تازہ ترین

Marquee xml rss feed

وزیر اعظم عمران خان کی روضہ رسول ﷺ پر حاضری، سعودی حکام کی جانب سے روضہ رسولﷺ کے دروازے خصوصی طور پر کھول دیئے گئے-آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی چین کے سنٹرل ملٹری کمیشن کے وائس چیئرمین جنرل یانگ یوشیا سے ملاقات کی، دہشتگردی کے خاتمے، ہتھیاروں و سازوسامان کی ٹیکنالوجی اور ٹریننگ ... مزید-ڈاکٹر بننے کا خواب دیکھنے والی خاتون نے ٹرک چلانا شروع کر دیا ناگرپارکر سے تعلق رکھنے والی خاتون مالی مشکلات کی وجہ سے ڈاکٹر نہیں بن سکی تھی-موسمیاتی تغیرات کے اس دور میں بجلی پیدا کرنے کیلئے ایٹمی توانائی کا استعمال امید افزاء آپشن ہے، ہم پاکستان میں نیوکلیئر ٹیکنالوجی کے پرامن استعمال کے فروغ کیلئے آئی ... مزید-سعودی عرب اور پاکستان کے درمیان دوستانہ اور تاریخی تعلقات قائم ہیں، وزیراعظم عمران خان کا دورہ انتہائی اہمیت کا حامل ہے،سعودی عرب اور پاکستان دنیا میں اسلام کی حقیقی ... مزید-کیا کل نواز شریف اور مریم نواز کی سزا معطل کی جا رہی ہے؟ نیب عدالت کو مطمئن نہیں کر پا رہی اس سے اندازہ ہو رہا ہے کہ معاملات کس طرف جا رہے ہیں،ملزمان کا پلڑہ بھاری نظر آ ... مزید-اسد عمر اور اسحاق ڈار میں کوئی فرق نہیں اسد عمر نے بھی اعدادو شمار کا ہیر پھیر کر کے اسحاق ڈار والے کام کیے-پی ٹی آئی نے جو منشور دیاتھا اور جو اعلانات کیے ، ان پر عملدرآمد حکومت کا امتحان ہے ‘سراج الحق عوام نے انہیں گیس ، بجلی اور پٹرول مہنگا کرنے کے لیے نہیں، سستا کرنے کے ... مزید-اہل بیت کی عظم قربانی درحقیقت پوری امت مسلمہ کے لئے درخشاں مثال ہے‘چوہدری محمد سرور اللہ کی رسی کو مضبوطی سے تھامے رکھنا اور فرقہ واریت کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنا وقت کی ... مزید-وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کا وزیراعلیٰ سیکریٹریٹ کے مختلف شعبوں کا معائنہ

GB News

آئندہ کسی اور کی جنگ نہیں لڑیں گے، وزیراعظم

Share Button

وزیراعظم عمران خان نے کہاہے کہ میرا قوم سے وعدہ ہے کہ پاکستان کبھی کسی دوسرے کی جنگ میں شریک نہیں ہو گا،ہماری خارجہ پالیسی بھی پاکستان کی بہتری کے لیے ہو گی، ملک میں اس وقت ایک ادارہ ہے جو کام کر رہا ہے، فوج ایسا ادارہ ہے جہاں میرٹ کا نظام ہے، ہمیں اپنے ادارے مضبوط کرنے ہیں ، ، اگر کوئی ادارہ اس وقت متحد ہے تو وہ پاک فوج ہے ، سول ملٹری تعلقات کا کوئی تنازع نہیں ، سیاسی مداخلت سے ادارے تباہ ہو جاتے ہیں ، ہمیں ریاست مدینہ کے سنہری اصولوں کو مدنظر رکھنا ہوگا، پاکستان کو بڑے مسائل درپیش ہیں ، ملک قرضوں میں ڈوبا ہوا ہے ، منزل کے حصول کیلئے ہر شہری کو اپنی ذمہ داری ادا کرنی ہوگی،میں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں شرکت کے خلاف تھا لیکن جس طرح سے پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں کامیابیاں حاصل کیں دنیا میں کسی بھی فوج نے اس طرح کی کامیابیاں حاصل نہیں کیں ،شہدا پاکستان کی لازوال قربانیوں کوسلام پیش کرتا ہوں، اگر کرکٹ نہ کھیلتا تو آج ایک ریٹائرڈ فوجی ہوتا ۔وہ جمعرات کو یہاں جی ایچ کیو راولپنڈی میں یوم دفاع وشہد اء کی مرکزی تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب کر رہے تھے ۔ تقریب میں خاتون اول بشریٰ عمران وزیردفاع پرویز خٹک، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی ، وزیر اطلاعات فواد چوہدری ، وزیر ریلوے شیخ رشید ، وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی، وزیر خزانہ اسد عمر، مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف اور پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری سمیت ارکان پارلیمنٹ کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ اس کے علاوہ شہداء کے لواحقین ، غازی، سول وعسکری حکام ، سول سوسائٹی اور مختلف مکاتب فکر کے نمائندوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ قبل ازیں وزیراعظم عمران خان نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے ہمراہ یاد گار شہدا پر پھولوں کی چادر چڑھائی اور فاتحہ خوانی کی۔بعد ازاں یوم دفاع کی مرکزی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ میرا قوم سے وعدہ ہے کہ پاکستان کبھی کسی کی جنگ میں شرکت نہیں کرے گا اور ہماری خارجہ پالیسی بھی پاکستان کی بہتری کے لیے ہو گی۔ عمران خان نے کہا کہ شہداء کے وطن کی لازوال قربانیوں کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں ، 1965کی ساری قوم فوج کے ساتھ کھڑی تھی ،ویسا جذبہ آج تک نہیں دیکھا، میں کرکٹ میں نہ جاتا تو ہوسکتا ہے آج ریٹائرڈ فوجی ہوتا، فوج نے بہادری سے لاہور کا دفاع کیا ، میں نہیں چاہتا تھا پاکستان کسی اور کی جنگ میں پڑے ، پاکستان کبھی کسی اور کی جنگ میں شرکت نہیں کرے گی ، قوم کیلئے خارجہ پالیسی بنائیں گے ،د ہشت گردی کی جنگ میں فوج اور خفیہ اداروں کا کردار ناقابل بیان ہے ، اس وقت ایک ادارہ جو کام کررہا ہے وہ پاکستانی فوج ہے کیونکہ کسی قسم کی سیاسی مداخلت نہیں ہے اور میرٹ کا نظام ہے ، میرٹ کسی ادارے کیلئے بہت ضروری ہے ۔1960میں ہماری سول سروس پورے ایشیا میں بہترین تھی ، سیاسی مداخلت ہوتو ادارے تباہ ہوتے ہیں ، بمباری اور جنگیں ملک کو تباہ نہیں کر سکتیں ۔پاکستان میں بے تحاشا ذخائر ہیں ، ہم نے اداروں کو مضبوط کر کے میرٹ لے کر آنا ہے ، حضرت محمد ۖ دنیا کے عظیم لیڈر ہیں جنہوں نے عرب کو دنیا کی عظیم قوم بنایا اور دنیا کی امامت کی ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان واحد ملک ہے جو اسلام کے نام پر بنا ، لوگ جب قوم بننتے ہیں تو ان کو ترقی سے کوئی نہیں روک سکتا ، جب انصاف کا دورہ دورہ ہوتا ہے تو قومیں ترقی کی راہ پر چلتی ہیں ،حضرت محمد ۖ نے تعلیم پر زوردیا ، پاکستان کے بڑے مسئلے ہیں جن کو حل کر کے دکھائیں گے ، پاکستان اٹھے گا اور عظیم ملک بنے گا ، جب عام آدمی کو انصاف ملے گا ۔ ریاست کا کام کہ عوام کو صحت، تعلیم کی سہولیات برابر فراہم کر ے تب ہی قوم یکجا ہوگی ۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ نبی اکرم ۖ نے وہ اصول دیے جس سے عرب نے عمل کر کے دنیا پر حکومت کی ، سول ملٹری تعلقات میں کوئی تنازعہ نہیں ہے ،ہم سب نے مل کر ملک کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنا ہے ، پاک فوج کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں جنہوں نے دہشت گردی سے ملک کو نجات دی ، منزل کے حصول کیلئے ہر شہری کو اپنی ذمہ داری ادا کرنی ہوگی ۔ (ن م)

Facebook Comments
Share Button