GB News

رکن اسمبلی جاوید حسین نے 9افراد کے ہمراہ گرفتاری دیدی

Share Button

پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما و رکن اسمبلی جاوید حسین نے ایف آئی آر میں نامزد دیگر 9ملزمان کے ہمراہ گرفتار ی پیش کردی پولیس نے انہیں انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کردیا عدالت نے جاوید حسین سمیت دس افراد کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بجھوادیا4ستمبر 2018کو سوست ڈرائی پورٹ میں ہنگامہ آرائی کرنے کسٹم حکام اور پورٹ انتظامیہ کے خلاف دھمکی آمیز زبان استعمال کرنے کے الزام میں ڈپٹی کلکٹر کسٹم سوست ،کسٹم انتظامیہ اور این ایل سی کی جانب سے رکن اسمبلی جاوید حسین سمیت دیگرافراد کے خلاف سوست پولیس اسٹیشن میں تین الگ الگ ایف آئی آر کا اندراج کرایا تھا ان میں سے ایک ایف آئی آر میں انسداد دہشت گردی کی دفعہ بھی شامل کی گئی تھی ایف آئی آر میں نامزد رکن اسمبلی جاوید حسین اوردیگرافراد نے عدالت سے ضمانت قبل از گرفتاری حاصل کی تھی جمعرات کے روز صبح 8بجے رکن اسمبلی جاویدحسین نے ایف آئی آر میں نامزد دیگر 9افراد امپورٹر اینڈ ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن کے صدرمحمد اسماعیل ،سینئر نائب صدر محمد اقبال ،سید شہزاد،سابق ممبر ضلع کونسل منظوربگورو،سابق ممبر بلدیہ رمضان علی ،عرفان ،حاجت،صداقت ،عسکری عرف موٹو کے ہمراہ پولیس انوسٹی گیشن ونگ گلگت میں پیش ہوئے اور گرفتاری دیدی۔پولیس ان تمام دس افراد کو انسداددہشت گردی کی عدالت میں پیش کیا۔عدالت نے جوڈیشل ریمانڈ پر انہیں جیل بجھوادیا ہے گرفتاری پیش کرنے سے قبل رکن اسمبلی جاویدحسین نے کے پی این سے گفتگوکرتے ہوئے بتایا کہ سوست میں ہونے والی ہنگامی آرائی میں ہمارا کوئی کردارنہیں تھا مگر کسٹم حکام نے بدنیتی کی بنیادپر ہمارے خلاف ایف آئی آر درج کرایا تھا اورمیں نے عدالت سے ضمانت لی ہوئی ہے مگر چونکہ ہم قانون کی حکمرانی پر یقین رکھتے ہیں اس لئے میں نے ایف آئی آر میں نامزد دیگر افراد کے ساتھ گرفتاری پیش کرنے کا فیصلہ کیا ہے انہوںنے کہا کہ ہم سب بے گناہ ہیں اس لئے انشاء اللہ عدالت سے ہمیں انصاف کی توقع ہے ۔

Facebook Comments
Share Button