تازہ ترین

Marquee xml rss feed

یہ تاثر قائم کر دیا گیا ہے تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کرو یا پھر جیل جاؤ، بلاول بھٹو کا بابر اعوان کی بریت پر ردِ عمل حکومت کا صوبوں کے ساتھ رویہ ٹھیک نہیں ہے، یہ صوبائی ... مزید-اگر سیلز ٹیکس واپس ہی کرنا ہے تو پھر لیتے کیوں ہیں؟ عبدالرزاق داؤد ایک دم صفر سے 17فیصد ٹیکس لگانے سے مسائل پیدا ہوں گے،ہم ہمیشہ ریونیو کے پیچھے گئے صنعتی ترقی کے پیچھے ... مزید-نیب نے بابر اعوان کو معاف نہیں کیا، ہمایوں اختر خان بابر اعوان کی بریت کا فیصلہ احتساب عدالت کا ہے، رہنما پاکستان تحریکِ انصاف-حضرو میں ماں اپنی بیٹی کی عزت بچانے کی کوشش میں جان کی بازی ہار گئی حملہ آور نے بیٹی کی جان بچانے کی کوشش کرنے والی خاتون کو چاقو کے وار کرکے شدید زخمی کیا، بعد ازاں خاتون ... مزید-چند سالوں میں پیٹرول ناقابل یقین حد تک سستا جبکہ اس کا استعمال بھی نہ ہونے کے برابر ہو جائے گا دنیا کی بڑی بڑی کمپنیاں اب بجلی سے چلنے والی ہائبرڈ گاڑیاں تیار کر رہی ہیں، ... مزید-وزیراعلی سندھ سے برٹس ٹریڈ کمشنر فار پاکستان، مڈل ایسٹ کی وزیراعلی ہائوس میں ملاقات-گراں فروشی، ملاوٹ اور غیر معیاری اشیاکی فروخت کے خلاف کاروائی جاری رکھی جائے، وزیراعلی-لیبر تنظیموں کا اپوزیشن کی متوقع احتجاجی تحریک سے مکمل لاتعلقی کا اعلان ملک کو معاشی طور پر مضبوط بنانے کیلئے حکومت اور قومی اداروں کے ساتھ کھڑے ہیں ‘لیبرتنظیمیں اپوزیشن ... مزید-ناقص معاشی پالیسیوں کے ذمہ دار ہم سے 10 ماہ کا حساب مانگ رہے ہیں، جب تک معیشت بہتر نہیں ہو جاتی ہم ان سے ان کے 40 سالوں کا حساب مانگتے رہیں گے‘ ماضی میں ذاتی مفادات کے لئے ... مزید-نیب لاہور نے ہسپتالوں کے مضر صحت فضلہ سے گھریلو اشیاء کی تیاری کے حوالے سے میڈیا رپوٹس کا نوٹس لے لیا متعلقہ اداروں کے حکام بریفنگ کیلئے طلب ‘ ملوث عناصر کے خلاف ٹھوس ... مزید

GB News

قراقرم انٹرنیشنل یونیورسٹی:انجینئرنگ فیکلٹی کوعمارت پر دو ہفتوں کے اندر کام شروع کرانے کی مہلت

Share Button

اسلام آباد ( پ ر) ہائرایجوکیشن کمیشن نے قراقرم انٹرنیشنل یونیورسٹی کوانجینئرنگ فیکلٹی عمارت پر دو ہفتوں کے اندر کام شروع کرانے کی مہلت دی ہے۔ مقررہ مدت کے اندر کام شروع نہ ہونے کی صورت میں انجینئرنگ فیکلٹی کا منصوبہ ختم کردیا جائیگا۔ ہائرایجوکیشن کمیشن کے پلاننگ اینڈ ڈیولپمنٹ ڈویژن نے کے آئی یوانتظامیہ کو حتمی نوٹس جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ 80کروڑ روپے لاگت کا یہ منصوبہ منظورہوئے 3سال سے زائد عرصہ گذرچکا ہے اور تاحال یونیورسٹی مختص اراضی پر تنازعہ کے باعث کام شروع نہ کراسکی ہے ۔ اب مزید اس منصوبے کے اجراء میں توسیع ممکن نہیں۔ لہذا یونیورسٹی انتظامیہ فی الفور دو ہفتوں کے اندر اس منصوبے پر کام شروع کرائے ، بصورت دیگر منصوبے کے کیلئے مختص فنڈ واپس لئے جائیں گے۔ ہائرایجوکیشن کمیشن کی جانب سے واضح وارننگ ملنے کے بعد یونیورسٹی کے وائس چانسلر نے پلاننگ اینڈ ڈولمپنٹ کمیٹی کا اجلاس طلب کرلیا ہے اور قوی امکان ہے کہ یہ منصوبہ کسی دوسرے ضلع میں منتقل کیا جائے تاکہ گلگت بلتستان کروڑوں روپے لاگت کے اس عظیم تعلیمی منصوبے سے محروم نہ ہو۔ اس منصوبے کیلئے چھلمس داس میں مختص اراضی کا مسئلہ حل ہونے میں مسلسل تاخیر اس منصوبے کی ناکامی کا باعث بن گیا ہے۔ لہذا مزید چھلمس داس کے تنازعہ میں پڑنے کے بجائے اس منصوبے کو ضلع دیامر ، ضلع غذر یا ضلع سکرد و منتقل کیا جاسکتاہے۔ ان اضلاع کے عوام کی جانب سے اس منصوبے کیلئے بلا معاوضہ اراضی فراہم کرنے کی پہلے ہی پیشکش کرچکے ہیں۔ ہائرایجوکیشن کمیشن کی جانب سے حتمی وارننگ ملنے کے بعد وائس چانسلر نے بھی یہ منصوبہ کسی دوسرے اضلاع میں منتقل کرنے کا عندیہ دیاہے تاہم اس کی منتقلی کے حتمی فیصلے کیلئے پلاننگ اینڈ ڈولمپنٹ کمیٹی سے منظوری لی جائیگی۔ واضح رہے کہ 80کروڑ روپے کی لاگت سے انجینئرنگ فیکلٹی کی منظوری مارچ 2015میں ہوئی ہے۔ اس وقت سے تاحال چھلمس داس کے مقام پر KIUکے نام پر الاٹ شدہ 1692کنال اراضی پر یونیورسٹی کو قبضہ نہیں دیا جارہا۔ اس تنازعے کے حل کیلئے یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر عطاء اللہ شاہ نے ہر سطح پر کوششیں کی۔ مفاہمتی کمیٹیاں بنائی گئیں۔ عمائدین اور عوامی سطح پر خود ملاقاتیں کی۔ صوبائی حکومت کے علاوہ صدر پاکستان تک اس مسئلے کے حل کی اپیلیں کی گئیں۔ لیکن تاحال مسئلے کا حل نہ نکلنے کے باعث یہ منصوبہ کھٹائی میں پڑنے کے امکانات واضح ہوگئے ہیں۔ تاہم وائس چانسلر کی اب بھی کوشش ہے کہ اس منصوبے کو ختم ہونے سے گلگت کے بجائے کسی دوسرے اضلاع میں منتقل کیا جائے ، جہاں آسانی سے اراضی دستیاب ہو۔ اس کا فیصلہ بہت جلد ہوگا۔

Facebook Comments
Share Button