تازہ ترین

Marquee xml rss feed

بچے کی ولادت دوہری خوشی لائے گی بچے کی ولادت پر ماں کے لیے 6 اور باپ کے لیے 3 ماہ کی چھٹیوں کا بل سینیٹ میں پیش کر دیا گیا-وزیر اعظم عمران خان 21 نومبر کو ملائشیا کے دورے پر روانہ ہوں گے وزیر اعظم ، ملائشین ہم منصب سے ملاقات کے علاوہ کاروبای شخصیات سے ملاقاتیں کریں گے-متعدد وزراء کی چھٹی ہونے والی ہے 100 روز مکمل ہونے پر 5,6 وفاقی وزراء اور متعدد صوبائی وزراء اپنی ناقص کارکردگی کے باعث اپنی وزارتوں سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے-نوازشریف،مریم نوازاورکیپٹن(ر)صفدرکی رہائی کےخلاف نیب اپیل کامعاملہ سپریم کورٹ نے نیب اپیل پر لارجر بنچ تشکیل دینے کا حکم جاری کردیا-ڈیرہ اسماعیل خان میں جشن عید میلاد النبی ؐکی تیاریاںعروج پرپہنچ گئیں-آئی جی سندھ نے حیدرآباد میں واقع مارکیٹ میں نقب زنی کا نوٹس لے لیا-عمر سیف سے چیئرمین پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کا اضافی چار ج واپس لے لیا گیا-پنجاب کے 10ہزار فنکاروں کے لئے 4لاکھ روپے مالیت کے ہیلتھ کارڈ جاری کئے جائیں گے‘فیاض الحسن چوہان صوبے میں 200فنکاروں اور گلوکاروںمیں ان کی کارکردگی,اہلیت اور میرٹ کی ... مزید-پاکستان میں امیر اور غریب کے درمیان طبقاتی فرق اضافہ ہوگیا ہے ،ْ دن بدن فرق بڑھتا جارہاہے ،ْ ورلڈبینک-وزیراعظم جنوبی پنجاب صوبے سے متعلق جلد اہم اقدامات کا اعلان کرینگے جنوبی پنجاب صوبے کے قیام کیلئے وزیراعظم عمران خان اتحادی جماعتوں اور اپوزیشن ارکان پر مشتمل کمیٹی ... مزید

GB News

سرکاری محکموں کے اندر اندھیر نگری اور اقربا پروری کی وجہ سے عارضی ملازمین احتجاج پر مجبور ہیں،مولانا سلطان رئیس

Share Button

گلگت (نمائندہ خصوصی ) عوامی ایکشن کمیٹی کے چیئرمین مولانا سلطان رئیس نے کہا ہے کہ وفاق سے آنے والے چیف سکریٹریز گلگت بلتستان کو کتنا ٹیکس دیتے ہیں جو شاہانہ مراعات مانگ رہے ہیں.سرکاری محکموں کے اندر اندھیر نگری اور اقربا پروری کی وجہ سے عارضی ملازمین احتجاج پر مجبور ہیں.مولانا سلطان رئیس چئیرمین عوامی ایکشن کمیٹی نے اپنے جاری بیان میں کہا کہ گلگت بلتستان میں آنے والے چیف سکریٹریز کے مراعات اور پروٹوکول میں اضافے کا سن کر نہ صرف افسوس ہوا صوبائی حکومت اور گورنر گلگت بلتستان کا کردار بھی مشکوک ہوچکا ہے ایسی سوچ اگر پیدا کی گئی ہے تو فورا اسے ترک کیا جائے کیوں کہ عوامی ایکشن کمیٹی اس طرح عوامی مال پر ڈاکہ ڈالنے کی ہرگز اجازت نہیں دے سکتی اگر اس پر عملدرآمد کرا نے کی کوشش کی گئی تو ممبران اسمبلی کے اضافی مراعات اور تنخواہوں کے خلاف بھی تحریک چلے گی۔انہوں نے کہا کہ ایگریمنٹ اور معاہدوں کے باوجود عارضی ملازمین کو مستقل نہ کرنا افسوسناک ملازمین کی احتجاج کا مکمل حمایت کریں گے محسوس یوں ہوتا ہے کہ گلگت بلتستان حکومت نے احتجاج سے پہلے مسائل حل نہ کرنے کی قسم کھا رکھی ہے ۔

Facebook Comments
Share Button