تازہ ترین

Marquee xml rss feed

حکومت اور تحریک لبیک پاکستان میں بیک ڈور رابطے تحریک لبیک کے 322 رہنماؤں اور کارکنان کو رہا کر دیا گیا-سپریم کورٹ کا علیمہ خان کو 29.4 ملین روپے جمع کروانے کا حکم-چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کا تھر کا دورہ چیف جسٹس کے دورے کے دوران کئی اہم انکشافات سامنے آ گئے-خواجہ سعد رفیق ریلوے خسارہ کیس کی سماعت کے لیے سپریم کورٹ میں پیشی سابق وزیر ریلوے کو نیب اور پولیس کی تحویل میں عدالت میں لایا گیا-سپریم کورٹ نے پاکپتن اراضی کیس میں جے آئی ٹی تشکیل دے دی تین رکنی جے آئی ٹی کے سربراہ خالد داد لک ہوں گے جب کہ تحقیقاتی ٹیم میں آئی ایس آئی اور آئی بی کا ایک ایک رکن بھی شامل ... مزید-لاہور میں پنجاب اسمبلی کی خالی نشست پی پی 168 پر ضمنی انتخاب‘نون لیگ اور تحریک انصاف میں مقابلہ پولنگ کا آغاز صبح 8 بجے سے 5 بجے تک جاری رہے گی-نواز شریف کے خلاف العزیزیہ ریفرنس کی سماعت‘فیصلہ محفوظ کیے جانے کا امکان نیب پراسیکیوٹر سردار مظفر عباسی جواب الجواب دے رہے ہیں‘حسن، حسین کی پیش دستاویزات کو انڈورس ... مزید-صدر مملکت عارف علوی کی عمرہ کی ادائیگی صدر مملکت کے لیے خانہ کعبہ کا دروازہ بھی کھولا گیا-گوگل پر احمق (Idiot) لکھیں صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی تصاویردیکھیں کمپنی نے کانگریس کی کمیٹی کے سامنے پیش ہوکر مبینہ الزام کو مسترد کردیا-آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوران ملک کے شمالی علاقوں میں موسم شدید سرد اور خشک رہے گا، محکمہ موسمیات

GB News

گوادر میں بنائی جانے والی 70 سے زائد ہاؤسنگ اسکیمیں جعلی ہونے کا انکشاف

Share Button

کوئٹہ: بلوچستان کے ساحلی شہر گوادر میں بنائی جانے والی 70 سے زائد ہاؤسنگ اسکیمیں جعلی نکلیں۔

گوادر میں ڈیپ سی پورٹ مکمل ہونے اور سی پیک منصوبے کے باعث ان دنوں وہاں نئی نئی ہاوسنگ اسکیمیں بنائی جارہی ہیں اور مختلف ناموں سے بنائی جانے والی ہاؤسنگ اسکیموں کے بورڈ شہر کے مختلف علاقوں میں نظر آتے ہیں۔

لیکن ڈائریکٹر جنرل نیب بلوچستان نے یہ کہہ کر صوبے کے لوگوں اور گوادر میں سرمایہ لگانے والوں کوخبردار کردیا کہ گوادر میں 70 سے زائد ہاؤسنگ اسکیمیں درست نہیں۔

ڈی جی نیب بلوچستان عابد جاوید کا کہنا ہے کہ گوادر میں ہاؤسنگ اسکیموں کے حوالے سے مسائل ہیں، گوادر میں 115 میں سے شاید 44 ہاؤسنگ اسکیمیں ٹھیک ہیں، باقی سب غلط ہیں۔

 بڑے پیمانے پر بے قاعدگیاں سامنے آنے کے بعد قومی احتساب بیورو نے ان ہاؤسنگ اسکیموں کا ریکارڈ قبضہ میں لینے کا فیصلہ کیا ہے جب کہ سپریم کورٹ کے حکم پر گوادر میں ہاؤسنگ اسکیموں کا فارنزک آڈٹ بھی کرایا جائے گا۔

گوادر بِلڈرز ایسوسی ایشن نے ہاؤسنگ اسکیموں کے جعلی ہونے کی تردید

دوسری جانب گوادر بِلڈرز اینڈ ڈیولپرز ایسوسی ایشن نے ہاؤسنگ اسکیموں کے جعلی ہونے کی تردید کی ہے۔

ترجمان ایسوسی ایشن کے مطابق این او سی ہولڈر اسکیموں کا جعلی ہونا کسی بھی صورت ممکن نہیں۔

گوادر میں پچھلے 10 برسوں کے دوران زمینوں کے کئی تنازعات سامنے آئے ہیں جو ملک بھر کی مختلف عدالتوں میں زیر سماعت ہیں تاہم اب نیب کی گوادر میں ان ہاؤسنگ اسکیموں کیخلاف کارروائی سے ان اسکیموں کے سرمایہ کاروں کا سرمایہ خطرے میں پڑگیا ہے۔

Facebook Comments
Share Button