تازہ ترین

Marquee xml rss feed

بچے کی ولادت دوہری خوشی لائے گی بچے کی ولادت پر ماں کے لیے 6 اور باپ کے لیے 3 ماہ کی چھٹیوں کا بل سینیٹ میں پیش کر دیا گیا-وزیر اعظم عمران خان 21 نومبر کو ملائشیا کے دورے پر روانہ ہوں گے وزیر اعظم ، ملائشین ہم منصب سے ملاقات کے علاوہ کاروبای شخصیات سے ملاقاتیں کریں گے-متعدد وزراء کی چھٹی ہونے والی ہے 100 روز مکمل ہونے پر 5,6 وفاقی وزراء اور متعدد صوبائی وزراء اپنی ناقص کارکردگی کے باعث اپنی وزارتوں سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے-نوازشریف،مریم نوازاورکیپٹن(ر)صفدرکی رہائی کےخلاف نیب اپیل کامعاملہ سپریم کورٹ نے نیب اپیل پر لارجر بنچ تشکیل دینے کا حکم جاری کردیا-ڈیرہ اسماعیل خان میں جشن عید میلاد النبی ؐکی تیاریاںعروج پرپہنچ گئیں-آئی جی سندھ نے حیدرآباد میں واقع مارکیٹ میں نقب زنی کا نوٹس لے لیا-عمر سیف سے چیئرمین پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کا اضافی چار ج واپس لے لیا گیا-پنجاب کے 10ہزار فنکاروں کے لئے 4لاکھ روپے مالیت کے ہیلتھ کارڈ جاری کئے جائیں گے‘فیاض الحسن چوہان صوبے میں 200فنکاروں اور گلوکاروںمیں ان کی کارکردگی,اہلیت اور میرٹ کی ... مزید-پاکستان میں امیر اور غریب کے درمیان طبقاتی فرق اضافہ ہوگیا ہے ،ْ دن بدن فرق بڑھتا جارہاہے ،ْ ورلڈبینک-وزیراعظم جنوبی پنجاب صوبے سے متعلق جلد اہم اقدامات کا اعلان کرینگے جنوبی پنجاب صوبے کے قیام کیلئے وزیراعظم عمران خان اتحادی جماعتوں اور اپوزیشن ارکان پر مشتمل کمیٹی ... مزید

GB News

لوٹی ہوئی دولت واپس لانا حکومت کی اولین ذمہ داری ہے،سراج الحق

Share Button

امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ حکومت کے پے در پے اقدامات سے عوام کی مشکلات میں اضافہ ہورہاہے ۔ نظر ثانی بجٹ میں نئے ٹیکس لگائے جارہے ہیں ۔ قابل ٹیکس آمدنی 12 لاکھ سے کم کر کے 8 لاکھ کر دی گئی ہے ۔ ریگولیٹری ڈیوٹی میں پانچ فیصد اضافہ کردیاگیاہے ۔ بجلی کی قیمتوں میں نیپرا نے 4 روپے یونٹ کی تجویز دی ہے اگر اسی رفتار میں قیمتوں میں اضافہ جاری رہا تو غریب تو غریب ، متوسط طبقے کی زندگی بھی اجیرن ہو جائے گی۔ لوٹی ہوئی دولت ملک میں واپس لانا موجودہ حکومت کی اولین ذمہ داری ہے۔ حکومت ٹیکس اکٹھا کرنے والی مشین نہ بنے،سابقہ حکومتیںعوام سے پیسہ اکٹھا کرکے اپنی شاہ خرچیوں پر خرچ کرتی رہی ہیں ، موجودہ حکومت بھی اسی ڈگر چلنے کی کوشش کررہی ہے ۔ وزیروں کی فوج ظفر موج سے ہی اندازہ ہورہا ہے کہ حکومت کی بجٹ پالیسی کہاں گئی، اب عوام تبدیلی چاہتے ہیں۔مدینہ کی اسلامی ریاست میں وقت کا حکمران اپنی رعایا کی ضروریات کا خود خیال رکھتا تھا۔ موجودہ نظام استحصال کا نظام تو ہوسکتا ہے، فلاحی نظام ہر گز نہیں ہے۔ایک ایسا پاکستان بنانے کی ضرورت ہے جس میں وسائل غریبوں سے لینے کی بجائے مالداروں سے لے کر غریبوں پر خرچ کئے جائیں۔غریب و نادار بچیوں کی اجتماعی شادیوں پر الخدمت فاؤنڈیشن کو مبارک باد دیتا ہوں،غریب والدین اپنی بچوں کی شادیاں نہ کرسکنے کی وجہ سے سخت پریشان ہیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعرات کو پشاور کے مقامی شادی ہال میں الخدمت فاؤنڈیشن ضلع پشاور کے زیر اہتمام پچاس جوڑوں کی اجتماعی شادی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

Facebook Comments
Share Button