تازہ ترین

Marquee xml rss feed

خیبرپختونخواہ میں ہزاروں ملازمتیں ختم کرنے کا اعلان خیبرپختونخوا حکومت نے 4 ارب روپے کی بچت کے لیے صوبے میں 6 ہزار 500 ملازمتیں ختم کرنے کا فیصلہ کیاکرلیا-حکومت ملک میں کاروبار ی لاگت کم کرنے اور کاروباری طبقے کو ہر ممکنہ سہولت فراہم کر کے کاروبار کو آسان بنانے کے حوالے سے ملکی رینکنگ بہتر کرنے کیلئے پر عزم ہے، حکومت کاروبار ... مزید-اسلام آباد ،صرف آئی ایم ایف پر انحصار کرنے کی بجائے متبادل حل پر بھی کا م کر رہے ہیں،اسدعمر وال سٹریٹ جنرل کے انکشافات کی تحقیقات ہونی چاہیئے، اچھے فیصلے کروں یا برے ... مزید-ترجمان وزیر اعلیٰ پنجاب کا وزیر اعلی پنجاب سیکرٹریٹ کا بجٹ بڑھانے کی ترددید پچھلی حکومت کی جانب سے اس مد میں خرچ کئیے جانے والی رقم 802 ملین تھی جبکہ ہم نے جو رقم اس مد میں ... مزید-پاک پتن دربار اراضی قبضہ کیس،نواز شریف سمیت دیگر فریقین کو دوبارہ نوٹس جاری، آئندہ سماعت پرعدالت کو اراضی کا مکمل ریکارڈ پیش کیا جائے ،سپریم کورٹ-سابقہ حکومتوں نے جس انداز میں سرکاری وسائل اور عوام کے پیسوں کا استعمال کیا اور ملک کو جس دلدل میں دھکیلا ہے اس کی مثال نہیں ملتی، آج ملک تیس ٹریلین کا مقروض ہو چکا ہے۔ ... مزید-چترال میں کیلاش قبائل کی حدود میں تجاوزات سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت،کیلاش قبائل کے لوگوں کی زمینوں پر قبضہ نہ کیا جائے، انہیں مکمل آزادی اور حقوق ملنے چاہئیں،کیلاش ... مزید-سپریم کورٹ نے لاہورکے سول اور کنٹونمنٹ علاقوں میں لگائے گئے تمام بڑے بل بورڈز اور ہورڈنگز ڈیڑھ ماہ کے اندر ہٹانے کا حکم جاری کر دیا، پبلک پراپرٹی پر کسی کوبھی بورڈ لگانے ... مزید-کے الیکٹرک بکا ہی نہیں تھا اس لئے کسی ڈیل کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا،خواجہ آصف-سپریم کورٹ کے فیصلے سے سعدیہ عباسی اور ہارون اختر تاحیات نا اہل نہیں ہوئے :آئینی ماہر بیرسٹر علی ظفر

GB News

گرینڈ اپوزیشن الائنس کا انتخابات میں دھاندلی کیخلاف الیکشن کمیشن کے باہر احتجاجی مظاہرہ

Share Button

اسلام آباد (آئی این پی)گرینڈ اپوزیشن الائنس نے انتخابات میں دھاندلی کے خلاف الیکشن کمیشن کے باہر زبردست احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے الیکشن کمیشن سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر دیا ، مظاہرے سے خطاب کر تے ہوئے اپوزیشن رہنمائوں نے کہا کہ جمہوریت پر شب خون کسی قیمت پر برداشت نہیں کیا جا سکتا،جو ادارے عوام کے حق کے ساتھ مذاق کر رہے ہیں ان کو وارننگ دیتے ہیں کہ عوام اپنا حق چھیننا جانتے ہیں، ہم ان جعلی قوتوں کی پشت پناہی کا اختیار آپ کو نہیں دے سکتے، ہمیں آپ مجبور کررہے ہیں کہ ہم اداروں کے مقابلے میں آ جائیں، اداروں کو ان رویوں سے دستبردار ہونا ہو گا، ہم کٹھ پتلی وزیراعظم کو کسی صورت نہیں مانتے، عمران خان کی حکومت نہیں چلنے دیں گے،کچھ تو چوری ہے جس کی پردہ داری ہے، ہم دھاندلی کی قیادت کو بے نقاب کریں گے،الیکشن کے نام پر جو ناٹک رچایا گیا ہم اسے زمین بوس کریں گے۔ ان خیالات کا اظہار مولانا فضل الرحمان ، محمود خان اچکزئی ، احسن اقبال ، قمرزمان کائرہ، میاں افتخار حسین ، آفتاب شیرپائو، جاوید ہاشمی ،اور مولانا امیر زمان نے مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔تفصیلات کے مطابق بدھ کو الیکشن کمیشن کے باہر گرینڈ اپوزیشن الائنس کی جانب سے انتخابات میں مبینہ دھاندلی کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا گیا،مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے جمعیت علماء اسلام (ف) کے رہنما مولانا امیر زمان نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے فراڈ کیا ہے، دوبارہ شفاف انتخابات کروائے جائیں، یہ ڈھونگ اور فراڈ ہمیں نامنظور ہے، الیکشن کمیشن مستعفی ہو جائے، ہم عمران خان کی حکومت نہیں چلنے دیں گے۔ قومی وطن پارٹی کے سربراہ آفتاب احمد خان شیرپائو نے کہا کہ اسمبلی میں بھی احتجاج ہو گا اور یہ سلسلہ چلتا رہے گا،عوام کامیاب ہوں گے اور جنہوں نے دھاندلی کی وہ ناکام ہوں گے۔ مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما جاوید ہاشمی نے کہا کہ عمران خان ایک مہرہ ہے، نہ وہ اپنے گورنر لگا سکتا ہے اور نہ ہی وزیراعلیٰ، یہ ہنگ پارلیمنٹ نہیں ہے۔ عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنما میاں افتخار حسین نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے ایک اجلاس بلایا تھا جس میں ہم نے کہا تھا کہ فوج کی نگرانی میں الیکشن نہیں ہونے چاہئیں، اگر ان کی نگرانی میں کرانے ہیں تو انہیں پولنگ بوتھ کے باہر تعینات کیا جائے لیکن انہیں پولنگ اسٹیشن کے باہر اور اندر بھی تعینات کیا گیا، ہم اس الیکشن کمیشن کو نہیں مانتے اور نگران حکومت کی مذمت کرتے ہیں، انہوں نے کہا کہ ہم کٹھ پتلی وزیراعظم کو کسی صورت نہیں مانتے، الیکشن کمیشن کے کردار کی مذمت کرتے ہیں اور اس سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کرتے ہیں، ملک میں نئے انتخابات کرائے جائیں، ملک کی خاطر ہم سڑکوں پر نکلیں گے، ہم پشاور سے رکاوٹیں ہٹا کر یہاں تک آئے ہیں۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما قمر زمان کائرہ نے کہا کہ آج ہماری تحریک کا آغاز ہے، الیکشن سے پہلے بھی سیاسی جماعتیں اپنے تحفظات کا اظہار کر رہی تھیں، 25جولائی کو عوام کا مینڈیٹ چھینا گیا، سب نے الیکشن مسترد کئے،تحریک انصاف کے ہارے ہوئے امیدوار بھی الیکشن کو جعلی قرار دے رہے ہیں، تاریخ کی بدترین دھاندلی ہوئی ہے، ہمیں یہ جعلی الیکشن نامنظور ہے۔ مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما احسن اقبال نے کہا کہ 25جولائی کو عوام کے حق حکمرانی پر ڈاکہ ڈالا گیا، ہم کسی کو اجازت نہیں دیں گے کہ وہ عوام کے حق پر ڈاکہ ڈالے، وہ عمران جو کل تک کہتا تھا کہ میں دوبارہ ووٹوں کی گنتی کرائوں گا،اب اپنے حلقے میں دوبارہ گنتی کی مخالفت کررہا ہے کچھ تو چوری ہے جس کی پردہ داری ہے، ہم دھاندلی کی قیادت کو بے نقاب کریں گے،الیکشن کے نام پر جو ناٹک رچایا گیا ہم اسے زمین بوس کریں گے، ہمارے قائد اور اس کی بیٹی کو جیل میں بند کیا گیا،(ن) لیگ انتقامی سیاست کو مسترد کرتی ہے، پختونخوا ملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی نے کہا کہ پاکستان ایک رضاکارانہ فیڈریشن ہے، یہاں کوئی کسی کا غلام نہیں،ہم آئین کو بچانے کیلئے جمع ہوئے ہیں، یہاں بیس کروڑ عوام راج کرے گی، نواز شریف اور اس کی بہادر بیٹی جمہوریت کا نشان ہیں، ہم نے ترکی کی طرز پر سڑکوں پر آنا ہے۔ متحدہ مجلس عمل کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ جمہوریت پر شب خون کسی قیمت پر برداشت نہیں کیا جا سکتا،ہماری زندگیاں جمہوریت کے استحکام کیلئے صرف ہوئی ہیں، ہم عوام کی قربانیوں کو ضائع نہیں ہونے دیں گے، اور جو ادارے عوام کے حق کے ساتھ مذاق کر رہے ہیں ان کو وارننگ دیتے ہیں کہ عوام اپنا حق چھیننا جانتے ہیں، آج پورے ملک کی شاہرائوں پر عوام کھڑے ہیں، پورا ملک بلاک ہے، عوام دنیا، عدلیہ اور اسٹیبلشمنٹ کو پیغام دینا چاہتے ہیں کہ جو ملی بھگت سے نتائج آئے ہیں انہیں مسترد کرتے ہیں،پوری قوم الیکشن کمیشن کو اپنا کمیشن تسلیم نہیں کرتی، اسٹیبلشمنٹ ایک غیر جانبدار ادارے کی حیثیت کھو بیٹھا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نواز شریف کو ایک پیغام دینا چاہتے ہیں کہ آپ جیل میں ہیں لیکن ہم آپ کی کمی باہر محسوس نہیں ہونے دیں گے، جعلی وزیراعظم نہیں مانا جائے گا،اداروں پر واضح کرنا چاہتا ہوں کہ آپ نے نااہل انسان کو ملک کی اکثریت جعلی بنیاد پر دے کر خود کو بے نقاب کردیا ہے ہم آپ کی یہ خواہش پوری نہیں ہونے دیں گے ، میں آج اعلان کرتا ہوں کہ ہم چودہ اگست کو جدوجہد آزادی کے طور پر منائیں گے، ہم ان جعلی قوتوں کی پشت پناہی کا اختیار آپ کو نہیں دے سکتے، ہمیں آپ مجبور کررہے ہیں کہ ہم اداروں کے مقابلے میں آ جائیں، اداروں کو ان رویوں سے دستبردار ہونا ہو گا۔

Facebook Comments
Share Button