تازہ ترین

Marquee xml rss feed

خیبرپختونخواہ میں ہزاروں ملازمتیں ختم کرنے کا اعلان خیبرپختونخوا حکومت نے 4 ارب روپے کی بچت کے لیے صوبے میں 6 ہزار 500 ملازمتیں ختم کرنے کا فیصلہ کیاکرلیا-حکومت ملک میں کاروبار ی لاگت کم کرنے اور کاروباری طبقے کو ہر ممکنہ سہولت فراہم کر کے کاروبار کو آسان بنانے کے حوالے سے ملکی رینکنگ بہتر کرنے کیلئے پر عزم ہے، حکومت کاروبار ... مزید-اسلام آباد ،صرف آئی ایم ایف پر انحصار کرنے کی بجائے متبادل حل پر بھی کا م کر رہے ہیں،اسدعمر وال سٹریٹ جنرل کے انکشافات کی تحقیقات ہونی چاہیئے، اچھے فیصلے کروں یا برے ... مزید-ترجمان وزیر اعلیٰ پنجاب کا وزیر اعلی پنجاب سیکرٹریٹ کا بجٹ بڑھانے کی ترددید پچھلی حکومت کی جانب سے اس مد میں خرچ کئیے جانے والی رقم 802 ملین تھی جبکہ ہم نے جو رقم اس مد میں ... مزید-پاک پتن دربار اراضی قبضہ کیس،نواز شریف سمیت دیگر فریقین کو دوبارہ نوٹس جاری، آئندہ سماعت پرعدالت کو اراضی کا مکمل ریکارڈ پیش کیا جائے ،سپریم کورٹ-سابقہ حکومتوں نے جس انداز میں سرکاری وسائل اور عوام کے پیسوں کا استعمال کیا اور ملک کو جس دلدل میں دھکیلا ہے اس کی مثال نہیں ملتی، آج ملک تیس ٹریلین کا مقروض ہو چکا ہے۔ ... مزید-چترال میں کیلاش قبائل کی حدود میں تجاوزات سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت،کیلاش قبائل کے لوگوں کی زمینوں پر قبضہ نہ کیا جائے، انہیں مکمل آزادی اور حقوق ملنے چاہئیں،کیلاش ... مزید-سپریم کورٹ نے لاہورکے سول اور کنٹونمنٹ علاقوں میں لگائے گئے تمام بڑے بل بورڈز اور ہورڈنگز ڈیڑھ ماہ کے اندر ہٹانے کا حکم جاری کر دیا، پبلک پراپرٹی پر کسی کوبھی بورڈ لگانے ... مزید-کے الیکٹرک بکا ہی نہیں تھا اس لئے کسی ڈیل کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا،خواجہ آصف-سپریم کورٹ کے فیصلے سے سعدیہ عباسی اور ہارون اختر تاحیات نا اہل نہیں ہوئے :آئینی ماہر بیرسٹر علی ظفر

GB News

کہیں بھی حکومت نام کی چیز نظر نہیں آرہی،امجد حسین ایڈووکیٹ

Share Button

گلگت(ثاقب عمر سے)پاکستان پیپلز پارٹی گلگت بلتستان کے صدر امجد حسین ایڈووکیٹ نے حفیظ الرحمن سے سوال کرتے ہوئے کہا ہے کہ جن دہشت گردوں نے دیامر میں سکول جلائے وہ پہلے بھی سکولوں کی توڑ پھوڑ سمیت جلانے میں ملوث تھے ان افراد کوفورتھ شیڈول سے باہر کیوں رکھاگیا ہے آخر نیشنل ایکشن پلان کس کے خلا ف بنا ہے صرف اپنے مخالفین کے خلاف ایکشن پلان استعمال کیا جارہا ہے اور سیاسی انتقام کے طورپرفورتھ شیڈول استعما ل کیا جارہا ہے انہوںنے کے پی این سے خصوصی گفتگوکرتے ہوئے کہاکہ جب تک حفیظ الرحمن ریکوزیشن نہ کرے فوج اور ریاستی ادارے کارروائی نہیں کرسکتے ہیں اب تک حفیظ الرحمن خاموش اس لئے ہیں کہ اس کا ووٹ بنک خراب ہوتا ہے انہوںنے کہا کہ سکولوں کو جلانے سے بدامنی کا ماحول پیدا ہوا ہے اس کی ذمہ داری حفیظ الرحمن پر عائد ہوتی ہے اور کہیں بھی حکومت نام کی چیز نظر نہیں آرہی ہے ۔ انہوںنے کہا کہ جو لوگ پہلے سے مطلوب تھے ان لوگوں کو حفیظ الرحمن نے فورتھ شیڈول سے باہر رکھا اور اپنے مخالفین کے خلاف سیاسی انتقام لے کر سیاسی کارکنوں کو فورتھ شیڈول میں ڈالا اس سے یہ بات واضح ہوتی ہے کہ دہشت گردوںکو حکومت تحفظ دے رہی ہے ہمیں خدشہ ہے کہ حکومت کے اس رویے سے دیگر اضلاع میں بھی اس قسم کے واقعات رونما نہ ہوں کیونکہ اس سے قبل ضلع غذر میں سکولوں کو جلانے اور توڑنے کے واقعات سامنے آئے ہیں انہوںنے کہا کہ دیامر میں سکول جلانے سے 20دن قبل وزارت داخلہ نے بتایا بھی تھا کہ گلگت بلتستان میں دہشتگردی ہوسکتی ہے لیکن صوبائی حکومت نے ہاتھ پر ہاتھ رکھ کر کوئی بھی ایکشن نہیں لیاگیا جس کی وجہ سے آج سکولوں کے جلانے کا واقعہ رونما ہوا ۔انہوںنے کہا کہ حفیظ الرحمن کا سرینڈر کرنا اپنے ووٹ بنک کو بچانا ہے اورالٹا دہشت گردی کے واقعے کو ریاستی اداروں کے سر پر ڈال کر جان چھڑانے کی کوشش کی آئندہ کوئی اس قسم کا واقعہ ہوا تو حفیظ الرحمن ذمہ دار ہوگا۔

Facebook Comments
Share Button