تازہ ترین

Marquee xml rss feed

نعیم الحق نے شہباز شریف کے پروڈکشن آرڈر ضبط کرنے کی دھمکی دے دی شہباز شریف اور اس کے چمچوں کی اتنی جرات کہ وہ قومی اسمبلی میں وزیر اعظم پر ذاتی حملے کریں۔کیا وہ جیل میں ... مزید-وزیراعظم کا سانحہ ساہیول پر وزراء متضاد بیانات پر سخت برہمی کا اظہار آئندہ بغیر تیاری میڈیا پر بیان بازی نہ کی جائے انسانی زندگیوں کا معاملہ ہے کسی قسم کی معافی کی گنجائش ... مزید-5 ارب روپے قرض حسنہ کیلئے مختص کرنا خوش آئند ہے، فنانس بل میں غریب آدمی کو صبر کا پیغام دیا گیا ہے امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق کی پارلیمنٹ ہائوس کے باہر میڈیا ... مزید-فنانس بل سے متوسط طبقہ کو ریلیف ملا ہے، عوام کا پیسہ عوام پر خرچ ہو گا، اپوزیشن کے پاس بات کرنے کو کچھ نہیں وفاقی وزیر آبی وسائل فیصل واوڈا کی پارلیمنٹ ہائوس کے باہر میڈیا ... مزید-صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی ایس94 کے ضمنی الیکشن کے موقع پر سیکورٹی کو غیرمعمولی بنایا جائے، آئی جی سندھ-وزیر خزانہ اسد عمر کی طرف سے قومی اسمبلی میں پیش کردہ ضمنی مالیاتی (دوسری ترمیم) بل 2019 کا مکمل متن-جنوری کو ہونے والے ضمنی انتخابات کراچی کی سیاست میں نئی راہیں متعین کرے گا،مصطفی کمال پی ایس پی کسی فرد یا گروہ کا نام نہیں ہے بلکہ ایک تحریک کا نام ہے جو مظلوم و محکوموں ... مزید-ملک کا اقتصادی مستقبل کراچی کی معاشی ترقی میں مضمر ہے۔گورنر سندھ-سی پیک پاکستان اور چین کے مابین تعلقات کو مزید گہرا کرنے کے لئے مستحکم بنیاد، خطے کو منسلک کرنے میں اہم کردارادا کر رہا ہے، سی پیک تمام خطے میں امن و استحکام لانے میں ... مزید-احتساب عدالت اسلام آباد میں اسحاق ڈار کیخلاف آمدن سے زائد اثاثوں کے مقدمے میں دو مزید گواہوں کے بیانات ریکارڈ

GB News

سرکاری محکموں کے اندر اندھیر نگری اور اقربا پروری کی وجہ سے عارضی ملازمین احتجاج پر مجبور ہیں،مولانا سلطان رئیس

Share Button

گلگت (نمائندہ خصوصی ) عوامی ایکشن کمیٹی کے چیئرمین مولانا سلطان رئیس نے کہا ہے کہ وفاق سے آنے والے چیف سکریٹریز گلگت بلتستان کو کتنا ٹیکس دیتے ہیں جو شاہانہ مراعات مانگ رہے ہیں.سرکاری محکموں کے اندر اندھیر نگری اور اقربا پروری کی وجہ سے عارضی ملازمین احتجاج پر مجبور ہیں.مولانا سلطان رئیس چئیرمین عوامی ایکشن کمیٹی نے اپنے جاری بیان میں کہا کہ گلگت بلتستان میں آنے والے چیف سکریٹریز کے مراعات اور پروٹوکول میں اضافے کا سن کر نہ صرف افسوس ہوا صوبائی حکومت اور گورنر گلگت بلتستان کا کردار بھی مشکوک ہوچکا ہے ایسی سوچ اگر پیدا کی گئی ہے تو فورا اسے ترک کیا جائے کیوں کہ عوامی ایکشن کمیٹی اس طرح عوامی مال پر ڈاکہ ڈالنے کی ہرگز اجازت نہیں دے سکتی اگر اس پر عملدرآمد کرا نے کی کوشش کی گئی تو ممبران اسمبلی کے اضافی مراعات اور تنخواہوں کے خلاف بھی تحریک چلے گی۔انہوں نے کہا کہ ایگریمنٹ اور معاہدوں کے باوجود عارضی ملازمین کو مستقل نہ کرنا افسوسناک ملازمین کی احتجاج کا مکمل حمایت کریں گے محسوس یوں ہوتا ہے کہ گلگت بلتستان حکومت نے احتجاج سے پہلے مسائل حل نہ کرنے کی قسم کھا رکھی ہے ۔

Facebook Comments
Share Button