تازہ ترین

Marquee xml rss feed

جہانگیر ترین نے تحریک انصاف کیلئے ایک اور مشکل ترین کام کر دکھایا بلوچستان عوامی پارٹی کے تحفظات دور کرکے قومی اسمبلی میں اسپیکر، ڈپٹی اسپیکر اور وزیراعظم کے امیدوار ... مزید-وطن عزیز کے استحکام اور بقاء کی خاطر اپنے ذاتی مفادات کو قربان کرنا ہو گا، شیخ آفتاب احمد-حکومت سازی، عمران خان کی زیر صدارت اہم امور پر مشاورت-نامزد گورنر سندھ عمران اسماعیل کو مزارِ قائد میں داخلے سے روکنے کی شدید الفاظ میں مذمت پی پی سے بلاول ہائوس کی حفاظتی دیوار گرانے کی بات کرنے کا بیان دیا تھا، بلاول ہائوس ... مزید-عمران اسماعیل سے گورنرشپ کاعہدہ ہضم نہیں ہورہااگر انہوں نے بدزبانی بند نہیں کی تواحتجاج کریں گے، نثار احمد کھوڑو-انصاف اور مساوات کے رہنما اُصولوں پر گامزن ہوکر ہی پاکستان کو دنیا کا ماڈل بنایا جاسکتا ہے ،سربراہ پاکستان سنی تحریک موجودہ نئی حکومت سے اُمید ہے کہ وہ ملک وقوم کی ترقی ... مزید-صوبائی حکومت انفرا اسٹرکچر، صحت و تعلیم پر خصوصی توجہ دے گی، مراد علی شاہ-پاکستان کی بنیادیں استوار کرنے کیلئے برصغیر کے مسلمانوں نے لاتعداد اور بے مثال قربانیاں دی ہیں، ملک خرم شہزاد-نومنتخب ممبر قومی اسمبلی کو شہری پر تشدد کرنا مہنگا پڑ گیا تحریک انصاف نے رکن سندھ اسمبلی عمران شاہ کو شوکاز نوٹس جاری کردی-لوڈشیڈنگ کے دعوے دھرے رہ گئے ․ پارلیمنٹ لاجز میں بجلی کی طویل بندش ، 282 کے قریب ارکان اسمبلی کو شدید مشکلات کا سامنا ، آئیسکو معقول وجہ بتانے سے قاصر رہا

GB News

نئی وفاقی حکومت آرڈر 2018پر نظر ثانی کرے، با اختیار اور باوقار نظام حکومت دیاجائے، مشتاق ایڈووکیٹ

Share Button

گلگت( نمائندہ خصو صی)سابق وزیر قانون و امیر جماعت اسلامی گلگت بلتستان مشتاق ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ ریاست کے دونوں آزاد خطو ں کی متنازعہ حیثیت برقرار رکھتے ہوئے یکساں نظام حکومت دیا جائے ،آرڈر 2018نہ پبلک کیا گیا اور نہ ہی گلگت بلتستان کے سٹیک ہولڈرز سے رائے لی گئی ،نئی وفاقی حکومت اس آرڈر پر نظر ثانی کرتے ہوئے گلگت بلتستان کے تمام سٹیک ہولڈرز سے رائے لے کر با اختیار اور باوقار نظام حکومت دیاجائے،ان خیالات کااظہار انہوں نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ،انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی اول روز سے یہاں کے عوام کی آئینی اور سیاسی حقوق کے حصول کی جدوجہد کررہی ہے اب جماعت اسلامی کے موقف پر گلگت بلتستان کی تمام سیاسی اور مذہبی جماعتیں آچکی ہیں کہ گلگت بلتستان میں بھی آزادکشمیر طرز کا نظام حکومت دیا جائے ،انہوں نے کہاکہ گلگت بلتستان کے عوام کے لیے جو بھی نظام حکومت وضع ہو اس میں یہاں کے عوام کی رائے شامل کی جائے تا کہ یہاں کے عوام مطمین ہوں جس سے وفاق اور گلگت بلتستا ن کے درمیان رابطے آسان ہوں اور ہم آہنگی پائی جائے انہوں نے کہا کہ یہ حساس خطہ ہے دشمن کی نظریں اس پر لگی ہوئی ہیں یہاں کے حوالے سے فیصلے کرنے سے قبل یہاں کے عوام کو بھی اعتماد میں لیا جائے ۔

Facebook Comments
Share Button