتھوں حکومت یر غمال ہے اور ابھی تک وزیر اعلیٰ نے ٹارگٹڈ آپریشن سے روکا ہوا ہے اور پولیس بھی اس وقت آپریشن کے لیئے تیار ہے ۔ ا نہوں نے کہا کہ شریف شہری ، علماء کرام اور جر گے کے افراد نے دہشت گردوں کے خلاف اپنا فیصلہ سنا دیا ہے اب دیامر کے عوام بھی اس قسم کے دہشت گردوں سے تنگ آئے ہیں اور ان دہشت گردوں کے خلاف ٹارگٹڈ آپریشن وقت کی اہم ضرورت ہے تا کہ پھر سے کو ئی سانحہ رو نما ء نہیں ہوسکے ۔انہوں نے کہا کہ دہشت گردوں کی ڈوریاں کہا ہے یہ کا بینہ سمیت وزیر اعلیٰ کو علم ہے ۔ اس سے قبل دہشت گردی کے جو واقعات ہو ئے ہیں ان کی ویڈیوز سوشل میڈیا میں وائرل ہو چکی ہیں پھر بھی حکومت خاموش ہے ۔انہوں نے کہا کہ اگر دیا مر بھا شہ ڈیم اور سی پیک کو کا میاب بنا نا ہے تو ان مٹھی بھر دہشت گردوں کے خلاف ایکشن لینا ہو گا ۔ انہوں نے کہا کہ دیامر جر گہ اور دیامر کے عوام نے دہشت گردوں کے خلاف آپریشن کا عندیہ دے دیا ہے تو پھر کس بات کا انتظار ہے اور مزید دیر ہو ئی تو حا لات مزید سنگین ہو نگے ۔انہوں نے کہا کہ کا بینہ اجلاس سے کچھ ہو نے والا نہیں ہے اس کے لیئے وزیر اعلیٰ خود با ختیار ہیں اگر وہ دہشت گردوں کے خلاف ایکشن لیں تو لے سکتے ہیں اس میں مشاورت کی ضرورت نہیں دیامر کے عوام سمیت پورے گلگت بلتستان کے عوام دہشت گردوں کے خلاف ہیں لیکن وزیر اعلیٰ کا بینہ کے اجلاس میں مشاورت کے لیئے عوام کے سامنے ڈھونگ رچانے سے بہتر ہے فوری طور پر ان دہشت گردوں کے خلاف کاروائی کی جا ئے او ر ان کا نام و نشان ختم کیا جا ئے ۔ انہون نے کہا کہ سوات اور وزیرستان میں ٹارگٹڈ آپریشن ہو سکتا ہے تو دیا مر میں کیو ں نہیں ہوسکتا ہے اور اس وقت پولیس بھی آپریشن کے لیئے تیار ہے لیکن وزیر اعلیٰ خود دیر کروا رہے ہیں جو کہ علاقے کے لیئے علاقے کی تعمیر ترقی کے لیئے مفید ثابت نہیں ہو گا ۔انہوں نے کہا کہ سانحہ کوہستان ، سانحہ لولوسر سانحہ چلاس سمیت چا ئینز کو اغوا کر نے والوں کے خلاف آپریشن ہو تا تو آج یہ نوبت نہیں آتی حکومت کو سب علم ہے کہ دہشت گردی کی نرسریاں کہا ںہیں اس لیئے حکومت نا اہلی برتننے کے بجا ئے فوری طور پر گلگت بلتستان کو محفوظ بنانے کے لیئے اقدام اٹھا ئے اور دہشت گردوں کے خلاف آپریشن شروع کرے ۔

Facebook Comments
Share Button