تازہ ترین

Marquee xml rss feed

حکومت اور تحریک لبیک پاکستان میں بیک ڈور رابطے تحریک لبیک کے 322 رہنماؤں اور کارکنان کو رہا کر دیا گیا-سپریم کورٹ کا علیمہ خان کو 29.4 ملین روپے جمع کروانے کا حکم-چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کا تھر کا دورہ چیف جسٹس کے دورے کے دوران کئی اہم انکشافات سامنے آ گئے-خواجہ سعد رفیق ریلوے خسارہ کیس کی سماعت کے لیے سپریم کورٹ میں پیشی سابق وزیر ریلوے کو نیب اور پولیس کی تحویل میں عدالت میں لایا گیا-سپریم کورٹ نے پاکپتن اراضی کیس میں جے آئی ٹی تشکیل دے دی تین رکنی جے آئی ٹی کے سربراہ خالد داد لک ہوں گے جب کہ تحقیقاتی ٹیم میں آئی ایس آئی اور آئی بی کا ایک ایک رکن بھی شامل ... مزید-لاہور میں پنجاب اسمبلی کی خالی نشست پی پی 168 پر ضمنی انتخاب‘نون لیگ اور تحریک انصاف میں مقابلہ پولنگ کا آغاز صبح 8 بجے سے 5 بجے تک جاری رہے گی-نواز شریف کے خلاف العزیزیہ ریفرنس کی سماعت‘فیصلہ محفوظ کیے جانے کا امکان نیب پراسیکیوٹر سردار مظفر عباسی جواب الجواب دے رہے ہیں‘حسن، حسین کی پیش دستاویزات کو انڈورس ... مزید-صدر مملکت عارف علوی کی عمرہ کی ادائیگی صدر مملکت کے لیے خانہ کعبہ کا دروازہ بھی کھولا گیا-گوگل پر احمق (Idiot) لکھیں صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی تصاویردیکھیں کمپنی نے کانگریس کی کمیٹی کے سامنے پیش ہوکر مبینہ الزام کو مسترد کردیا-آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوران ملک کے شمالی علاقوں میں موسم شدید سرد اور خشک رہے گا، محکمہ موسمیات

GB News

گلگت بلتستان کی کلچر و ثقافت کشمیر یوں سے بہت مختلف ہے،راجہ جہانزیب

Share Button

گلگت(پ ر)ممبر گلگت بلتستان اسمبلی راجہ جہانزیب نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ حفیظ الرحمن وفاق اور گلگت بلتستان میں دوریاں پیدا کرنے کیلئے ٹکراوکی باتیں کررہے ہیں ،یہ جان بوجھ کر ایسے حالات پیدا کررہے ہیں کہ وفاقی حکومت اور گلگت بلتستان میں دوریاں پیدا ہو تاکہ ان کو وفاق پر تنقید کرتے ہوئے اپنے دن پورے کیئے جاسکے ۔انہوں نے بدھ کے روز میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان کی گلگت بلتستان سے محبت ہے جس کا واضح ثبوت جی بی کی آئینی حیثیت کے حوالے سے پیش رفت ہے ،ورنہ آج سے قبل 70سالوں میں پاکستان میں بڑے بڑے حکمران آئے لیکن اس طرح کی کوشش کسی نے نہیں کی تھی ۔انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ تحریک انصاف کا گلگت بلتستان کے حوالے سے واضح موقف ہے اور ہمارے مینو فسٹو میں بھی زکر ہے کہ گلگت بلتستان کو عبوری آئینی صوبہ بنایا جائے تاکہ اس سے مسئلہ کشمیر پر کوئی اثر نہ پڑے ۔انہوں نے کشمیری رہنماوں کی گلگت بلتستان کے حوالے سے بیانات پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گلگت بلتستان کشمیر کا کوئی حصہ نہیں ہے ،ہم میں اور ان میں آسمان زمین کا فرق ہے ،گلگت بلتستان کی کلچر و ثقافت کشمیر یوں سے بہت مختلف ہے ۔انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کو گلگت بلتستان کے 20لاکھ عوام سے کوئی محبت نہیں بلکہ یہاں کے وسائل پر ان کی نظریں ہیں ۔جی بی سونے کی چڑیا ہے ،یہاں سے سی پیک گزررہا ہے ،غذر سے تاجکستان کوریڈور کھلنے جارہا ہے جس کی وجہ سے کشمیری رہنماؤں کو تکلیف ہورہی ہے اور وہ ان وسائل پر قابض ہونا چاہتے ہیں ۔گلگت بلتستان کے عوام اور کشمیریوں کے سوچ میں فرق ہے ہم نے پاکستان کیلئے بے پناہ قربانیاں دی ہے اور نشان حیدر بھی حاصل کیا ہے جبکہ کشمیریوں نے پاکستان کیلئے کچھ نہیں کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ جب کشمیری عالمی سطح پر اپنے آپ کو متنازعہ بنا کر یورپ کیلئے ویزے لے رہے تھے تو تب گلگت بلتستان کے لوگوں کی یاد نہیں اور اس وقت انہوں نے ہمیں بھائی نہیں سمجھا لیکن اب گلگت بلتستان کو حقوق ملنے جارہے ہیں تو تب ان کو تکلیف ہوتی ہے ۔انہوں نے کہا گلگت بلتستان کے عوام نے مسئلہ کشمیر کے خاطر تین نسلیں قربان کی ہیں ،کیا یہ کوئی چھوٹی قربانی ہے ؟ہم پہلے بھی گلگت بلتستان کو پاکستان کا صوبہ بناسکتے تھے لیکن کشمیر بھی مسلمان ہونے کی وجہ سے ان کے خاطر ہم نے ایسا کوئی اقدام نہیں آٹھایا ہے اور آج بھی ہم ان کے مسئلہ کشمیر کے بین الاقوامی تناظر اور اس مسئلہ پر اثر انداز ہوئے بغیر گلگت بلتستان کیلئے عبوری آئینی صوبہ چاہتے ہیں ورنہ ہم کب کے گلگت بلتستان کو مکمل صوبہ بناسکتے تھے ۔

Facebook Comments
Share Button